انتہا پسند ہندوؤں نے کھلے میدان میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے روک دیا

بھارتی ریاست ہریانہ کے شہر گروگرام میں ہندو جنونیوں نے مسلمانوں کو ایک کھلے میدان میں نماز جمعہ ادا کرنے سے روک دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست گروگرام کے سیکٹر 47 کے ایک کھلے میدان میں چار ہفتوں سے مسلمان نماز جمعہ کی ادائیگی کر رہے ہیں جس پر نام نہاد سیکولر ملک کے انتہا پسند ہندوؤں نے ہنگامہ کھڑا کردیا۔ مسلمانوں کو نماز جمعہ کی ادائیگی سے روکنے کے لیے مقامی انتہا پسند ہندوؤں نے دھمکیاں دیں اور مغلظات بکیں جس کی پشت پناہی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی نے کی تھی۔

گروگرام کی پولیس انتہا پسندوں کولگام دینے میں ناکام رہی تاہم بعد میں کھلے میدان سے دور ایک اور دوسری جگہ پر نمازکی ادائیگی کی اجازت دیدی گئی۔ نماز جمعہ کے لیے دوسرے جگہ دینے کے باوجود ہندو جنونیوں کے دل میں جلن کی آگ ٹھنڈی نہ ہوئی اور مسلمان پولیس کی کڑی نگرانی میں نماز جمعہ دوسرے میدان میں ادا کرنے پر مجبور ہوئے۔

یہ خبر پڑھیئے

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی الوداعی ملاقات

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons