تازہ ترین
آزاد جموں و کشمیر میں کشمیر ایئر کی کمرشل ہیلی کاپٹر فلائٹ سروس کا آغاز، صدر مملکت نے افتتاح کردیا

آزاد جموں و کشمیر میں کشمیر ایئر کی کمرشل ہیلی کاپٹر فلائٹ سروس کا آغاز، صدر مملکت نے افتتاح کردیا

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے آزاد جموں و کشمیر میں سیاحت کے فروغ کے لیے کشمیر ایئر کی کمرشل ہیلی کاپٹر فلائٹ سروس کا افتتاح کردیا۔ منگل کو باغ میں کشمیر ایئر کی لانچنگ تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ آزاد کشمیر کے وزیراعظم سردار تنویر الیاس بھی اس موقع پر موجود تھے۔

کشمیر ایئر ایک نجی کمپنی ہے جو سیاحوں کی آمدورفت کے لیے آزاد جموں و کشمیر اور پاکستان کے شمالی علاقوں کے لیے کمرشل ہیلی کاپٹر پروازیں شروع کرنے جا رہی ہے۔

آزاد جموں و کشمیر کے دورہ کے دوران صدر مملکت نے ہیلی کاپٹر فلائٹ سروس کا افتتاح کیا، باغ میں ایک نئے قائم ہونے والے پرائیویٹ سکول کے علاوہ ہیلتھ کیئر انفارمیشن ٹیکنالوجی کمپنی کے فلیگ شپ کیمپس کا دورہ کیا۔ اس موقع پر صدر مملکت کو عباس پور میں ہسپتال کے قیام کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔

ہیلی کاپٹر سروس کے افتتاح کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت نے کہا کہ آزاد جموں و کشمیر کو قدرتی حسن اور سیاحت کی بے پناہ صلاحیتوں سے نوازا گیا ہے، پرائیویٹ سیکٹر کو آزاد جموں و کشمیر کے سیاحتی شعبے کی ترقی کے لیے آگے آنا چاہئے تاکہ اس کی بھرپور صلاحیتوں کو بروئے کار لایا جا سکے۔ انہوں نے آزاد جموں و کشمیر کی حکومت پر زور دیا کہ وہ پائیدار اور ماحول دوست سیاحت کو فروغ دینے کے علاوہ نجی شعبے کی سرمایہ کاری میں سہولت فراہم کرنے کے لیے سیاحت دوست پالیسیاں وضع کرے۔

انہوں نے کہا کہ سیاحت دنیا کی بہت سی ترقی پذیر معیشتوں کی بنیاد بن چکی ہے اور اسے زرمبادلہ کمانے، روزگار کے مواقع پیدا کرنے، ترقی کے عمل کو تیز کرنے اور معاشی تفاوت کو کم کرنے کا ایک اہم ذریعہ سمجھا جاتا ہے۔ انہوں نے آزاد جموں و کشمیر میں سیاحت کی منصوبہ بندی کے لیے ایک مربوط نقطہ نظر اپنانے پر زور دیا، انہوں نے مزید کہا کہ سٹیک ہولڈرز، کاروبار، وسائل اور سیاحتی سرگرمیوں کے درمیان روابط قائم کرنے کے علاوہ خطے پر سیاحت کے اقتصادی، سماجی اور ماحولیاتی اثرات کا بغور جائزہ لیا جانا چاہئے۔

صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان کے پاس نوجوانوں اور خواتین کی صورت میں بے پناہ انسانی وسائل موجود ہیں جو کہ متعلقہ مہارتوں اور تربیت کے ساتھ مستقبل میں قومی معیشت کا اثاثہ بن سکتے ہیں۔ انہوں نے آزاد جموں و کشمیر کے نوجوانوں کو سیاحت اور مہمان نوازی کے شعبے میں تکنیکی اور پیشہ ورانہ مہارت اور تربیت فراہم کرنے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ نوجوانوں بالخصوص خواتین کو ان کے اپنے علاقے میں فائدہ مند روزگار فراہم کیا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ آئی ٹی ٹولز اور مصنوعی ذہانت کو اپنانے سے آزاد جموں و کشمیر کے سیاحتی اثاثوں کی مارکیٹنگ کے ساتھ ساتھ ملکی اور غیر ملکی سیاحوں کو معلومات، آن لائن بکنگ کی سہولیات اور سیاحتی پیکجز کی فراہمی کے لیے آزاد جموں و کشمیر میں سیاحت کے شعبے کی ترقی اور فروغ میں مدد مل سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ٹی سیکٹر تھوڑی سرمایہ کاری کے ساتھ تیز رفتار اقتصادی ترقی حاصل کرنے میں مدد دے سکتا ہے۔ سکول کے دورے کے دوران، صدر نے آزاد جموں و کشمیر کے طلباء کو معیاری تعلیم فراہم کرنے پر پرائیویٹ سیکٹر کی تعریف کی جس سے تعلیمی معیار کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔

صدر نے آئی ٹی کے شعبے میں سرمایہ کاری کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ آئی ٹی کے شعبے میں ہونے والی پیش رفت نے خواتین کو بااختیار بنانے کے لیے نئی راہیں کھولی ہیں اور اب وہ جدید ترین آئی سی ٹی ٹولز کا استعمال کرتے ہوئے دنیا بھر میں اپنی خدمات آن لائن پیش کر سکتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میٹا (فیس بک) نے 5000 سے زائد خواتین کو تربیت فراہم کی ہے تاکہ وہ اپنی مصنوعات اور خدمات کو آن لائن مارکیٹ کر سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم کے ڈجی اسکلز پروگرام سے 2.4 ملین افراد مستفید ہوئے، جس میں مختلف تعلیمی پس منظر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔ صدر نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ خواتین کو سیاحت سمیت تمام شعبوں کی افرادی قوت میں شامل ہونے کی ترغیب دی جانی چاہئے جس سے آزاد جموں و کشمیر کے سیاحت کے شعبے کی ترقی ملے گی اور خواتین کی معاشی طور پر بااختیار ہو سکیں گی۔

انہوں نے کہا کہ خواتین کی روزگار کی شرح اور معاشی شراکت میں اضافے کے لیے کوششیں کی جائیں۔ انہوں نے کہا کہ اسلام نے وراثت میں خواتین کا حصہ مختص کیا ہے لیکن افسوس کہ ہمارے ملک کے مختلف حصوں میں خواتین کو ان کے حق سے محروم رکھا جا رہا ہے۔

باغ میں فلیگ شپ کیمپس کے دورے کے موقع پر اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ کیمپس آزاد جموں و کشمیر کے لوگوں کو اعلیٰ معیار کی صحت کی سہولیات فراہم کرے گا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ آزاد جموں و کشمیر کے پہاڑی مناظر کو مدنظر رکھتے ہوئے ٹیلی میڈیسن دور دراز علاقوں کے لوگوں کو ان کی دہلیز پر صحت کی معیاری خدمات فراہم کر سکتی ہے۔

انہوں نے پرائیویٹ سیکٹر پر زور دیا کہ وہ اپنے کارپوریٹ سیکٹر ریسپانسیبلٹی اقدامات کے ذریعے صنعت، اکیڈمی اور حکومت کے درمیان شراکت داری کو فروغ دے کر معاشرے میں اپنا حصہ ڈالیں۔ اپنے دورے کے دوران انہیں عباس پور میں ایک ہسپتال کے قیام کے بارے میں بھی بریفنگ دی گئی جو کہ آزاد جموں و کشمیر کے لوگوں کو صحت کی معیاری خدمات فراہم کر رہا ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان بھارتی غیر قانونی مقبوضہ جموں و کشمیر کے لوگوں کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی مدد کے لیے پرعزم ہے اور عالمی برادری اور بین الاقوامی اداروں سے مطالبہ ہے کہ وہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں اور جموں و کشمیر کے عوام کی امنگوں کے مطابق جموں و کشمیر کے تنازع کے حل کے لیے اپنا کردار ادا کریں۔

یہ خبر پڑھیئے

بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کے بعد کی ہیریٹیج رپورٹ اور کھیلوں کے بعد پائیداری ترقی کی رپورٹ جاری کردی گئی

4 فروری کو2022  بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کی پہلی سالگرہ ہوگی۔یکم تاریخ کو …

Show Buttons
Hide Buttons