تازہ ترین

اتحادی حکومت کی سپریم کورٹ سے وزیر اعلیٰ پنجاب کے انتخاب معاملے پر فل کورٹ تشکیل دینے کی استدعا

اتحادی جماعتوں نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ وہ اُس درخواست کی سماعت کیلئے فل کورٹ تشکیل دے جس میں اِس ماہ کی 22 تاریخ کو ہونے والے پنجاب کے وزیر اعلیٰ کے انتخابات کو چیلنج کیا گیا ہے۔

یہ مطالبہ اتحادی جماعتوں کےرہنمائوں نےآج اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس میں کیا۔ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے چیئرمین مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ فل کورٹ کی تشکیل سے یہ بات یقینی بنائی جائے گی کہ فیصلہ میرٹ پر کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ عدلیہ پر اعتماد بحال ہو۔ مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ اتحادی حکومت نے ملک میں سری لنکا جیسی صورتحال کو روکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کو سابق حکومت کی طرف سے چھوڑے گئے معاشی بحران سے نکالنے کیلئے قومی اتحاد وقت کا تقاضا ہے۔

وزیر خارجہ بلاول بھٹو زرداری نے اِس اعتماد کا اظہار کیا کہ فل کورٹ تشکیل دینے کا اُن کا مطالبہ تسلیم کیا جائے گا تاکہ کوئی بھی شخص جو بھی فیصلہ آئے اُس پر اعتراضات نہ اٹھا سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ ادارے غیر متنازعہ رہیں۔

پاکستان مسلم لیگ نون کی نائب صدر مریم نواز نے کہا کہ حمزہ شہباز کو پہلے دن سے ہی وزیر اعلیٰ کے طور پر کام نہیں کرنے دیا گیا۔ انہوں نےافسوس ظاہر کیا کہ اس بات کے ناقابل تردید ثبوت ہیں کہ پاکستان تحریک انصاف نے مختلف ذرائع سے ممنوعہ فنڈز وصول کئے۔ تاہم قوم گزشتہ سات سال سے زائد عرصے سے مقدمے کے فیصلے کا انتظار کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہر ایک کے ساتھ مساوی سلوک کیا جانا چاہئے اور عدالت کا فیصلہ انصاف پر مبنی ہونا چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف جلد پاکستان واپس آئیں گے۔ بلوچستان عوامی پارٹی کے خالد حسین مگسی، پاکستان مسلم لیگ ق کے طارق چیمہ، عوامی نیشنل پارٹی کے ایمل ولی خان، ایم کیو ایم کے اسامہ قادری، محسن داوڑ، آغا حسن بلوچ، اسلم بھوتانی اور زین بگٹی سمیت دیگراتحادیوں نے بھی یہی بات کہی کہ انصاف کے تقاضے پورے کرنے کیلئے فل کورٹ کی تشکیل ضروری ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

شیاؤمی نے انسان نماء روبوٹ سائبر ون کو مارکیٹ میں متعارف کروا دیا

شیاؤمی نے انسان نماء روبوٹ سائبر ون کو مارکیٹ میں متعارف کروادیا چین کی سمارٹ …

Show Buttons
Hide Buttons