حکومت اور کالعدم تنظیم کے درمیان معاہدہ طے پا گیا

حکومت اور کالعدم تنظیم کے درمیان معاہدہ طے پا گیا

حکومت پاکستان اور ٹی ایل پی کے مابین اعتماد باہمی کے ماحول میں تفصیلی مذاکرات کے بعد اتفاق رائے سے معاہدہ طے پا گیا ہے۔ آئندہ عشرے میں اس کے مثبت نتائج سامنے آجائیں گے۔

حکومت کی طرف سے مذاکرات کیلئے بنائی گئی کمیٹی میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر، مفتی منیب الرحمان اور علی محمد خان شامل تھے۔ تحریک لبیک پاکستان کی جانب سے مفتی محمد عمیر، علامہ غلام عباس فیضی اور حافظ محمد حفیظ مذاکرات میں شامل ہوئے۔

مفتی منیب الرحمان نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ کمیٹی اور ٹی ایل پی میں جو معاہدہ طے پایا اس کو حافظ سعد رضوی کی تائید بھی حاصال ہے۔ انہوں نے بتایا کہ فریقین میں مذاکرات پر سکون ماحول میں ہوئے، اس میں کسی کی فتح یا شکست نہیں ہوئی۔

معاہدے کی نگرانی کیلئے علی محمد خان کی سربراہی میں ایک اسٹیرنگ کمیٹی بنا دی گئی ہے۔ وزیر قانون برائے پنجاب راجہ بشاوت، سیکرٹری وزارت داخلہ حکومت پاکستان اور ہوم سیکرٹری پنجاب، مفتی غلام غوث بغدادی اور انجینئر حفیظ اللہ علوی بھی کمیٹی میں شامل ہیں۔

شاہ محمود نے کہا کہ علماء اور مشائخ نے اپنے تدبر سے اس معاملے کو حل کیا۔ قوم اضطراب میں مبتلا تھی۔ سڑکیں کاروبار بند معیشت ٹھپ تھی۔ ہم نے امن اور بہتری کا راستہ تلاش کیا۔ انہوں نے تمام علما اور تحریک لبیک کی قیادت کا شکریہ بھی ادا کیا۔

یہ خبر پڑھیئے

ایرانی پارلیمنٹ نے ایران کی شنگھائی تعاون تنظیم میں شمولیت کا بل منظور کر لیا

27 نومبر کو ایرانی پارلیمنٹ نے ایران کے شنگھائی تعاون تنظیم کا رکن بننے کا …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons