تازہ ترین
احساس پروگرام بین الاقوامی سطح پر بہترین پروگرام قرار

احساس پروگرام بین الاقوامی سطح پر بہترین پروگرام قرار

اقوام متحدہ نے احساس کو بین الاقوامی سطح پر ایک بہترین پروگرام قرار دیا ہے۔ اقوام متحدہ کے پرنسپل فار ڈیجیٹل پیمنٹ 2021 کے حال ہی میں جاری کردہ ایڈیشن میں پاکستان کے احساس پروگرام کو بین الاقوامی سطح کے بہترین پروگرام کے طور پر پیش کیا گیا ہے۔

اقوام متحدہ کی رپورٹ کے مطابق احساس نے ڈیٹا فیلڈز اکٹھا کرکے اور بنیادی تصدیق کے بعد اکاؤنٹس جاری کئے اور صارفین کے لیے طریقہ کار کو آسان بنایا۔ 500،000 برانچ لیس بینکنگ ایجنٹس کو پروگرام کے ساتھ کام کرنے کی ترغیب دی تاکہ مستحقین سے وصول ہونے والے کمیشن پر ٹیکس کم کیا جاسکے ، اس طرح بزرگوں ، معذور افراد اور خواتین کو بینکاری سے متعلق خدمات میں اضافہ کیا جائے۔

ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے بتایا کہ مجھے خوشی ہے کہ پاکستان کے احساس پروگرام کو اقوام متحدہ کی جانب سے بین الاقوامی سطح پر بہترین پروگرام کے طور پر سراہا جا رہا ہے کیونکہ یہ ترقیاتی پیش رفت کو آگے بڑھانے کے لیے ڈیجیٹل ادائیگیوں میں تیزی لاتا ہے۔گزشتہ سال کووڈ 19 وبائی امراض کےدوران احساس پروگرام ملک کی تاریخ کا سب سے بڑا سماجی تحفظ پروگرام بن کر ابھرا جس سے ملک کی نصف آبادی کو فائدہ پہنچا۔15 ملین غریب خاندانوں (تقریبا 109 ملین افراد) کو 12،000 روپے کی نقد گرانٹ کے لحاظ سے 179 ارب روپے احساس ایمرجنسی کیش کے تحت تقسیم کئے گئے ۔

اس سال بھی 10 لاکھ اہل خاندانوں کو احساس نقد رقم کی ادائیگی کی جا رہی ہے۔احساس ایمرجنسی کیش کی فراہمی کے لیے احساس کے تحت قائم کی گئی ڈیجیٹل صلاحیتوں کو بالخصوص ایک نیا بائیومیٹرک ادائیگی کا نظام ، ڈیمانڈ سائیڈ ایس ایم ایس پر مبنی درخواست کا پلیٹ فارم اور ایک نیا پروفائلنگ بگ ڈیٹا اینالیٹکس میکانزم تشکیل دیا گیا ہے۔

ڈیجیٹل طور پر فعال ادائیگی کا نظام مکمل طور پر موبائل فون کے استعمال اور بائیو میٹرک تصدیق پر انحصار کرتا ہے تاکہ حکومتی امداد اور سماجی تحفظ کے درمیان تعلق کو مضبوط بنایا جا سکے۔

احساس ایمرجنسی کیش ادائیگی دو کمرشل بینکوں کے برانچ لیس بینکنگ پلیٹ فارمز (ریٹیل سیٹنگز اور خاص طور پر قائم ادائیگی کیمپ سائٹس میں) اور ان کے 1،800 بائیومیٹرک طور پر فعال اے ٹی ایم کے ذریعے کی گئی۔ 2،270 کیمپ سائٹس میں دستیاب کیش آؤٹ پوائنٹس 11،500 سے زیادہ تھے۔ 881،000 مربع کلومیٹر کے رقبے پر محیط ملک بھر میں 2،270 سے زائد مقامات پر ادائیگیوں کو مربوط کرنے کے لیے صوبائی حکومتیں اور ان کے حفاظتی آلات لاجسٹک انتظامات کے لیے ذمہ دار تھے۔

محدود مینڈیٹ اکاؤنٹس میں رقم جمع کی گئی اور افراد بائیومیٹرک تصدیق کے بعد رقم نکالنے میں کامیاب رہے۔اقوام متحدہ کے ڈیجیٹل ادائیگیوں کے اصول ادائیگیوں کی ڈیجیٹلائزیشن میں ذمہ دارانہ طریقوں کی عکاسی کرتے ہیں۔

یہ اصول اقوام متحدہ میں قائم بیٹر دین کیش الائنس نے تیار کیے ہیں ، جس کی رہنمائی اس کی رکن حکومتوں ، کمپنیوں اور بین الاقوامی تنظیموں نے کی ہے۔ یہ اہم وسائل ڈیجیٹل تعاون کے لیے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کے روڈ میپ کارسپانڈ ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کے بعد کی ہیریٹیج رپورٹ اور کھیلوں کے بعد پائیداری ترقی کی رپورٹ جاری کردی گئی

4 فروری کو2022  بیجنگ سرمائی اولمپک اور پیرالمپک سرمائی کھیلوں کی پہلی سالگرہ ہوگی۔یکم تاریخ کو …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons