تازہ ترین

چین کی اصلاحات کا مثالی نمونہ – شیاؤ گانگ!

سنہ انیس سو اٹھہتر میں چین کے وسطی صوبے آن حوئی کے قصبے فونگ یانگ کے گاؤں شیاؤ گانگ کے کسانوں نے مقامی حکومت کے ساتھ خفیہ طور پر ایک معاہدے پر دستخط کیے، اس معاہدے میں کسانوں نے اپنے خاندان کے ذریعے اجتماعی اقتصادی تنظیم (یعنی مقامی حکومت : گاوں یا گروپ) سے زمین سمیت دیگر پیداواری اجناس یا پیداواری کام کا ٹھیکہ کیا۔ آج تک یہ چین کے دیہی علاقوں میں جاری رہنے والا بنیادی اقتصادی نظام ہے، تاہم اس وقت ایسا کوئی بھی معاہدہ مرکزی حکومت کی پالیسی کی خلاف ورزی تھا لیکن اسی سال میں چین میں اصلاحات کا آغاز ہوا اورخوش قسمتی سے یہ معاہدہ اصلاحات کے اقدامات سے مطابقت رکھتا تھا۔ چالیس سالوں کے دوران شیاؤ گانگ گاؤں کے کسانوں نے اپنی محنت سے اس خوشحال زندگی کے لیے مسلسل کوشش کی۔ ان کی اس خوشگوار زندگی کا پس منظرچین کے اصلاحاتی عمل کی یادوں سے منور ہے اور وہ اپنے خوبصورت مستقبل کے لیے پرامید بھی ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کے بعد کی ہیریٹیج رپورٹ اور کھیلوں کے بعد پائیداری ترقی کی رپورٹ جاری کردی گئی

4 فروری کو2022  بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کی پہلی سالگرہ ہوگی۔یکم تاریخ کو …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons