اپوزیشن تصادم کی طرف نہ جائے ورنہ جھاڑو پھر جائے گا، ضمیر فروشوں کا فیصلہ قوم کرے گی ، وزیر داخلہ

وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ اپوزیشن تصادم کی طرف نہ جائے ورنہ جھاڑو پھر جائے گا، ضمیر فروشوں کا فیصلہ قوم کرے گی، یہ پہلا موقع ہے کہ شہباز شریف کی بلی بھی تھیلے سے باہر آئی ہے ، اتحادی وزیراعظم عمران خان کے ساتھ ہیں اور ان شاءاللہ وزیر اعظم کو کامیابی ہوگی،اسلام آباد میں سکیورٹی پہلے سے بہتر ہے، امن و امان کے قیام کے لیے اقدامات کر رہے ہیں، پولیس کو بھی جدید نظام سے لیس کرنا ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعرات کو اسلام آباد کے مقامی ہوٹل میں نیشنل پولیس کانفرنس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ پولیس کی سیاست نہیں کرتا، اسلام آباد میں سکیورٹی پہلے سے بہتر ہے، امن و امان کے قیام کے لیے اقدامات کر رہے ہیں اور مزید بھی ضرورت ہے، دنیا بھر میں پولیس کا کام مشکل ترین ہوتا ہے، دنیا میں سائنس اور ٹیکنالوجی نے ترقی کرلی ہے، پولیس کو بھی جدید نظام سے لیس کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں 21، 22 اور 23 مارچ کو مقامی سطح پر چھٹی ہوگی، 23 مارچ کو تاریخی پریڈ ہورہی ہے ، 25 مارچ سے مطلع صاف ہونا شروع ہوجائے گا، 23 مارچ کے بعد سارا ہفتہ سیاسی ہوگا اور یہ سیاسی دنگل اسلام آباد میں ہوگا، اس لیے 20 مارچ سے اسمبلی اور لاجز کےاطراف میں ایف سی اور رینجرز تعینات ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ قومی اسمبلی ،پارلیمنٹ لاجز کو رینجرز اور ایف سی پوری پروٹیکشن دیں گے، 25 مارچ کو اپوزیشن کا جلسہ ہے سکیورٹی دیں گے، 27 مارچ کو ڈی چوک میں تحریک انصاف کا جلسہ ہوگا، میں 25 تاریخ سے خبر دوں گا، ابھی تو ہلکی پھلکی موسیقی ہے، ہم صحیح وقت پر صحیح فیصلے کریں گے۔شخ رشید نے کہا کہ سندھ ہاؤس میں پرائیویٹ فورس لائی گئی ہے اور وہاں کچھ لوگ موجود ہیں اور خرید و فروخت کا سلسلہ جاری ہے، ضمیر کو بیچ کر دولت کمانے والوں کے کام یہ دولت نہیں آئے گی،

اچھے لوگ مشکل وقت میں ساتھ کھڑے ہوتے ہیں، حق میں یا مخالفت میں ووٹ دینا ایم این اے کا فیصلہ ہے ، امید ہے اتحادی وزیر اعظم عمران خان کے ساتھ ہوں گے اور وزیر اعظم کامیابی سے ہمکنار ہوں گے اور اپوزیشن کو شکست ہوگی، عمرا ن خان ہاریں یا جیتیں میں ان کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑا ہوں، اگر اپوزیشن نے تصادم کیا تو اس وقت کو روئے گی۔اپوزیشن 3 سال بیٹھی رہی اب مولا جٹ بننے جارہی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ پہلی بار شہباز شریف کی بلی تھیلے سے نکل آئی ہے اور انہوں نے قومی حکومت کا مطالبہ کیا، یہاں کوئی اندھیر نگری نہیں، شہباز شریف ایکسپوز ہوگئے ہیں، ووٹ کو عزت دو کے نعرے کہاں گئے، ان لوگوں کو ساڑھے 3 سال بعد اچانک قومی حکومت کا خیال آگیا ہے، عمران خان اپوزیشن کی بےوقوفی سے زیادہ مقبول ہوگئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہم ملک میں آئین اور قانون کا عملی جامہ پہنانا چاہتے ہیں

یہ خبر پڑھیئے

اوپیک پر کمزور ہوتی امریکی گرفت

اوپیک پر کمزور ہوتی امریکی گرفت

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons