دو ہزار بائیس میں چین کی انڈسٹریل انٹرنیٹ انڈسٹری کی اضافی مالیت 4.45 ٹریلین یوآن تک پہنچ جائے گی

چھ نومبر کو چائنا انڈسٹریل انٹرنیٹ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کی طرف سےجاری کردہ “چائنا انڈسٹریل انٹرنیٹ انڈسٹری کی اقتصادی ترقی پر وائٹ پیپر” میں پیش گوئی کی گئی ہے کہ 2022 میں چین کی انڈسٹریل انٹرنیٹ انڈسٹری کی اضافی مالیت 4.45 ٹریلین یوآن تک پہنچ جائے گی۔ یہ مالیت جی ڈی پی کا 3.64 فیصد بنتی ہے۔

اس وقت چین کے انڈسٹریل انٹرنیٹ نے حقیقی معیشت میں اپنی رسائی کو تیز کر دیا ہے، جس میں قومی معیشت کی 45 اقسام شامل ہیں۔ صنعتی انٹرنیٹ کے انضمام نے سیکینڈری انڈسٹری کی معاشی اضافی قدر کو سب سے زیادہ اور تیز ترین شرحِ نمو حاصل کرنے میں مدد دی ہے۔

اس کی تیز رفتار ترقی سے ٹرٹائری انڈسٹری پر اثراندازی میں اضافہ ہوا ہے۔ اس کے علاوہ انڈسٹریل انٹرنیٹ چین کے روزگار کے ڈھانچے کو اپ گریڈ کرنے اور روزگار کی ترقی کے استحکام میں فروغ کا باعث بن رہا ہے جس سے 2022 میں 1.0502ملین نئی ملازمتیں متوقع ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیراعظم ٹانک اور ڈیرہ اسماعیل خان میں سیلاب متاثرین کے رہائشی یونٹس کا افتتاح کریں گے

وزیراعظم ٹانک اور ڈیرہ اسماعیل خان میں سیلاب متاثرین کے رہائشی یونٹس کا افتتاح کریں گے

 وزیراعظم محمد شہباز شریف آج (جمعرات کو) ضلع ٹانک اور ضلع ڈیرہ اسماعیل خان کے …

Show Buttons
Hide Buttons