تازہ ترین
صدر مملکت کا انسانی سمگلنگ کے خلاف عالمی دن کے موقع پر پیغام

صدر مملکت کا انسانی سمگلنگ کے خلاف عالمی دن کے موقع پر پیغام

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان انسانی سمگلنگ کی لعنت سے نمٹنے کیلئے پرعزم ہے، بین الاقوامی معیارات کے مطابق قانونی فریم ورک کو نافذ کرنے کیلئے انسداد سمگلنگ کے سخت اقدامات شروع کئے گئے ہیں۔

30 جولائی 2022 کو انسانی سمگلنگ کے خلاف عالمی دن کے موقع پر اپنے پیغام میں صدر مملکت نے کہا کہ انسانی سمگلنگ کے خلاف عالمی دن ہر سال 30 جولائی کو منایا جاتا ہے تاکہ انسانی سمگلنگ کے متاثرین کی حالت زار کے بارے میں آگاہی پیدا کی جا سکے اور ان کے حقوق کو فروغ دیا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ یہ دن ایک ایسے جرم کی طرف توجہ دلانے کیلئے منایا جاتا ہے جو انسانی زندگیوں اور مجموعی طور پر معاشرے پر دیرپا اثر چھوڑتا ہے، یہ انسانی حقوق کی سنگین ترین خلاف ورزیوں میں سے ایک ہے۔ صدر مملکت نے کہا کہ پاکستان انسانی سمگلنگ کی لعنت سے نمٹنے کیلئے پرعزم ہے، سمگلروں کے خلاف قانونی چارہ جوئی اور متاثرین کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے موثر رابطہ کاری کا ڈھانچہ قائم کیا گیا ہے۔

پاکستان نے بین الاقوامی معیارات کے مطابق قانونی فریم ورک کو نافذ کرنے کیلئے انسداد سمگلنگ کے سخت اقدامات شروع کیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے افراد خصوصاً خواتین اور بچوں کی سمگلنگ کو روکنے اور ان سے نمٹنے کیلئے ٹریفکنگ ان پرسن ایکٹ 2018 نافذ کیا ہے۔ اس قانون میں ایسے غیر قانونی کاموں کے مرتکب افراد کیلئے دس سال تک قید کی سزا تجویز کی گئی ہے۔

صدر مملکت نے کہا کہ وزیر داخلہ کی سربراہی میں انسانی سمگلنگ سے متعلق قومی رابطہ کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔ یہ کمیٹی جبری مشقت اور جنسی سمگلنگ سمیت انسانی سمگلنگ کی تمام اقسام کے خلاف جنگ میں قومی کوششوں کو آگے بڑھانے کی ذمہ دار ہے۔ صوبائی سطح پر تمام متعلقہ محکموں بشمول سوشل ویلفیئر، لیبر، پولیس، چائلڈ پروٹیکشن اور این جی اوز کو صوبائی اور ضلعی انسداد انسانی سمگلنگ کمیٹیوں کا حصہ بنایا گیا ہے تاکہ انسانی سمگلنگ کے متاثرین کی مؤثر طریقے سے شناخت اور حفاظت کی جا سکے۔

صدر مملکت نے کہا کہ وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسداد منشیات اور جرائم (یو این او ڈی سی) کے تعاون سے انسانی سمگلنگ سے نمٹنے کیلئے قومی ایکشن پلان (2021-2025) تیار کیا ہے۔ یہ ایکشن پلان مختلف سٹیک ہولڈرز کے کردار کو نمایاں کرتا ہے اور قومی ردعمل کیلئے ایک جامع فریم ورک فراہم کرتا ہے۔

صدر مملکت نے انسانی سمگلنگ کی روک تھام کے وفاقی اور صوبائی حکومتوں اور دیگر تمام متعلقہ سٹیک ہولڈرز کی مشترکہ کوششوں کو سراہا ۔

یہ خبر پڑھیئے

سیلاب متاثرین کے 15 لاکھ خاندانوں میں 25 ہزار فی خاندان کے حساب سے 37 ارب روپے تقسیم کئے جائیں گے، وزیراعظم

سیلاب متاثرین کے 15 لاکھ خاندانوں میں 25 ہزار فی خاندان کے حساب سے 37 ارب روپے تقسیم کئے جائیں گے، وزیراعظم

وزیراعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ شدید بارشوں اور سیلاب متاثرین کے 15 …

Show Buttons
Hide Buttons