حکومت آئندہ برس کے اختتام تک پولیو کے خاتمے کے لئے پرعزم ہے، وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل

حکومت آئندہ برس کے اختتام تک پولیو کے خاتمے کے لئے پرعزم ہے، وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل

حکومت جاپان نے پاکستان انسداد پولیو پروگرام کے لئے 3.87 ملین امریکی ڈالر سے زائد کی گرانٹ فراہم کرتے ہوئے اپنی معاونت بڑھا دی ہے، اس گرانٹ کو ضروری پولیو ویکسین کی خریداری کے لئے استعمال کیا جائے گا جس سے پاکستان میں وبائی اضلاع میں پانچ سال سے کم عمر کے 18.61 ملین سے زیادہ بچوں کی ویکسی نیشن ہو گی۔

حکومت جاپان و یونیسف اور جاپان انٹرنیشنل کوآپریشن ایجنسی (جائیکا ) و یونیسیف کے درمیان معاہدے پر دستخط ہوئے۔ وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل اور دیگر نے تقریب میں شرکت کی۔پاکستان پولیو پروگرام نے گزشتہ 30 سالوں میں پولیو وائرس سے متاثرہ بچوں کی تعداد میں تاریخی کمی لائی ہے۔

پولیو کے خاتمے کے لئے حکومت کے عزم کا تذکرہ کرتے ہوئے وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے کہاکہ انسداد پولیو پروگرام نے کامیابی سے خیبر پختونخوا کے مقامی اضلاع تک وائرس کی گردش کو محدود کر دیا ہے، ہم 2023 ءتک پولیو کے خاتمے کے لئے پرعزم اور پر امید ہیں، انہوں نے پولیو کے خاتمے کے لئے جاپان کی حکومت اور ڈونرز کےغیر متزلزل عزم کی تعریف کی ہے۔

حکومت جاپان 1996 ءسے پاکستان پولیو پروگرام کے ساتھ تعاون کے نتیجے میں پولیو ویکسین کی بچوں تک رسائی کو ممکن بنا رہی ہےجس سے بچوں کو عمر بھر کی معذوری سے بچایا جارہا ہے، یونیسف کے توسط سے پاکستان میں پولیو پروگرام کو سپورٹ کرنے کے لئے حکومت جاپان کی جانب سے اب تک 238.66 ملین ڈالر سے زائد کی گرانٹ اور قرض کی رقم دی ہے۔

جاپان کے سفیر وادا متسوہیرو نے حکومت پاکستان اور یونیسف کی جنوبی خیبرپختونخوا میں ہنگامی ویکسی نیشن مہم اور شمالی وزیرستان میں ٹرانزٹ پوائنٹس قائم کرنے پر ان کی انتھک کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے پولیو وائرس کے خاتمے کے لئے اپنی مسلسل حمایت کا اعادہ کرتے ہوئے کہاکہ میں پولیو سے پاک دنیا کے حصول کے لئے اپنے عزم کی تجدید کرنا چاہوں گا، جاپان اس سلسلے میں حکومت پاکستان اور یونیسف کی مسلسل مدد کرے گا، مجھے پوری امید ہے کہ اگلے سال کی قومی اور ذیلی قومی مہمات محفوظ اور کامیاب ہوں گی۔

جائیکا کے چیف نمائندہ کینوشتہ یوسومتسو نے کہا کہ یہ بات قابل ستائش ہے کہ پولیو پروگرام نے سیلاب سے متاثرہ اضلاع میں سیلاب کی امدادی کوششوں میں مدد کی ہے، بنیادی طبی خدمات، پانی سے پیدا ہونے والی بیماریوں کے علاج اور تولیدی عمر کے بچوں اور خواتین کو حفاظتی ٹیکے لگانے کے لئے ہیلتھ کیمپ کھولے گئے ہیں۔

حکومت پاکستان، یونیسیف اور جاپان کا 2023 کے آخر تک پاکستان کو پولیو سے پاک کرنے کا ایک مضبوط ہدف ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ حکومت پاکستان اور یونیسف کی مسلسل اور غیر متزلزل قیادت اور عزم کو سراہتے ہیں، اس سلسلے میں فرنٹ لائن ورکرز کا کردار قابل تحسین ہے ،جہاں پولیو پاکستان کے لئے ایک بہت بڑا چیلنج بنا ہوا ہے،

وہیں حالیہ سیلاب کی وجہ سے ملک کو غیر معمولی چیلنجز کا سامنا ہے۔پاکستان میں یونیسیف کے سربراہ عبداللہ فادل نے کہا کہ پہلے ہی یہ بچے اور خاندان بہت کچھ کھو چکے ہیں، ضروری ہے کہ ہم انہیں اس مہلک بیماری سے بچائیں۔

انہوں نے حالیہ سیلاب کی تباہی کے بعد مقامی اور وبائی اضلاع میں رہنے والے بچوں اور خاندانوں کی صورتحال پر روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ عوام اور حکومت جاپان کی غیر متزلزل حمایت اور تعاون کے ذریعے اب مزید بچوں کو معذوری حتیٰ کہ موت سے بچایا جاسکتا ہے، اب ہم پولیو سے پاک مستقبل کے حصول کے قریب تر ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

شوبز سٹار ثروت گیلانی کا کہنا ہے کہ آن لائن منفی مہم فنکاروں کو شدید …

Show Buttons
Hide Buttons