امریکہ برطانیہ اور آسٹریلیا کے درمیان تعاون سے ایٹمی پھیلاؤ کے خطرے میں اضافہ

امریکہ برطانیہ اور آسٹریلیا کے درمیان تعاون سے ایٹمی پھیلاؤ کے خطرے میں اضافہ

پندرہ تاریخ کو امریکہ، برطانیہ اور آسٹریلیا نے ایک نئے سہ فریقی سیکیورٹی شراکت دارتعلقات قائم کرنے کا اعلان کیا۔

امریکہ اور برطانیہ نیوکلیئر سب میرین فورس کے قیام میں آسٹریلوی بحریہ کی مدد کریں گے جس سے علاقائی سلامتی کے بارے میں بین الاقوامی خدشات پیدا ہوئے ہیں۔ بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کے ڈائریکٹر جنرل رافیل گروسی نے چند روز قبل اپنے دورہ امریکہ کے دوران کہا تھا کہ امریکہ، برطانیہ اور آسٹریلیا کا یہ اقدام دوسرے ممالک کو اس کی پیروی کرنے اور ایٹمی پھیلاؤ کے خطرے کو بڑھانے پر اکساتا ہے۔

گروسی نے کہا کہ بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی نے امریکہ، برطانیہ اور آسٹریلیا کے اس تعاون کی تحقیقات کے لئے ایک خصوصی ٹیم روانہ کی ہے۔ گروسی نے کہا کہ امریکہ، برطانیہ اور آسٹریلیا کو بین الاقوامی ایٹمی توانائی ایجنسی کے ساتھ مخصوص معاہدے تک پہنچنے کی ضرورت ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ آسٹریلیا کی طرف سے حاصل کردہ ٹیکنالوجی اور مواد بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی کی نگرانی میں ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

چین کے انسان بردار مشن شینزو-15 کے حوالے سے تعارفی پریس کانفرنس

چین کے شینزو- 15 انسان بردار مشن کے حوالے سے تعارفی پریس کانفرنس 28 نومبر کو جیو …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons