چین کے صدر مملکت شی چن پھنگ کی اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے ملاقات!

چین کے صدر مملکت شی چن پھنگ کی اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے ملاقات!

26 اپریل کو چین کے صدر مملکت شی چن پھنگ نے بیجنگ میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریز سے ملاقات کی۔
ملاقات کے موقع پر جناب شی چن پھنگ نے کہا کہ اقتصادی عالمگیریت کا رجحان ناقابل تبدیل ہے، تعاون اور مشترکہ کامیابی ہی واحد درست راستہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین کثیرالجہتی، اقوام متحدہ کی مرکزیت کے بین الاقوامی نظام اور عالمی قوانین کی بنیاد پر عالمی نظم و ضبط کا مثبت طور پر تحفظ کرتا ہے اور بنی نوع انسان کے ہم منصب سماج کی تعمیر کو آگے بڑھاتا ہے۔چینی صدر مملکت شی چن پھنگ نے کہا کہ چینی عوام ناصرف اپنی بلکہ ساری دنیا کی خوشحالی چاہتے ہیں اور میں نے اسی تصور کی روشنی میں دی بیلٹ اینڈ روڈ انیشئیٹو کا ذکر کیا اور یہ انیشئیٹو اقوام متحدہ کی پائیدار ترقی کےخیال سے بھی مطابقت رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین اقوام متحدہ کے ساتھ مل کر جامع مشاورت، تعمیری شراکت اور مشترکہ مفادات کی اصل روح کے مطابق دی بیلٹ اینڈ روڈ کی مشترکہ تعمیر کو آگے بڑھانا چاہتا ہے۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریز نے اس موقع پر عوامی جمہوریہ چین کے قیام کی سترویں سالگرہ کی مبارک باد دی۔انہوں نے شی جن پھنگ کے دی بیلٹ اینڈ روڈ سے متعلق دوسرے عالمی تعاون فورم سے خطاب کو بڑی اہمیت دی اور چین میں کھلے پن کی توسیع کے لیے شی جن پھنگ کے پیش کردہ اہم اقدامات کو بھی سراہا ۔انہوں نے کہا کہ دی بیلٹ اینڈ روڈ انیشئیٹو، اقوام متحدہ کے پیش کردہ 2030ء پائیدار ترقی کےایجنڈے اور موسمیاتی تبدیلی سے نمٹنے کے لیے پیرس معاہدے سے ملتا جلتا ہے۔ مختلف ممالک کو دی بیلٹ اینڈ روڈ سے فائدہ اٹھا کر مشترکہ مفادات کو عمل میں لانا چاہیئے۔ انتونیو گوتریز نے مزید کہا کہ تاریخ سے یہ ثابت ہوگا کہ چین کی ترقی نا صرف ایک ایسا تاریخی رجحان ہے کہ جس کو روکا نہیں جائے گا، بلکہ یہ انسانی ترقی کی اہم خدمت بھی ہے۔

اسی روز چین کے وزیراعظم لی کھہ چھیانگ نے بھی اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتتونیو گوتریز سے ملاقات کی۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری انڈونیشیا اور سنگاپور کا تین روزہ سرکاری دورہ کریں گے

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری بدھ سے انڈونیشیا اور سنگاپور کا تین روزہ سرکاری دورہ …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons