مصنوعی ذہانت

مصنوعی ذہانت اور تعلیم کی بین الاقوامی کانفرنس بیجنگ میں اختتام پذیر …

مصنوعی ذہانت اور تعلیم کے حوالے سے بین الاقوامی کانفرنس اٹھارہ مئی کو بیجنگ میں اختتام پذیر ہوگئی۔ کانفرنس میں سو سے زائد ممالک اور دس سے زیادہ عالمی تنظیموں سے منسلک تقریباً پانچ سو مندوبین نےشرکت کی۔ کانفرنس میں “بیجنگ اتفاق رائے” کی منظوری دی گئی۔

کانفرنس کا موضوع ہے “اے آئی کے دور میں تعلیم کے لیے منصوبہ بندی”۔ کانفرنس میں مستقبل کی تعلیم اور نصاب پر تحقیق سمیت دیگر پہلوؤں پر بحث کی گئی۔ “بیجنگ اتفاق رائے” میں طے کیا گیا ہے کہ مختلف ممالک کو اے آئی کو تعلیم سے مربوط کرنے کے لیےاس سےمتعلق پالیسی بنانی چاہیئے تاکہ تمام ممالک کے عوام یکساں طور پر اعلی، معیاری و مساوی تعلیم کے مواقع حاصل کر سکیں۔
یونیسکو کی اسسٹنٹ جنرل سیکرٹری برائے امور تعلیم سٹیفینیا جیئنینی نے اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یونیسکو مختلف ممالک کے درمیان تعاون کی اپیل کرتا ہے تاکہ مصنوعی ذہانت کے شعبے میں معلومات، وسائل اور آلات کے اشتراک کو مضبوط بنایا جائے اور کثیرالطرفہ تعاون کو فروغ دیا جائے۔ چین کے نائب وزیر تعلیم تھیان شوئے جون نے کہا کہ چین یونیسکو اور ممبر ممالک سے تعاون کو مزید بہتر بنانا چاہتا ہے اور مزید اشتراکی، مزید مساوی اور مزید بہتر جدید تعلیم کی مشترکہ تعمیر کے لیے تیار ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری انڈونیشیا اور سنگاپور کا تین روزہ سرکاری دورہ کریں گے

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری بدھ سے انڈونیشیا اور سنگاپور کا تین روزہ سرکاری دورہ …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons