تازہ ترین
عظیم انقلابی شاعر حبیب جالب کی ستائیسویں برسی آج منائی جا رہی ہے

عظیم انقلابی شاعر حبیب جالب کی ستائیسویں برسی آج منائی جا رہی ہے

عظیم انقلابی شاعر حبیب جالب کی آج ستائیسویں برسی منائی جا رہی ہے۔

حبیب جالب 24 مارچ 1929 کو متحدہ ہندوستان کے ضلع ہوشیار پور کے ایک کسان گھرانے میں پیدا ہوئے۔ تقسیم ہند کے بعد وہ کراچی آ گئے۔ حبیب جالب نے 1956 میں لاہور میں رہائش اختیار کی۔ وہ بنیادی طور پر کمیونزم کے حامی تھے۔ وہ اپنی انقلابی سوچ کے تحت آخر دم تک معاشرے کے محکوم عوام کو اعلی طبقات کے استحصال سے نجات دلانے کا کام کرتے رہے۔ حبیب جالب نے جو دیکھا اور جو محسوس کیا، نتائج کی پرواہ کیے بغیر اس کو من وعن اشعار میں ڈھال دیا۔ ان کی نظموں کے پانچ مجموعے برگ آوارہ، سرمقتل، عہد ستم، ذکر بہتے خون کا اور گوشے میں قفس کے، شائع ہو چکے ہیں۔

حق گو لوگوں کی قسمت میں راحت کہاں، تاریخی روایات کے عین مطابق حبیب جالب درباروں سے صعوبتیں اور کچے گھروں سے چاہتیں سمیٹتا 12 مارچ 1993 کو اس جہان فانی سے رخصت ہو گیا۔ لیکن وقت کے آمروں کو للکارنے والی ان کی توانا آواز اور انقلابی شاعری آج بھی لوگوں کے دلوں میں تازہ ومعطر ہے۔

یہ بھی چیک کریں

چین کے چون ممالک کے ساتھ طبی ساز و سامان کی خریداری کے معاہدوں پر دستخط ، چینی وزارت تجارت

چین کے چون ممالک کے ساتھ طبی ساز و سامان کی خریداری کے معاہدوں پر دستخط ، چینی وزارت تجارت

پانچ اپریل کو چینی ریاستی کونسل کی پریس کانفرنس میں چینی وزارت تجارت کی متعلقہ …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons