بابری مسجد کو شہید کئے جانے کے واقعے کو 29 برس مکمل

بابری مسجد کو شہید کئے جانے کے واقعے کو آج 29 برس مکمل ہو گئے، 1992میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ کی قیادت میں ہندو بلوائیوں نے بابری مسجد کو شہید کیا تھا جس سے بھارت کا انتہا پسند چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب ہو گیا۔

کشمیر میڈیا سروس کی طرف سے جاری ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بابری مسجد کو شہید کرنے سے زیادہ اذیت ناک بات بھارت کی اعلی عدلیہ کا تعصبانہ کردار ہے جس نے نومبر2019 میں ہندووں کو تاریخی مسجد کے مقام پر مندر بنانے کی اجازت دی۔

بھارتی سپریم کورٹ نے فیصلہ سناتے ہوئے نہ صرف ہندوتوا نظریے کو ترجیح دی بلکہ بابری مسجد کو شہید کرنے میں ملوث افراد کو بھی بری کر دیا۔ رپور ٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارتی سپریم کورٹ کے تعصب پر مبنی فیصلے سے بھارت کو ہندوملک میں تبدیل کرنے کے عمل کی توثیق ہوتی ہے جہاں مسلمانوں کا وجود اب ناقابل برداشت ہوتا جا رہا ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

ورلڈ اکنامک فورم سے چینی صدر کا خطاب، امید کا ایک اور پیغام

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons