ڈیجیٹل معیشت کی شرح نمو کے لحاظ سے چین دنیا میں سرفہرست ہے

ڈیجیٹل معیشت کی شرح نمو کے لحاظ سے چین دنیا میں سرفہرست ہے

دو روزہ گلوبل ڈیجیٹل اکنامک کانفرنس 2021، دو اگست کو بیجنگ میں شروع ہوئی۔

کانفرنس کا موضوع ہے “تخلیق سے ڈیجیٹل معیشت کو فروغ دینا”۔  کانفرنس میں جاری کردہ عالمی ڈیجیٹل معیشت کے وائٹ پیپر کے مطابق ،ڈیجیٹل ترقی نئے صنعتی انقلاب کی اہم سمت و خصوصیت بن چکی ہے اور عالمی  ڈیجیٹلائزیشن کا عمل تیزی سے جاری ہے۔ چائنا اکیڈمی آف  انفارمیشن اینڈ کمیونکیشنز ٹیکنالوجی کے سربراہ یو شیاؤ حوئی نے نشاندہی کی کہ ڈیجیٹل معیشت سے مختلف ممالک کی ترقی کو قوت محرکہ ملی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل معیشت کے حجم کے لحاظ سے امریکہ پہلے، جب کہ چین دوسرے نمبر پر ہے لیکن شرح نمو کے لحاظ سے دیکھا جائے تو چین کی ڈیجیٹل معیشت کی شرح نمو تقریباً نو اعشاریہ چھ فیصد رہی جو کہ دنیا میں سب سے زیادہ ہے۔ یہ چین کی اقتصادی ترقی میں ڈیجیٹل ٹیکنالوجی کے اہم کردار کی عکاس ہے۔

چھنگ حوا یونیورسٹی کے اسکول آف پبلک پالیسی اینڈ مینیجمنٹ کی سربراہ جیانگ شیاؤ جوان کے خیال میں چودہویں پانچ سالہ منصوبہ بندی پر عمل کے دوران ڈیجیٹل معیشت کی ترقی مزید وسیع ہو گی۔ 

یہ خبر پڑھیئے

اصلاحات، کھلے پن اور اقتصادی تعمیر میں بڑی پیش رفت

چین کے صدر مملکت شی جن پھنگ نے پچیس اکتوبر کو اقوام متحدہ میں عوامی جمہوریہ چین کی …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons