جانور کا دل ٹرانسپلانٹ کروانے والا دنیا کا واحد شخص چل بسا

 خنزیر کا دل ٹرانسپلانٹ کروانے والا دنیا کا واحد شخص کامیاب آپریشن کے دو ماہ بعد چل بسا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست میری لینڈ سے تعلق رکھنے والے 57 سالہ ڈیوڈ بینیٹ کو 12 جنوری 2022 کو کامیاب آپریشن میں خنزیر کا جینیاتی طور پر تیار کردہ دل لگایا گیا تھا جس کے بعد وہ بہتر محسوس کر رہے تھے۔

ڈیوڈ کی موت کی وجہ فی الحال سامنے نہیں آئی ہے تاہم ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ گزشتہ چند دنوں میں ان کی طبیعت بگڑنا شروع ہوئی تھی۔ ڈیوڈ بینیٹ دنیا کے پہلے شخص تھے جن پر خنزیر کا دل لگانے کا کامیاب تجربہ کیا گیا تھا۔ اس مقصد کے لیے سائنسدانوں نے خنزیر کے دل کو جینیاتی طور پر اس طرح تبدیل کیا تھا کہ وہ انسانی جسم میں جانے کے بعد قابل قبول ہو۔

اس ٹرانسپلانٹ پر ایک کروڑ 75 لاکھ پاکستانی روپے لاگت آئی تھی، ڈاکٹر منصور کا کہنا تھا کہ چند مہینوں کے خنزیر کا دل حجم میں بالغ انسان کے دل کے برابر آ جاتا ہے اور اس کی ساخت انسانی دل سے کافی حد تک ملتی جلتی ہے۔ ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ بالٹیمور میں 7 گھنٹے کے تجرباتی پروسیجر کے تین دن بعد ڈیوڈ بینیٹ صحت یاب ہو رہے ہیں، اس ٹرانسپلانٹ کو بینیٹ کی زندگی بچانے کی آخری امید سمجھا جا رہا تھا۔

بینیٹ نے سرجری سے ایک دن پہلے کہا تھا کہ مجھے یا تو مرنا ہے یا یہ ٹرانسپلانٹ کرنا ہے، میں جانتا ہوں کہ یہ اندھیرے میں تیر جیسا ہے، لیکن یہ میرا آخری آپشن ہے۔ یونیورسٹی آف میری لینڈ میڈیکل سینٹر کے ڈاکٹرز کو امریکی میڈیکل ریگولیٹر کی طرف سے اس سرجری کو انجام دینے کے لیے خصوصی اجازت دی گئی تھی، اس بنیاد پر کہ مریض جسے دل کا عارضہ لاحق ہے، بصورت دیگر مر جائے گا۔

یہ خبر پڑھیئے

بلوچستان میں سات روزہ انسداد پولیو مہم کا آغاز

بلوچستان  کے پانچ اضلاع کی 141 یونین کونسلوں میں 7روزہ  انسداد پولیو مہم کا آغاز ہو …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons