تازہ ترین
چینی طبی ماہرین کی کوویڈ پر مکمل قابو پانے میں روایتی ادویہ کے کردار کی وضاحت

چینی طبی ماہرین کی کوویڈ پر مکمل قابو پانے میں روایتی ادویہ کے کردار کی وضاحت

 معروف چینی ماہر برائے وبائی امراض چانگ پولی نے کوویڈ-۱۹ کے علاج میں روایتی چینی ادویہ کے کردار کو اجاگر کرتے ہوئے کہا ہے کہ چین کے مکمل طور پر کوویڈ سے پاک ہونے کا مطلب کوویڈ سے بالکل پاک ہونا نہیں ہے۔

چائنیز اکیڈمی آف انجینئرنگ کے ماہر تعلیم چانگ کے مطابق محرک کوویڈ پر قابو پانے کا مطلب ہرگز کسی بھی نئے کیس کو ابھرنے سے روکنا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اصل کام وائرس کا جلد پتہ چلانا اور عوام الناس میں اس کا مسلسل پھیلاؤ روکنے کیلئے فوری ردعمل کے اقدامات اٹھانا ہیں۔ چانگ پولی نے کہا کہ چین کی کثیر آبادی اور طرز تعمیر کے ساتھ وباء کے تدارک کیلئے اقدامات میں نرمی برتنا سنگین نتائج کا باعث بنے گا، جیسا کہ وائرس کا مزید وسیع پھیلاؤ اور سنگین کیسز اور اموات کی تعداد میں اضافہ۔ انہوں نے کہا کہ چین  کی جانب سے متعدد بار کوویڈ-۱۹ کے مقامی  پھیلاؤ کا تدارک کیا گیا ہے، جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ ملک نسبتاً کم قیمت پر کوویڈ پر مکمل قابو پانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

غیر علامتی اور عمومی مریضوں کے علاج میں چینی روایتی ادویہ کے کردارپر بات کرتے ہوئے چانگ نے کہا کہ ان ادویہ کا استعمال علامت کے بغیر اور غیرمہلک کیسز کی شرح کم کرنے اور علاج کا دورانیہ مختصر کرنے میں مؤثر ثابت ہوا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تصدیق شدہ کیسز میں 60 سال سے زائد عمر کے بزرگ شہریوں کی تعداد 30 فیصد ہے، جبکہ بہت سے معمر افراد چند بنیادی بیماریوں کا بھی شکار ہیں جو ان میں کوویڈ-۱۹ کی شدت کا باعث بن سکتی ہیں۔ چانگ نے مزید کہ بزرگ آبادی کو خصوصی توجہ کی ضرورت ہے۔

چانگ پو لی کے مطابق کوویڈ-۱۹ سے متاثرہ بزرگ افراد کیلئے علاج کے مختلف طریقوں کو یکجا کرنا، ابتدائی مراحل میں انفرادی علاج کی حکمت عملی وضع کرنے کے علاوہ مغربی ادویات اور چینی روایتی ادویہ کے طریقہ کار کو ملانا بھی ضروری ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

چین کا کھلے پن کو فروغ دینے کا عزم پختہ ہے، چینی وزارت خارجہ

چین کا کھلے پن کو فروغ دینے کا عزم پختہ ہے، چینی وزارت خارجہ

بارہ اگست کو وزارت خارجہ کی پریس کانفرنس میں ایک رپورٹر نے پوچھا کہ چائنہ کونسل فار …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons