سندھ حکومت آج 14 کھرب روپے کا بجٹ پیش کرے گی

سندھ حکومت آج مالی سال 2021-22 کیلئے 14 کھرب روپے کا بجٹ پیش کرے گی۔

وزیراعلیٰ مراد علی شاہ بجٹ پیش کریں گے۔ ذرائع کے مطابق بجٹ میں نئے ٹیکس لگائے جانے کا امکان ہے۔ سندھ کے صوبائی ترقیاتی بجٹ کیلئے 222 ارب اور کراچی کے منصوبوں کے لئے 22 ارب روپے رکھے جانے کا امکان ہے۔

اسکول ایجوکیشن کیلئے 215ارب اور کالج ایجوکیشن کے لئے 25 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے۔ صحت کا بجٹ 172ارب روپے کا ہوسکتا ہے۔ پولیس اور امن و امان کے لئے 105 ارب روپے مختص کئے جائیں گے۔ محکمہ بلدیات کے لئےایک کھرب 19 ارب سےزائد رکھنے کی تجویز ہے۔

محکمہ آبپاشی سندھ کا مجموعی بجٹ 53ارب اور ٹرانسپورٹ کے لئے14ارب روپے مختص کرنے کی تجویز ہے۔ تنخواہوں اور پنشن میں 20 سے 25 فیصد اضافے اور مزدور کی کم ازکم اجرت 25 ہزار روپے کرنے کا اعلان بھی متوقع ہے۔

ذرائع کے مطابق صوبائی ٹیکس وصولیوں کا ہدف 120 ارب روپے جبکہ سندھ ریونیو بورڈ کے تحت ٹیکس وصولی کا ہدف 155 ارب روپے مقرر کیا گیا ہے۔ سندھ کے بجٹ میں مجموعی آمدن کا 60 فیصد تخمینہ وفاق سے ملنے والے مالیاتی شیئر پر ہوگا۔

وفاق کے تعاون سے چلنے والے منصوبوں کے لیے 5 اعشاریہ 37 ارب روپے مختص کیے جائیں گے۔ سندھ کے ترقیاتی بجٹ میں 1612 جاری اور 1671 نئی اسکیمز شامل ہیں۔

یہ خبر پڑھیئے

چین پاکستان دوستی مزید مضبوط سے مضبوط تر ہو رہی ہے۔ چینی سفیر نونگ رونگ

چین پاکستان دوستی مزید مضبوط سے مضبوط تر ہو رہی ہے۔ چینی سفیر نونگ رونگ

پاکستان میں تعینات چینی سفیر نونگ رونگ نے کہا ہے کہ میڈیا ریاست کا چوتھا ستون  …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons