تازہ ترین

وزیر اعظم کی بلوچستان میں بارشوں اور سیلاب سے جاں بحق ہونے والوں کے ورثا کو معاوضہ 24 گھنٹے میں ادا کرنے کی ہدایت

وزیر اعظم شہباز شریف نے بلوچستان میں بارشوں اور سیلاب سے جاں بحق ہونے والوں کے ورثا کو معاوضہ 24 گھنٹے میں ادا کرنے کی ہدایت کرتےہوئے کہا ہے کہ موجودہ چیلنج بہت بڑا ہے، متاثرین کی مکمل بحالی تک چین سےنہیں بیٹھیں گے۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار پیر کو یہاں کوئٹہ آمد پر بارشوں اور سیلاب سے ہونے والے نقصانات سے متعلق بریفنگ کے دوران کیا۔

کوئٹہ پہنچنے پر وزیرِ اعظم کو چیف سیکرٹری بلوچستان عبدالعزیز عقیلی اورچیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل اختر نواز نے بلوچستان میں حالیہ بارشوں کے نقصانات اور امدادی سرگرمیوں کے حوالے سے تفصیلی بریفینگ دی، وزیراعظم نے این ڈی ایم اے کو بلوچستان میں بارش اور سیلاب میں جاں بحق ہونے والوں کے ورثا کو معاوضہ کی رقم 24 گھنٹے میں ادا کرنے اور جزوی یا مکمل تباہ ہونے والے کچے اور پکے مکانات کے معاوضہ کو بھی یکساں کرکے اور بڑھا کر پانچ لاکھ روپے کرنے کی ہدایت کی۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہمارا قومی المیہ ہے کہ ڈیموں کی بروقت تعمیر پر توجہ نہیں دی گئی۔ موجودہ چیلنج بہت بڑا ہے مگر ہم متاثرین کی مکمل بحالی تک چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ بحالی اور امداد کیلئے این ڈی ایم اے ، ، صوبائی انتظامیہ اور این ایچ اے کی کوششیں لائق تحسین ہیں ۔وزیر اعظم نے ہدایت کی کہ سیلاب متاثرہ علاقوں میں میڈیکل کیمپس کا جال پھیلایا جائے ۔ وزیرِ اعظم نے کہا کہ غیر معمولی بارشوں سے وسیع پیمانے پر نقصان ہوئے ۔ قیمتی انسانی جانوں کے نقصان کےساتھ انفراسٹکرکچر تباہ ہوا ۔ وفاق اور بلوچستان حکومت قومی جذبے سے بحالی اور آبادکاری کیلئے پرعزم ہیں ۔جب تک آخری گھر آباد نہیں ہوتا حکومت چین سے نہیں بیٹھے گی ۔ وزیرِ اعظم نے مقامی اور بین الاقوامی تنطیموں سے بھی سیلاب متاثرین کی مدد کیلئے حکومت کی معاونت کی اپیل کی ۔

چیف سیکرٹری بلوچستان عبدالعزیز عقیلی اور چئیرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل اختر نواز نے بریفنگ میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ 13 جون کو بارشوں کا پری مون سون سسلسلہ شروع ہوا ۔ تیس سال کی اوسط کے مقابلے بلوچستان میں تقریباً 500 فیصد زیادہ بارش ہوئی ۔ بریفنگ میں مزید بتایا گیا کہ اب تک بلوچستان میں اموات کی کل تعداد 136 ہے جبکہ 70 افراد زخمی ہیں ۔

گیارہ سو لوگ معمولی زخمی ہوئے جنہیں فرسٹ ایڈ دی گئیں ۔ 2 لاکھ ایکڑ زرعی اراضی زیر آب آگئی ۔ 20 ہزار 500 لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ۔موٹروے ایم 8 اور کوئٹہ کراچی قومی شاہراہ بڑی حد تک بحال کردی گئی ہیں ۔ وزیراعظم محمد شہباز شریف کے بلوچستان دورے پر لاہور سے کوئٹہ پہنچنے پر ہوائی اڈے پر وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے استقبال کیا جبکہ صوبائی وزرا اور اعلیٰ حکام بھی ان کے ہمراہ موجود تھے ۔

یہ خبر پڑھیئے

میانمار کی سابق سویلین حکمراں آنگ سان سوچی کو مزید 6 سال قید کی سزا سنا دی گئی

میانمار کی سابق سویلین حکمراں اور نیشنل لیگ فار ڈیموکریسی کی سربراہ  آنگ سان سوچی …

Show Buttons
Hide Buttons