تازہ ترین

یورپ میں سال 2035 تک موسم گرما میں گرمی کی لہر کا آنا معمول بن جائے گا، برطانوی محکمہ موسمیات

کلائمیٹ کرائسز ایڈوائزری گروپ کی طرف سے جاری کردہ ایک تجزیاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یورپ کو جس بدترین خشک سالی اور گرمی کی لہر کا سامنا ہے ممکن ہے وہ ایک دہائی سے بھی کم عرصے میں اوسط درجے کی خشک سالی اور گرمی کی لہر کہلائے۔

کلائمیٹ کرائسز ایڈوائزری گروپ نےبرطانیہ کے شہر ہیڈلی میں قائم محکمہ موسمیات کے اعدادوشمارکے ذریعے اس بات کا اندازہ لگایا کہ 1850 کے بعد خطے کی درجہ حرارت میں کس حد تک تبدیلی آئی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یورپ میں سال 2035 تک موسم گرما میں گرمی کی لہر کا آنا معمول بن جائے گا۔ سی سی اے جی کے چیئر مین ڈیوڈکنگ کے مطابق سال 2100  کے دوران وسطی یورپ میں موسم گرما صنعتی دور سے پہلے کے مقابلے میں 4 ڈگری سینٹی گریڈ زیادہ گرم ہوجائے گا، جبکہ سائنسدانوں نے اس امر کی نشاندہی  کی ہے موجودہ حالات میں انسان کی روزمرہ زندگی میں تبدیلی موسم کی تبدیلی کا موجب ہے۔ کلائمیٹ کرائسز ایڈوائزری گروپ کی طرف سے جاری کردہ ایک تجزیاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ یہ ایک حقیقت ہے کہ ممالک کو پیرس معاہدے کے تحت اپنی قومی سطح پر طےشدہ اہداف سے آگے بڑھنے کی ضرورت ہے، تاکہ عالمی حدت میں1.5ڈگری سینٹی گریڈ تک محدود کیا جا سکے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ موجوہ حالات کے تناظر میں یورپ کو گزشتہ 5 سو سال کے دوران سب سے بدترین خشک سالی کا سامنا ہے۔ رپورٹ کے متن میں کہا گیا ہے کہ یورپی براعظم کے تقریباً دو تہائی حصے کو شدید گرمی کے حوالے سے انتباہ جاری کیا جاچکاہے۔ موسمیاتی ماہرین نے اس بات کا پیشگی اندازہ لگایا ہے کہ یورپی ممالک میں گرمی کی شدت کے باعث جنگلات میں بڑے پیمانے پر آتشزدگی کا خدشہ ہے۔ تجزیاتی رپورٹ میں اس امر کی نشاندہی کی گئی ہے کہ یورپ میں بیشتر دریا خشک سالی کا شکار ہیں، جس سے مال بردار جہازوں کی روانی کو خطرات کا سامناہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ برطانیہ میں جولائی کے مہینے میں پہلی بار درجہ حرارت 40 ڈگری سینٹی گریڈ تک ریکارڈ کیا گیا ہے جو ایک ریکارڈ ہے۔

برطانیہ کے ہیڈلی محکمہ موسمیات کے نمائندے Peter Stott نے کہاہے کہ 2003 میں یورپی ممالک میں شدید گرمی کی لہر کےدوران انہوں نے اس بات کی پیشگوئی کی تھی کہ یورپ میں موسم گرما میں گرمی کی لہر کا آنا معمول بن جائے گا۔ یورپ میں سال 2003 کے دوران گرمی کی شدید لہر کے دوران تقریباً 70 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔ Peter Stott نےکہا کہ گرین ہاوسز کے گیسوں میں اخراج کی کمی تک  خشک سالی، آتشزدگی اور سیلاب کے خطرات بڑھتے رہیں گے۔

یہ خبر پڑھیئے

وزیر اعظم کی جانب سے ملک میں کرکٹ کے فروغ کے لئے نجم سیٹھی کی کاوشوں کی تعریف

وزیر اعظم کی جانب سے ملک میں کرکٹ کے فروغ کے لئے نجم سیٹھی کی کاوشوں کی تعریف

وزیر اعظم محمد شہباز شریف نے پاکستان کرکٹ بورڈ کی عبوری مینجمنٹ کمیٹی کے چیئرمین …

Show Buttons
Hide Buttons