تازہ ترین

کینیڈ ا کی جانب سےہواوے پرپابندی عائد کرنےکی منصوبہ بندی آزاد تجارتی معاہدے کی سنگین خلاف ورزی ہے، چین

کینیڈا میں قائم چینی سفارتخانے کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں اٹاوا کی جانب سےچینی کمپنیوں ہواوے اور زیڈ ٹی ای کی ٹیلی کام مصنوعات پر عائد کی جانے والے پابندی لگانے کے منصوبے پر شدید تنقید کی گئی ہے۔

بیان میں کہاگیا ہے کہ کینیڈین حکومت کا یہ اقدام مارکیٹ کے معاشی اور آزاد تجارتی اُصولوں کی سنگین خلاف ورزی ہے۔ خیال رہے کہ کینیڈین حکومت نے نام نہاد قومی سلامتی کے خدشات کا حوالہ دیتے ہوئے چین کی ٹیلی کمیونیکیشن کی کمپنیوں یعنی ہواوے اور ذیڈ ٹی ای پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیاہے۔ چینی سفارتخانے کے ترجمان نے اپنی ویب سائٹ پر شائع ہونے والے ایک بیان میں کہاہےکہ چینی حکومت نے ہمیشہ چینی کمپنیوں پر زور دیا ہے کہ وہ عالمی سطح پر کاروبار کرنےکے دوران اُس ملک کے قوانین اور بین لاقوامی قوانین کا خاص خیال رکھیں، جبکہ ہواوے اور زیڈ ٹی ای نے ہمیشہ بہت اچھے سائبر سیکیورٹی ریکارڈز کو برقرار رکھا ہے۔

کینیڈین فریق نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ اس ضمن میں اپنے اتحادیوں سے مشاورت کی ہے ۔چینی ترجمان نے واضح اور دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ کینیڈا چینی نجی کمپنیوں پر اپنا دباؤ برقرار رکھنے کیلئے امریکہ کے ساتھ مل کر ایسے اوچھے ہتکنڈے اختیار کررہاہے۔ انہوں مزید کہا کہ چین اس معاملے کی مکمل چھان بین کرے گااور چینی کمپنیوں کے جائز حقوق اور مفادات کے تحفظ کیلئے تمام ممکنہ اقدامات اختیار کرے گا۔

دوسری جانب چین کی وزارت تجارت کی جانب سے کینیڈین حکومت کے اس اقدام کو تعصب پر مبنی قراردیتے ہوئے کہا کہ اس سے دونوںممالک کے متعلقہ اداروں کے تجارتی روابط کو نقصان پہنچے گا۔ چینی ترجمان نے کینیڈین حکومت پر زور دیا کہ وہ دانشمندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے غلط کاموں پر نظرثانی کرتے ہوئے انہیں فوری طور پر بند کردے۔

کینیڈا میں قائم چینی سفارتخانے کے ترجمان کی طرف سے جاری کردہ بیان میں مزید کہا گیاہے کہ کینڈین حکومت نے کہاہے کہ چینی نجی کمپنی یعنی ہواوے، زیڈٹی ای کی جانب سے فائیو جی ٹیکنالوجی کےآلات اور منظم خدمات کو 28 جون 2024 تک ختم کردیاجائے گا۔ ترجمان نے مزید کہا کہ کینیڈین حکومت کے مطابق چین کی دونوں نجی کمپنیوں پر آلات اور خدمات کی فراہمی پر پابندی عائد کی جائے گی اور دونوں فرموں کی جانب سےنئے فورجی آلات اور خدمات کا استعمال بھی ممنوع ہو گا جبکہ چینی کمپنیوں یقینی ہواوے اور زیڈ ٹی ای کے آلات اور خدمات کو 31 دسمبر 2027 تک ختم کردیاجائے گا۔

کینیڈا میں قائم ہواوے کے کارپوریٹ امور کےنائب صدر علیحان ویلشی نے کینیڈین براڈکاسٹنگ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا ہے کہ کمپنی تاحال اس بات کی منتظر ہے کہ کینیڈین حکومت کو ہواوے کمپنی سے کس قسم کے قومی سلامتی کے حوالے سے خدشات کا سامناہے۔ انہوں نے کہا کہ کینیڈا میں ہواوے کمپنی کے اب بھی تقریباً ایک ہزار500ملازمین کام کر رہے ہیں جو تحقیق، موبائل فونز کی فروخت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی سے وابستہ دیگر امور سرانجام دے رہے ہیں اور وہ اپنا کام کرتے رہیں گے۔

یہ خبر پڑھیئے

شدید گرمی کے باعث 2053 تک وسطی امریکہ کے 10 کروڑ افراد متاثر ہوں گے، مطالعہ

شدید گرمی کے باعث 2053 تک وسطی امریکہ کے 10 کروڑ افراد متاثر ہوں گے، مطالعہ

ایک نئی تحقیق کے مطابق سال 2053ء تک “انتہائی گرمی کی پٹی” میں رہائش پذیر …

Show Buttons
Hide Buttons