تازہ ترین

چین کے جنوبی ساحل پر پراسرار ‘گنگناتی ریت’ دریافت

چینی سائنسدانوں نے جنوبی صوبہ ہائینان میں جزیرہ نماء شن چَو اور چھِنگ شوئی خلیج کے ساحلی علاقوں میں “گنگناتی ریت” کے متعدد مقامات دریافت کئے ہیں۔

چائنیز اکیڈمی آف سائنسز کے تحت نارتھ ویسٹ انسٹیٹیوٹ آف ایکو انوائرمنٹ اینڈ ریسورسز کے محقق اور ٹیم کے راہنماء چھو چیان چن کے مطابق یہ بات طویل عرصے سے فرض کی جارہی تھی کہ چین کے ساحلی علاقے میں گنگناتی ریت کا کوئی وجود نہیں، لیکن ادارے کی تازہ ترین تحقیق نے اس حوالے سے ایک نیا جواب فراہم کیا ہے۔

تحقیق سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ ریت چھنچھناتی ہوئی، سیٹیاں بجاتی یا گنگناتی ہوئی  ریت کے نام سے جانی جاتی ہے۔ ایسی ریت بنیادی طور پر صحراؤں یا ساحلی پٹی کے ساتھ پھیلی ہوتی ہے۔ماہرین کے مطابق یہ قدرتی عجوبہ ہوا یا پانی کے ساتھ ذرات کے حجم،ساخت اور دیگر جسمانی خصوصیات کی وجہ سے پیدا ہوتا ہے۔ تحقیق سے ظاہر ہوتا ہے کہ سمندری ریت کی متحرک ٹوٹتی ہوئی لہریں بغیر اشکال ذروں کو حجم کے لحاظ  سے منفرد ترتیب دیکر ساحلی ریت کی شکل دیتی ہے۔

چھو چیان چن کا کہنا ہے کہ یہ ساحلی ریت صحرائی پارک کے قیام کیلئے اچھی ثابت ہوگی، جو سائنسی تحقیق اور تعلیم کے ایک پلیٹ فارم کے طور پر کام کر سکتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس سے قبل گنگناتی ریت چین میں صرف اندرون ملک مقامات پر پائی جاتی تھی۔ گنگناتی ساحلی ریت کو معیاری ساحلوں کی عکاسی کے طور پر سمجھا جاتا ہے، جو اہم اقتصادی، سماجی اور ماحولیاتی فوائد پیدا کر سکتی ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

چین نے دنیا کا سب سے بڑا کنٹینر بردار بحری جہاز سمندر میں اتار دیا

چین نے دنیا کا سب سے بڑا کنٹینر بردار بحری جہاز سمندر میں اتار دیا

چین میں تیار کئے گئے دنیا میں اپنی نوعیت کے سب سے بڑے کنٹینر بردار بحری …

Show Buttons
Hide Buttons