تازہ ترین

کسی کیخلاف کیس نہ بنتا ہو تو کیسے سزا دیں، چیف جسٹس!

چیف جسٹس آف پاکستان کا کہنا ہے کہ کہ ریاست امن و امان کے لیے اپنی ذمہ داری پوری کرے، جیسا گزشتہ رات وزیراعظم نے بھی کہا لیکن اگر کسی کے خلاف کیس بنتا ہی نہ ہو تو سزا کیسے دیں۔ اسلام آباد میں نئے آئی جی تعیناتی کے حوالے سے کیس کے دوران ریمارکس دیتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا کہ نبی پاک کے ناموس پر ہم بھی اپنی جانیں قربان کرنے کے لیے تیار ہیں اور رسول پاک کی توہین کسی کے لیے قابل برداشت نہیں۔ چیف جسٹس نے کہا ایمان کسی کا کم نہیں ہے، ہم صرف مسلمانوں کے قاضی نہیں ہیں، بینچ میں بیٹھے کئی ججز درود شریف پڑھتے رہتے ہیں۔ چیف جسٹس پاکستان نے آسیہ بی بی کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ہو سکتا ہے ہم ان سے زیادہ عاشق رسول ہوں، ہم نے اللہ کی ذات کو نبی پاک کی ذات سے پہچانا اس کے بغیر ایمان مکمل نہیں اور فیصلہ اردو میں اس لیے جاری کیا تاکہ قوم پڑھے۔

یہ خبر پڑھیئے

میانمار کی سابق سویلین حکمراں آنگ سان سوچی کو مزید 6 سال قید کی سزا سنا دی گئی

میانمار کی سابق سویلین حکمراں اور نیشنل لیگ فار ڈیموکریسی کی سربراہ  آنگ سان سوچی …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons