تازہ ترین
پشاور میں چین کے 73واں یوم تاسیس کی تقریب کا انعقاد

پشاور میں چین کے 73واں یوم تاسیس کی تقریب کا انعقاد

یونیورسٹی آف پشاور میں قائم چائنہ سٹڈی سینٹر اور پاکستان چائنہ فرینڈ شپ ایسوسی ایشن خیبر پختونخواہ کی جانب سے عوامی جمہوریہ چین کے 73ویں قومی دن کے موقع پر خصوصی تقریب کا انعقاد کیا گیا۔

اس موقع پر تقریب کے مہمان خصوصی بیرسٹر محمد علی سیف نے چینی عوام کو مبارکباد دی اور طلباء کو مشورہ دیا کہ وہ چینی ثقافت، تاریخ اور تہذیب کو سمجھنے پر توجہ دیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان دیرینہ دوستانہ تعلقات ہیں اور نوجوان نسل کو ہر موسم کی اس دوستی سے فائدہ اٹھانا چاہئے۔ بیرسٹر محمد علی سیف نے خاص طور پر عوامی سطح پر دونوں ممالک کے درمیان روابط بڑھانے پر زور دیا۔ اس موقع پر انہوں نے شرکاء کو 21ویں صدی کے آغاز سے لے کر اب تک چین کے متعدد دوروں کے بارے میں تفصیل سے آگاہ بھی کیا۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پشاور یونیورسٹی کے وائس چانسلر اور چائنہ سٹڈی سینٹر کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر زاہد انور نے کہا کہ پشاور یونیورسٹی میں چائنہ سٹڈی سینٹر 2016ء میں پاکستان میں قائم چینی سفارت خانے کے تعاون سے قائم کیا گیا، جس کے بعد چینی سفارتخانے کی جانب سے سکالرشپ، آلات اور تحقیق کیلئے 2 کروڑ 30 لاکھ روپے کی گرانٹ فراہم کی گئی، جو یونیورسٹی کے طلباء، اسکولوں، سینٹرز اور شعبہ جات میں تقسیم کی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ چائنہ سٹڈی سینٹر نے اب تک ایک پٹی ایک شاہراہ، سی پیک، پاک-چین تعلقات اور علاقائی مسائل پر 300 سے زائد تقریبات کا انعقاد کیا ہے۔

اس موقع پر پی سی ایف اے کے پی چیپٹر کے سیکریٹری جنرل سید علی نواز گیلانی نے کہا کہ پاکستان اور چین کے تعلقات وقت کے ساتھ ساتھ مزید مضبوط ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چین اپنے نظام کی بدولت پوری دنیا میں ابھر رہا ہے اور یہ ہمارے لئے ایک بہت بڑا سبق ہے۔ سید علی نواز گیلانی نے کہا کہ پشاور-ارمچی اور ایبٹ آباد-کاشغر کو بالترتیب 1985ء اور 2007ء سے جڑواں شہر قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ صوبائی کابینہ نے دونوں ممالک کے دیگر شہروں کو جڑواں بنانے کی منظوری دیدی ہے، جسے جلد حتمی شکل دی جائے گی اور دوستی کے نئے باب کا آغاز ہو گا، جبکہ پاکستان باہمی مفاد کیلئے مختلف شعبوں میں چینی تجربات سے استفادہ کرسکے گا۔

سید علی نواز گیلانی نے چین کو ایک عظیم اقتصادی اور سیاسی طاقت بنانے میں کمیونسٹ پارٹی آف چائنہ کے کردار کو خاص طور پر اجاگر کیا۔ مہمان خصوصی کے خطاب کے بعد سوال جواب کے سیشن میں تجویز دی گئی کہ تجارت میں آسانی اور عوامی روابط میں مضبوطی کیلئے پشاور سے ارمچی اور کاشغر کیلئے پروازوں کا آغاز کیا جائے۔ تقریب میں عہدیداران، پرو وائس چانسلرز، ڈینز آف فیکلٹیز، چینی ماہرین اور طلباء کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

یہ خبر پڑھیئے

چین میں ای-کامرس کا جامع ترقی میں کردار: جانیئے تجزیہ کار کی زبانی

Show Buttons
Hide Buttons