تازہ ترین
اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 48ویں اجلاس میں نوآبادیاتی دور کے چھوڑے ہوئے مسائل سے متعلق قرار داد کی منظوری

اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کا 48ویں اجلاس: نوآبادیاتی دور کے مسائل سے متعلق قرار داد کی منظوری

آٹھ اکتوبر کو، اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 48ویں اجلاس میں چین کی جانب سے پیش کردہ ایک قرارداد کی منظوری دی گئی جس کا عنوان ہے “انسانی حقوق کے حصول پر نوآبادیاتی دور کے چھوڑے ہوئے مسائل کے منفی اثرات”۔

قرارداد میں نشاندہی کی گئی کہ نوآبادیاتی دور کے چھوڑے ہوئے مسائل کی مختلف اقسام بشمول معاشی استحصال، ممالک کے اندر اور درمیان عدم مساوات، نظامی نسل پرستی وغیرہ سب انسانی حقوق پر منفی اثرات مرتب کررہے ہیں۔

قرارداد کا مسودہ پیش کرتے ہوئے، جنیوا میں اقوام متحدہ کے دفتر اور سوئٹزرلینڈ میں دیگر بین الاقوامی تنظیموں میں چین کے مستقل نمائندے چھن شو نے کہا کہ دنیا میں مختلف شکلوں میں نوآبادیات کی میراث اب بھی عالمی امن اور ترقی کو متاثر کررہی ہے ، اور انسانی حقوق کے حصول پر سنگین منفی اثرات مرتب کررہی ہے۔

پاکستان، روس، فلپائن، اریٹیریا، وینزویلا، کیوبا، بولیویا اور دیگر ممالک کے نمائندوں نے چین کے پیش کردہ مسودہ قرارداد کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ نوآبادیاتی دور کے ورثے انسانی حقوق سے متصادم، اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی اور عالمی امن اور ترقی کی راہ میں رکاوٹ ہیں۔

پاکستان کے نمائندے نے کہا کہ قرارداد کا مسودہ موجودہ عہد کے چیلنجز کا بھرپور جواب فراہم کرتا ہے۔ نوآبادیاتی حکمرانی اور غیر ملکی قبضے نے مقامی لوگوں کی ایک بڑی تعداد کو مشکلات سے دوچار کیا تھا اور انہیں ایک باوقار زندگی سے محروم کردیا تھا۔

پاکستان نوآبادیاتی نظام کے شکار لوگوں کو جائز کوششوں کے ذریعے آزادی، انصاف اور وقار بحال کرنے میں مدد فراہم کرنے کی حمایت کرتا ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

جاپان نے پاکستان انسداد پولیو پروگرام کے لیے 3.87 ملین ڈالر کی گرانٹ فراہم کر دی

حکومت جاپان نے پاکستان انسداد پولیو پروگرام کے لیے 3.87 ملین امریکی ڈالر سے زائد …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons