چین کی پر امن ترقی دیگر دنیا کے لیے ایک مثال، اقوام متحدہ میں پاکستانی مندوب

عوامی جمہوریہ چین کی اقوام متحدہ میں قانونی نشست کی بحالی کی 50ویں سالگرہ کی تقریب سے صدر شی جن پھنگ نے اہم خطاب کیا جسے عالمی حلقوں میں نمایاں سراہا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کے جنیوا دفتر میں پاکستان کے مستقل نمائندے سفیر ہاشمی نے 26 تاریخ کو میڈیا بات چیت میں صدر شی کے خطاب کو بروقت اور معنی خیز قرار دیا۔ انہوں نے چین کی پرامن ترقی کو ایک نمونہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ چین نے سماجی اور اقتصادی میدان میں انسانی تاریخ کی بے مثال ترقی کی ہے۔

ہاشمی نے کہا کہ 50 سال قبل اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی نے اقوام متحدہ میں عوامی جمہوریہ چین کی قانونی نشست کی بحالی کے لیے قرارداد 2758 منظور کی تھی۔ پاکستان بھی اس اہم قرارداد کے حامیوں میں شامل تھا جس پر پاکستان کو گہرا فخر ہے۔ اس پیش رفت سے دنیا پر گہرے اور وسیع اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

بین الاقوامی نظام مزید پرامن اور مستحکم ہوا ہے، دنیا بھر میں مزید ترقی اور خوشحالی دیکھی گئی ہے، عالمی نظام کی اصولی بنیاد مضبوط ہوئی ہے، اور اقوام متحدہ کے چارٹر اور بین الاقوامی قانون کے اصولوں کا احترام مزید مضبوط ہوا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس پیش رفت سے کثیرالجہتی تعاون کو تقویت ملی ہے، انسانی حقوق، وقار اور تقاضوں کو مزید تسلیم کیا گیا ہے۔ سلامتی کونسل کے مستقل اور ایک ذمہ دار رکن کے طور پر چین نے ان تمام شعبہ جات میں اہم کردار ادا کیا۔

یہ خبر پڑھیئے

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی الوداعی ملاقات

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons