امریکی ریاست نیویارک کے گورنر کی ٹرمپ کی عالمی وباء سے متعلق پالیسی پر کڑی تنقید

امریکہ کے ڈبلیو ایچ او سے تعلقات کے خاتمے سے عالمی سطح پر صحت عامہ تعاون کو نقصان پہنچے گا، برطانوی میگزین نیچر

امریکی صدر ٹرمپ نے حال ہی میں امریکہ کے عالمی ادارہ صحت کے ساتھ تعلقات کے خاتمے کا اعلان کیا اور کہا کہ اس کے واجبات کو وہ کہیں اور ادا کرے گا۔

جس کی وجہ سے عالمی برادری میں بڑے پیمانے پر شکوک و شبہات پیدا ہوگئے ہیں اور امریکہ پر تنقید کی جارہی ہے۔ برطانوی میگزین “نیچر” میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں متعدد ماہرین نے بتایا ہے کہ امریکہ کے اس عمل سے عالمی سطح پر صحت عامہ اور سائنسی تحقیقی تعاون کو نقصان پہنچے گا۔

اس وقت ، دنیا کو انسداد وبا کے عمل میں بین الاقوامی تعاون اور ہم آہنگی کی بڑی ضرورت ہے۔ نیچر میگزین کی اس رپورٹ میں جارج ٹاؤن یونیورسٹی کے گلوبل ہیلتھ سائنس اینڈ سیفٹی سنٹر کی ڈائریکٹر ربیکا کاٹز نے بتایا کہ: “اس وبا میں لوگ کہہ رہے ہیں کہ اس وقت ہماری مثال ایسی ہے کہ ہم اڑ رہے ہیں اور ساتھ ساتھ جہاز بھی بنا رہے ہیں۔ لیکن امریکہ دوران پرواز ہی جہاز کی کھڑکی ہٹا رہا ہے۔

امریکہ نے دعوی کیا ہے کہ وہ دوسرے انداز سے عالمی صحت سے متعلق مالی اعانت کرے گا۔ اس حوالے سے امریکی تھنک ٹینک گلوبل ڈویلپمنٹ سینٹر کے سینئر محقق امندا گلاس مین نے نشاندہی کہ عالمی ادارہ صحت کے بہت سے ممالک میں منصوبے ہیں جہاں ابھی تک زیادہ بین الاقوامی تعاون نہیں کیا گیا۔ در حقیقت یہ انتہائی مشکل ہے کہ امریکہ بین الاقوامی صحت سے متعلق کسی دوسرے انداز سے بڑا کردار ادا کرے، کیونکہ دوسرے ممالک کے ساتھ باہمی تعاون پر مبنی تعلقات قائم کرنے میں کئی سال لگتے ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

ثروت گیلانی کا سوشل میڈیا صارفین کو سخت پیغام

شوبز سٹار ثروت گیلانی کا کہنا ہے کہ آن لائن منفی مہم فنکاروں کو شدید …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons