جاپانی پاسپورٹ سب سے طاقتور، افغانستان کا کمزور ترین قرار

دنیا میں سب سےطاقتور پاسپورٹ ماضی کی طرح ایک مرتبہ پھر جاپان کا قرار پایا ہے جب کہ سب سے کمزور پاسپورٹ کا حامل ملک افغانستان ہے۔

یہ اعداد و شمار ہینلے پاسپورٹ انڈیکس کی جانب سے جاری کیے گئے، یہ ادارہ ہر تین ماہ بعد 199 پاسپورٹس کی 227 سفری مقامات تک رسائی کے بارے میں انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن (ایاٹا) کے خصوصی اعداد وشمار کو مدنظر رکھتے ہوئے طاقتور پاسپورٹس کی فہرست جاری کرتا ہے۔ ہینلے پاسپورٹ انڈیکس کی جاری کردہ تازہ ترین طاقت کی فہرست کے مطابق 2023 کے لیے افغانستان کو دنیا کا کم زور ترین پاسپورٹ کا حامل ملک قرار دیا گیا ہے جو 109ویں نمبر پر ہے۔ افغانستان کا پاسپورٹ رکھنے والے افراد پوری دنیا میں صرف 27 مقامات پر ویزہ فری کے حامل قرار دیے گئے ہیں۔

عراق اور شام بالترتیب 29 ویں اور 30 ویں نمبر پر ہیں کیونکہ اس کے پاسپورٹ کے حامل لوگ دنیا کے 29 اور 30 مقامات پر ویزہ فری کے مجاز ہیں۔ پاکستان اور یمن کے پاسپورٹس کے نمبرز ان کے بھی بعد آتے ہیں کیونکہ  ان دونوں ممالک کے پاسپورٹ رکھنے والے لوگ بالترتیب 32 اور 34 مقامات پر ویزہ فری کی سہولتوں سے استفادہ کر سکتے ہیں۔

افغانستان، عراق، شام، پاکستان اور یمن نے اس لحاظ سے دنیا کے سب سے کم طاقتور پاسپورٹ کے طور پر اپنی پوزیشنیں برقرار رکھی ہیں کہ 2020 میں بھی ان کی یہی  پوزیشن تھی۔

جاپان کے بعد سنگاپور و جنوبی کوریا کے پاسپورٹوں کو دنیا کے طاقتور ترین پاسپورٹس میں دوسرے نمبر کا حامل قرار دیا گیا ہے جس کے بعد جرمنی و اسپین کے پاسپورٹس مشترکہ طور پر تیسرے نمبر پر ہیں جب کہ فن لینڈ، اٹلی، لکسمبرگ اور آسٹریا کو پاسپورٹس کو ایک ساتھ چوتھا نمبر دیا گیا ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

شوبز سٹار ثروت گیلانی کا کہنا ہے کہ آن لائن منفی مہم فنکاروں کو شدید …

Show Buttons
Hide Buttons