ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے مکالمے کا انعقاد

ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے مکالمے کا انعقاد

ستائیس اکتوبرکو، 30 سے ​​زائد ایشیائی ممالک اور پانچ بڑی بین الاقوامی تنظیموں کے اعلیٰ سطحی حکام، ماہرین اور سکالرز نے ویڈیو لنک کے ذریعے ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے دو روزہ مکالمے میں شرکت کی۔

یونیسکو کے ڈپٹی ڈائریکٹر جنرل چھو شن نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ثقافتی ورثے کے تحفظ میں ایشیا ہمیشہ سے دنیا میں پیش پیش ہے۔ چین جیسے ایشیائی ممالک نے یونیسکو کے ثقافتی کنونشنز میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے جو بنی نوع انسان کے ثقافتی ورثے اور خطے کے مشترکہ مفادات کا تحفظ کرنے کے عزم کی عکاسی کرتا ہے۔

اسی دن، چین، پاکستان، شام اور یمن سمیت 10 ایشیائی ممالک نے مشترکہ طور پر ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے لئے” ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کا اتحاد” کے نام سے بین الاقوامی تعاون کے ایک نئے طریقہ کار کا آغاز کیا ہے- اطلاعات کے مطابق، اس کے رکن ممالک مشترکہ طور پر اتحاد کا چارٹر اور ایکشن گائیڈ لائنز مرتب کریں گے۔

چین، ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے اقدامات اور اتحاد کی تعمیر کے لئے ضروری مدد فراہم کرے گا۔ اس کے علاوہ”ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے لئے مشترکہ کارروائیوں کی تجاویز” پیش کی جائئیں گی، ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کافنڈ قائم کیا جائے گا اور ” ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے نوجوان سفیر پروگرام “شروع کیا جائے گا جس میں ایشیائی ثقافتی ورثے کے تحفظ کے لئے نوجوانوں کو تربیت دے کر ایک پیشہ ورانہ  ٹیم تیار کی جائے گی۔

یہ خبر پڑھیئے

چین اور عرب ممالک کے درمیان "بیلٹ اینڈ روڈ" کی مشترکہ تعمیر کے ثمرات

چین اور عرب ممالک کے درمیان “بیلٹ اینڈ روڈ” کی مشترکہ تعمیر کے ثمرات

چین اور عرب ممالک کے درمیان 2012کے بعد سے اسٹریٹجک شراکت داری نے نئی پیش …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons