عالمی وباء کے دوران سینما انڈسٹری کو آن لائن چیلنجز کا سامنا

عالمی وباء کے دوران سینما انڈسٹری کو آن لائن چیلنجز کا سامنا

چین میں جنوری 2020ء کے دوران جب پروڈکشن کمپنیاں نئے سال کی تعطیلات کے دوران زیادہ منافع کی توقع کر رہی تھیں، کرونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کیلئے چین بھر کے سینماؤں کو بند کرنے پر مجبور کر دیا گیا تھا اور ان کے پاس انتظار کے علاوہ کوئی دوسرا راستہ نہیں تھا ۔ اس اہم مسئلے سے نمٹنے کیلئے ہوانسی میڈیا گروپ نے منفرد طریقہ کار اپنایا اور فلم”لاسٹ ان رشیا” کو اپنی لاگت سے 2 گنا منافع پر 63 کروڑ یوآن کے عیوض انٹرنیٹ فراہم کرنے والی کمپنی بائٹ ڈانس کو فروخت کر دیا، جس کے بعد کچھ دیگر کمپنیز نے بھی اپنے سرمائے کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے یہی راستہ اختیار کیا، تاہم اس سے سینما انڈسٹری کی مجموعی آمدنی کو نقصان کا سامنا رہا۔

فلم “لاسٹ ان رشیا” کی ان لائن ریلیز کے بعد چین بھر سے 20 سینما کے مالکان نے ہوانسی میڈیا پر انڈسٹری کے اصول توڑنے کا الزام عائد کرتے ہوئے شدید تنقید کی۔ اسی دوران شمالی امریکہ کی بڑی پروڈکشن کمپنیوں نے، جن میں ڈزنی،سونی،یونیورسل اسٹوڈیو اور وارنر برادرز وغیرہ شامل ہیں، یہی راستہ اختیار کیا، جس سے سینما انڈسٹری میں اشتعال پیدا ہوا ۔ باکس آفس کے تجزیہ کار لیوجا نے کہا ہے کہ بلاک بسٹر فلمیں سینما کی کمائی کا سب سے بڑا ذریعہ ہیں، لیکن یہ ان لائن دکھائی جائیں گی تو سینما گھر اپنا وجود کھو دیں گے۔

چینی سینما کے مالک شاؤ چنگ کا کہنا ہے کہ گزشتہ سال ہونے والا نقصان توقع سے زیادہ نہیں تھا۔ چین میں “لاسٹ ان رشیا” کے بعد فلموں کو صرف آن لائن ریلیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ شمالی امریکہ میں آن لائن، آف لائن اور ایک ہی وقت میں دونوں طرح سے ریلیز کا طریقہ ایک سال سے بھی کم عرصے تک چل سکا، جس کے بعد پروڈکشن کمپنیوں نے سینما اور ان لائن پلیٹ فارمز پر فلم کی ریلیز کا طریقہ کار طے کیا، جس میں واضح کیا گیا کہ بلاک بسٹر فلمیں سینما میں 17 سے 45 روز تک دکھانے کے بعد آن لائن دکھائی جا سکتی ہیں۔ فلمی تعلیم کے ماہر فَن چاؤ چھِنگ کا کہنا ہے کہ تاریخ میں سینما گھروں کو بہت سے چلنجز کا سامنا رہا، جیسا کہ ٹیلی وژن کی ایجاد کے وقت، لیکن انہیں یقین ہے کہ وبائی امراض اور انٹرنیٹ اس انڈسٹری کو طویل عرصے تک نقصان نہیں پہنچا سکیں گے۔ فَن چاؤ چھِنگ کے مطابق سینما کا کوئی نعم البدل نہیں ہے اور  فلمیں عوامی توجہ حاصل کرنے کیلئے بنائی جاتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک عوامی دلچسپی کا کام ہے، جس میں شائقین ایک ہی جگہ پر باہمی دلچسپی کی چیز دیکھ کر مطمئن ہوتے ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

طالبان سے براہ راست بات چیت انسانی المیے سے بچنے کا واحد راستہ ہے: فواد چوہدری

اطلاعات ونشریات کے وزیر چوہدری فواد حسین نے کہا ہے کہ طالبان سے براہ راست …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons