چمن بارڈر پر کشیدگی: افغان حکام سے مذاکرات کیلئے جرگے کے دورہ افغانستان کا فیصلہ

چمن بارڈر پر معمولات کسی حد تک بحال ہونے کے بعد طالبان حکام کے ساتھ مذاکرات کے لیے علما پر مشتمل جرگے کے دورہ افغانستان کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے پیش نظر پاکستان اور افغان حکام کے درمیان فلیگ میٹنگ ملتوی کر دی گئی۔

اخباری رپورٹ کے مطابق قبائلی عمائدین اور سیکیورٹی فورسز کی جانب سے کشیدہ سرحدی صورتحال کو معمول پر لانے کی کوششیں جاری ہیں جہاں اس کشیدگی کی وجہ چمن میں شہری بستیوں پر افغان سرحدی فورسز کی گولہ باری ہے۔ چمن میں تعینات ایک سیکیورٹی اہلکار نے انکشاف کیا کہ ’افغان حکام کے درمیان اختیارات اور فیصلوں پر گروہ بندی کی وجہ سے فلیگ میٹنگ ملتوی کی گئی‘۔

انہوں نے کہا کہ اسپن بولدک میں دونوں ممالک کے درمیان مذاکرات کے حوالے سے اعتماد بحال کرنے کے لیے مقامی سطح پر مذاکرات جاری ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

اسلام آباد کی پرُ رونق فضاء میں چینی نئے سال کی خوشیاں

اسلام آباد کی پرُ رونق فضاء میں چینی نئے سال کی خوشیاں

Show Buttons
Hide Buttons