جینو سائیڈ واچ کی جانب سے بھارت میں مسلمانوں کی نسل کشی کا ایمرجنسی الرٹ جاری

دنیا بھر میں نسل کشی کے واقعات پر نظر رکھنے والی تنظیم جینوسائیڈ واچ نے بھارت میں مسلمانوں کی نسل کشی کا ایمرجنسی الرٹ جاری کر دیا۔

جینوسائیڈ واچ کا کہنا ہے کہ بھارت اس وقت مسلمانوں کی نسل کشی کے آٹھویں مرحلے میں ہے اور مکمل نسلی پامالی سے صرف ایک قدم دور ہے۔

شکاگو میں ورچوئل تقریب سے خطاب میں جینوسائڈ واچ کے بانی پروفیسر گریگوری اسٹینٹن کا کہنا تھا کہ بھارت مسلمانوں پر ظلم و ستم کے ساتھ نسل کشی کے آٹھویں مرحلے پر پہنچ چکا ہے۔

بھارت نسل کشی، ظلم و ستم کے ساتھ مکمل نسلی پامالی سے صرف ایک قدم دور ہے، بھارتی وزیراعظم مسلمانوں کی نسل کشی ہوتی دیکھ کر خوش ہوتے ہیں۔ پروفیسر اسٹینٹن نے وزیراعظم مودی کے ہندو انتہا پسند تنظیم آر ایس ایس سے تعلق پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آر ایس ایس نفرت سے بھری نازی طرز کی تنظیم ہے جو ہٹلر کو سراہتی ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

ورلڈ اکنامک فورم سے چینی صدر کا خطاب، امید کا ایک اور پیغام

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons