پیلوسی کی "جمہوری" کڑوی گولی پر امریکی بھی ناراض ہیں، سی ایم جی کا تبصرہ

پیلوسی کی “جمہوری” کڑوی گولی پر امریکی بھی ناراض ہیں، سی ایم جی کا تبصرہ

امریکی ایوان نمائندگان کی اسپیکر نینسی پیلوسی نے حال ہی میں تائیوان کا دورہ کرتے ہوئے یہ دعویٰ کیا کہ وہ “جمہوریت کی حمایت” کر رہی ہیں۔

لیکن تائیوان میں لوگ واضح طور پر دیکھ سکتے ہیں کہ پیلوسی تائیوان میں “اپنے مفادات، سیاسی پارٹی کے مفادات اور امریکہ کے مفادات کے لیے” آئی تھیں۔امریکی لوگ  اس سے بخوبی واقف ہیں۔ مقامی وقت کے مطابق 5 تاریخ کو وائٹ ہاؤس میں منعقدہ پریس کانفرنس میں، ایک نامہ نگار نے سختی سے پوچھا، “کیا پیلوسی کو چین-امریکہ تعلقات کی خرابی کا ذمہ دار سمجھا جانا چاہیئے”، اور کچھ نامہ نگاروں نے نشاندہی کی کہ پیلوسی کے دورہ تائیوان کی وجہ سے “آبنائے تائیوان میں کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔”

گزشتہ چند دنوں کے دوران، چین کے جائز جوابی اقدامات کو بین الاقوامی برادری کی جانب سے وسیع حمایت حاصل ہوئی ہے۔ 170 سے زیادہ ممالک اور بین الاقوامی تنظیمیں تائیوان جانے پر پیلوسی کی مذمت کرنے کے لئے آگے آئی ہیں، اور انہوں نے ون چائنا پالیسی پر عمل پیرا ہونے اور اپنے اقتدار اعلیٰ اور علاقائی سالمیت کے تحفظ کے لئے چین کی حمایت کا اظہار کیا ہے۔ یہ بالادستی اور انسداد بالادستی، مداخلت اور انسداد مداخلت، علیحدگی اور انسداد علیحدگی کی  ایک بڑی جدوجہد ہے۔ لوگ پیلوسی کی “جمہوریت” کی کڑوی گولی کو ترک کر رہے ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

بلوچستان میں سات روزہ انسداد پولیو مہم کا آغاز

بلوچستان  کے پانچ اضلاع کی 141 یونین کونسلوں میں 7روزہ  انسداد پولیو مہم کا آغاز ہو …

Show Buttons
Hide Buttons