November 18, 2009 - Pacific Ocean: The Seawolf-class attack submarine USS Connecticut is underway in the Pacific Ocean during Annual Exercise. ANNUALEX is a yearly bilateral exercise with the U.S. Navy and the Japan Maritime Self-Defense Force to enhance their capabilities. The Seawolf-class submarines were envisioned as the best submarines ever built. Designed to succeed the Los Angeles-class attack submarines and maintain America's edge in the underwater domain, the class suffered from cost overruns and the collapse of the Soviet Union. While still some of the best submarines ever built, they were built at reduced numbers. In many respects, they are the F-22 of stealth submarines: widely considered the world's best, but costs made their wide usage a major challenge. (Adam K. Thomas/US Navy/Polaris)

امریکی فوجی جوہری آبدوز کے تصادم کے واقعے نے سنگین حفاظتی خطرات کو بے نقاب کر دیا ہے

حال ہی میں امریکی بحریہ  کی “کنیکٹی کٹ” جوہری آبدوز  بحیرہ جنوبی چین  میں غوطہ خوری کے دوران  کسی نامعلوم چیز سے ٹکرا گئی جس سے عالمی برادری میں تشویش کی لہر دوڑ گئی۔

چاہے وہ خود حادثے سے پیدا ہونے والا حفاظتی خطرہ ہو یا اس واقعے سے نمٹنے میں امریکہ کا غیر ذمہ دارانہ رویہ، اس نے بین الاقوامی برادری پر واضح کر دیا ہے کہ امریکہ کا طویل المدتی تسلط پسندانہ رویہ اور شفافیت کی کمی علاقائی سلامتی اور استحکام کے لئے  سب سے بڑا خطرہ ہیں۔

امریکہ کی طرف سے بحیرہ جنوبی چین میں جنگی بحری جہازوں اور ہوائی جہازوں کا بار بار اور بڑے پیمانے پر بھیجا جانا تنازعات اور خطرات کو ہوا دینے کا باعث بن رہا ہے۔ جولائی کے آخر تک، امریکی فوج نے چین پر سمندری اور فضائی راستے سے تقریباً 2000 جاسوسی کی کارروائیاں کیں۔

امریکہ کو جلد از جلد ذمہ دارانہ رویہ اختیار کرنا چاہیے، اصل حقائق واضح کرنے چاہییں اور بین الاقوامی برادری کے خدشات کا جواب دینا چاہیے۔

یہ خبر پڑھیئے

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی الوداعی ملاقات

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons