سوکی کناری میں دریا کے آگے بند باندھنے کا دوسرا مرحلہ مکمل

سوکی کناری میں دریا کے آگے بند باندھنے کا دوسرا مرحلہ مکمل

صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع مانسہرہ میں سی پیک کے تحت دریائے کنہار کے پانی سے بجلی پیدا کرنے کے  منصوبے سو کی کناری میں دریا کے آگے بند باندھنے کے دوسرے مرحلے کی تکمیل 30 اپریل کو ہوگئی ہے.

اس مرحلے کی تکمیل کے بعد یہ منصوبہ ڈیم کی تعمیر کے نئے حصے میں داخل ہو چکا ہے ۔  دریائے کنہار کی مرکزی آبی گزر گاہ کی کامیاب کٹائی کے ذریعے پانی کا بہاؤ اسپل وے کی طرف موڑ دیا گیا ہے. جس کا مقصد سی پیک کے تحت بجلی گھر کے ڈیم کی تعمیر کے لئے  مجوزہ جگہ کو پانی سے آزاد کرنا ہے ۔

‘منصوبے پر کام  کرنیوالی چینی کمپنی چائنا گہ چو با گروپ اوورسیز انویسٹ منٹ کمپنی لیمڈیڈ کے جنرل منیجر چیا آن چھنگ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اس بند کو 884 میگا واٹ کے پن بجلی منصوبے سو کی کناری کیلئے ایک اہم سنگ میل قرار دیا ہے۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ کورونا وبا کے باوجود چینی اور پاکستانی تعمیر کنندگان کی مشترکہ اور سخت کوششوں کی بدولت یہ سنگ میل عبور ہوا ہے۔

Jia Ancheng نے اس عزم کا اظہار کیا کہ ان کی کمپنی پاکستان میں سرمایہ کاری کو فروغ دے گی. ان کا کہنا تھا کہ چین اور پاکستان کی مشترکہ ترقی کیلئے مقامی حکومتوں کے ساتھ توانائی، ذرائع نقل و حمل اور ماحولیاتی تحفظ کے حوالے سے بھی تعاون کو فروغ دیا جائے گا.’

‘اس موقع پر ضلع مانسہرہ کے قصبے بالاکوٹ کے اسسٹنٹ کمشنر محمد حامد نے کہا کہ  سوکی کناری منصوبے کے ذریعے مقامی علاقے کےلیے روزگار کے تقریباً پانچ ہزار مواقع فراہم کیے گئے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس منصوبے کی تکمیل سے مزید سیاح علاقے کا دورہ کریں گے جو آمدنی میں اضافے کا باعث بنے گا.’

سوکی کناری پن بجلی منصوبے کی تعمیر تقریبا 1.96 بلین امریکی ڈالرز کی مجموعی سرمایہ کاری کے ساتھ  جنوری 2017 میں شروع ہوئی تھی ، جو متوقع طور پر دسمبر 2022 میں مکمل ہو گی. منصوبے کے ڈائریکٹر برائے معیار،صحت، تحفظ و ماحولیاتی انتظام Huang Senlin, کے مطابق منصوبے کی تکمیل کے بعد سالانہ تقریباً 3.21 بلین کلو واٹ فی گھنٹہ ماحول دوست بجلی حاصل ہوگی.

یہ خبر پڑھیئے

امارات میں PSL ہوگا کہ نہیں، فیصلہ آج ہوگا

پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے بقیہ میچز یو اے ای میں ہونے یا …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons