ریاست ہائے متحدہ امریکہ بچوں کے لئے تیار کی گئی کووڈ-19 کی ایک کروڑ 60 لاکھ خوراکیں عطیہ کرے گا

ریاست ہائے متحدہ امریکہ بچوں کے لئے تیار کی گئی کووڈ-19 کی ایک کروڑ 60 لاکھ خوراکیں عطیہ کرے گا

ریاست ہائے متحدہ امریکہ کوویکس کے ساتھ ایک معاہدہ کے تحت پاکستان کو بچوں کے لئے تیارکی گئی کووڈ-19 ٹیکوں کی ایک کروڑ 60 لاکھ خوراکیں عطیہ کرے گا جس کے بعد پاکستان کو امریکہ کی جانب سے دی جانے والی کرونا ویکسین کی تعداد سات کروڑ 70 لاکھ سے زیادہ ہوجائے گی، ویکسین کی نئی کھیپ کی فراہمی کا اعلان واشنگٹن میں پاکستان اور امریکہ کے درمیان منعقد ہونے والے پہلے ہیلتھ ڈائیلاگ کے اختتام کے موقع پر کیا گیا۔

مزید برآں یوایس ایڈ کی جانب سے مالی اعانت کی مد میں دو کروڑ ڈالر اضافی معانت بھی پاکستان کو ویکسینیشن مہم کی کوششوں میں مدد کے طور پر مہیا کرنے کا منصوبہ ہے۔ واضح رہے کہ وباء کے آغاز سے لیکراب تک امریکی حکومت کی جانب سے پاکستان کو سات کروڑ چار لاکھ ڈالر کی براہ راست اور ۱ کروڑ ۳۸ لاکھ ڈالر مالیت کا سامان کووڈ-۱۹ کے خلاف جنگ میں معاونت کے طور پر دیا گیا ہے۔ امریکہ پاکستان کو سب سے زیادہ کرونا ویکسین عطیہ کرنے والا واحد مُلک ہے۔

فائزر اور موڈرنا ویکسین کے علاوہ امریکہ نے یوایس ایڈ کے توسط سے چھیالیس لاکھ ڈالر مالیت کی چار موبائل لیبارٹریز پاکستان کے قومی ادارہ برائے صحت کو فراہم کی ہیں۔ یہ لیبارٹریز کرونا وباء اور دیگر متعدی امراض کی تشخیص کی استعداد کار بڑھانے میں پاکستان کی معاون ثابت ہوں گی خاص طور پر دُورافتادہ اور سہولیات سے محروم علاقوں کے لوگ اس سہولت سے مستفید ہوں گے۔

یاد رہے کہ امریکہ نے پاکستان کو بارہ لاکھ این نائنٹی فائیو ماسک، چھانوے ہزارسرجیکل ماسک، باون ہزار حفاظتی گوگلز، دس لاکھ کووڈ فوری ٹیسٹ کے لیے درکار آلات، بارہ سوسے زائد پلس آکسی میٹرزاورچونسٹھ پاکستانی ہسپتالوں کے لئے دو سو وینٹی لیٹرز بھی فراہم کیے ہیں۔

امریکی حکومت نے پاکستان بھرمیں تیس ہزار سے زیادہ خواتین صحت کارکنوں کو کرونا متاثرین کی گھر ہی میں دیکھ بھال کی تربیت فراہم کی ہے اور مرض کی نگرانی اور رد عمل کے یونٹ اور ٹیموں کا نیٹ ورک بھی تشکیل دیا ہے جس کے نتیجہ میں موجودہ وباء کی لہر اور مستقبل میں آنے والی ممکنہ بیماریوں سے مقابلہ کے لئے بنیادی ڈھانچہ فراہم ہوا ہے۔

اس موقع پر اظہارِ خیال کرتے ہوئے امریکی سفیر ڈونلڈ بلوم نے صحت کے شعبہ میں مضبوط باہمی تعاون کی اہمیت پر زور دیا اور کووڈ-19 کے خلاف جنگ میں پاکستان کی شراکت کا ذکر اور تعاون پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ پچہتر سال پر مُحیط باہمی تعلقات کے دوران ہم نے اپنے تعاون اور شراکت کے فروغ پر کام کیا ہے جو کہ کرونا وباء کے سدباب اور پاکستان میں اُس کے پھیلاؤ کے خاتمہ کے لیے کوششوں سے بھی عیاں ہے۔ ہم صحتِ عامہ کو لاحق اس دیرینہ مشکل پر قابو پانے کے لئے شانہ بشانہ کام کریں گے۔

یہ خبر پڑھیئے

ملک کے بیشتر حصوں میں گرج چمک کے ساتھ بارش کا امکان ہے، محکمہ موسمیات

محکمہ موسمیات کے مطابق آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران خیبرپختونخوا، بالائی پنجاب، بلوچستان، سندھ، کشمیر …

Show Buttons
Hide Buttons