تازہ ترین
چین کے ویزہ سے متعلق ہدایات (نئی پالیسی)

چین کے ویزا سے متعلق ہدایات (نئی پالیسی)

چین کے ویزا سے متعلق ہدایات
Instructions on Chinese Visa
2019/01/28
Instructions on Chinese Visa

Guide to apply for Chinese Government Scholarship

سفارتی پاسپورٹ کے حامل پاکستانیوں کو ویزہ سے استثنٰی حاصل ہے اور ایسے افراد مرکزی چین میں 30 روز تک، جبکہ چین کے ہانگ کانگ اور مکاؤ خصوصی انتظامی علاقے میں 14 روز تک قیام کرسکتے ہیں۔ سرکاری پاسپورٹ کے حامل پاکستانیوں کو بھی ویزہ سے استثنٰی حاصل ہے اور ایسے افراد مرکزی چین میں 30 روز اور چین کے ہانگ کانگ خصوصی انتظامی علاقے میں 14 روز تک قیام کر سکتے ہیں۔
آپ چین کا سفر کیوں کرنا چاہتے ہیں اور آپ کی درخواست کیلئے موزوں ترین ویزہ کون سا ہے؟

Diplomatic passport holders of Pakistan are exempted from visa and may stay up to 30 days in the mainland of China, up to 14 days in Hong Kong SAR and Macao SAR respectively. Official passport holders of Pakistan are exempted from visa and may stay up to 30 days in the mainland of China and up to 14 days in Hong Kong SAR.
What is the main purpose of your visit to China and which is the most appropriate visa category for your application?

ویزہ کی اقسام
Visa Categories ویزہ کی تفصیلات
Description of Visa
سی ویزہ
C

یہ ویزہ بین الاقوامی سفر پر جانیوالے غیرملکی عملے کیلئے جاری کیا جاتا ہے، جن میں ہوائی جہاز، ریل گاڑی اور بحری جہاز یا سرحد پار جانے کیلئے ذرائع آمد و رفت، یا مذکورہ بالا غیر ملکی بحری جہاز عملے کے ساتھ اہلِ خانہ کی حیثیت سے چین جانا چاہتے ہیں۔

Issued to foreign crew members of means of international transportation, including aircraft, trains and ships, or motor vehicle drivers engaged in cross-border transport activities, or to the accompanying family members of the crew members of the above-mentioned ships.

ڈی ویزہ
D
یہ ویزہ چین میں مستقل رہائش اختیار کرنے کے خواہشمند افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے۔

Issued to those who intend to reside in China permanently

ایف ویزہ
F
یہ ویزہ ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو تبادلوں، سیّاحت، تعلیمی دورے یا دیگر سرگرمیوں کیلئے چین جانے کے خواہشمند ہیں۔

Issued to those who intend to go to China for exchanges, visits, study tours and other activities.

جی ویزہ
G
اس نوعیت کا ویزہ چین میں مختصر قیام کے خواہشمند ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو کسی دوسرے ملک کے سفر پر ہوں۔

.Issued to those who intend to transit through China

جے ون ویزہ
J1
یہ ویزہ چین میں رہائش پزیر غیر ملکی خبر رساں اداروں کے غیر ملکی صحافیوں کیلئے جاری کیا جاتا ہے۔ ایسے افراد کی رہائش کا دورانیہ 180 دن سے زائد ہو سکتا ہے۔

Issued to resident foreign journalists of foreign news organizations stationed in China. The intended duration of stay in China exceeds 180 days

جے ٹو ویزہ
J2

یہ ویزہ چین کے دورے پر جانیوالے ایسے صحافیوں کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو مختصر وقت کیلئے خبریں حاصل کرنے کے خواہشمند ہیں۔ ایسے افراد چین میں 180 دن سے زائد وقت کیلئے قیام نہیں کرسکتے۔

Issued to foreign journalists who intend to go to China for short-term news coverage. The intended duration of stay in China is no more than 180 days

ایل ویزہ
L
یہ ویزہ سیّاحت کی غرض سے چین جانیوالے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے۔

Issued to those who intend to go to China as a tourist

ایم ویزہ
M
یہ ویزہ کاروباری اور معاشی سرگرمیوں کی غرض سے چین جانیوالے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے۔

Issued to those who intend to go to China for commercial and trade activities

کیو ون ویزہ
Q1

یہ ویزہ ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو چینی شہریوں یا چین کی مستقل شہریت کے حامل غیر ملکیوں کے اہلِ خانہ ہوں اور اپنے اہلِ خانہ سے ملاقات یا دیکھ بھال کی غرض سے چین جانا چاہتے ہیں۔ اس ویزہ کے تحت چین میں 180 روز سے زائد مدت کیلئے قیام کیا جاسکتا ہے۔
یہاں مذکور اہلِ خانہ میں شریک حیات، والدین، بیٹے، بیٹیاں، بیٹے یا بیٹی کے شریک حیات، بھائی، بہن، دادا دادی، نانا نانی، پوتے پوتیاں، نواسے نواسیاں اور شریک حیات کے والدین شامل ہیں۔

Issued to those who are family members of Chinese citizens or of foreigners with Chinese permanent residence and intend to go to China for family reunion, or to those who intend to go to China for the purpose of foster care. The intended duration of stay in China exceeds 180 days.
“Family members” refers to spouses, parents, sons, daughters, spouses of sons or daughters, brothers, sisters, grandparents, grandsons, granddaughters and parents-in-law

کیو ٹو ویزہ
Q2

یہ ویزہ ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو ان رشتہ داروں سے ملاقات کی غرض سے چین جانا چاہتے ہیں جو چینی شہری ہیں یا چین کی مستقل شہریت کے حامل غیر ملکی ہیں۔ اس ویزہ کے تحت چین میں 180 روز سے زائد قیام نہیں کیا جاسکتا۔

Issued to those who intend to visit their relatives who are Chinese citizens residing in China or foreigners with permanent residence in China. The intended duration of stay in China is no more than 180 days.

آر ویزہ
R
یہ ویزہ ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو اعلیٰ ذہنی صلاحیتوں کے حامل ہیں یا جن کے ہنر کی چین میں فوری ضرورت ہے۔

Issued to those who are high-level talents or whose skills are urgently needed in China

ایس ون ویزہ
S1

یہ ویزہ ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو چین میں ملازمت یا تعلیم کی غرض سے رہائش پذیر افراد کے شریک حیات، والدین، 18 سال سے کم عمر بیٹے یا بیٹیاں، یا شریک حیات کے والدین ہیں، یا دیگر نجی معاملات کی غرض سے چین جانا چاہتے ہیں۔ اس ویزہ کے حامل افراد چین میں 180 روز سے زائد مدت کیلئے قیام کرسکتے ہیں۔

Issued to those who intend to go to China to visit the foreigners working or studying in China to whom they are spouses, parents, sons or daughters under the age of 18 or parents-in-law, or to those who intend to go to China for other private affairs. The intended duration of stay in China exceeds 180 days

ایس ٹو ویزہ
S2

یہ ویزہ چین میں ملازمت یا تعلیم کی غرض سے مقیم غیرملکی اہل خانہ سے ملاقات کے خواہشمند، یا ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جو نجی معاملات کی غرض سے چین جانا چاہتے ہیں۔ اس ویزہ کے تحت چین میں 180 روز سے زائد مدت کیلئے قیام نہیں کیا جاسکتا۔
یہاں مذکور اہلِ خانہ میں شریک حیات، والدین، بیٹے، بیٹیاں، بیٹے یا بیٹی کے شریک حیات، بھائی، بہن، دادا دادی، نانا نانی، پوتے پوتیاں، نواسے نواسیاں اور شریک حیات کے والدین شامل ہیں۔

Issued to those who intend to visit their family members who are foreigners working or studying in China, or to those who intend to go to China for other private matters. The intended duration of stay in China is no more than 180 days
“Family members” refers to spouses, parents, sons, daughters, spouses of sons or daughters, brothers, sisters, grandparents, grandsons, granddaughters and parents-in-law

Issued to those who intend to visit their family members who are foreigners working or studying in China, or to those who intend to go to China for other private matters. The intended duration of stay in China is no more than 180 days

ایکس ون ویزہ
X1
یہ ویزہ حصول تعلیم کی غرض سے چین جانیوالے ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جن کے قیام کی مدت 180 روز سے زائد ہو۔

Issued to those who intend to study in China for a period of more than 180 days

ایکس ٹو ویزہ
X2
یہ ویزہ حصول تعلیم کی غرض سے چین جانیوالے ایسے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے جن کے قیام کی مدت 180 روز سے زائد نہ ہو۔

Issued to those who intend to study in China for a period of no more than 180 days

زی ویزہ
Z
یہ ویزہ ملازمت کی غرض سے چین جانے والے افراد کیلئے جاری کیا جاتا ہے۔

Issued to those who intend to work in China

ویزہ کی درخواست کیلئے مندرجہ ذیل دستاویزات فراہم کرنا ضروری ہے۔

Here are the documents you shall prepare before submission of visa application

I۔ بنیادی دستاویزات
I. Basic Documents
(1) پاسپورٹ
(1) Passport

اصل پاسپورٹ جو کم سے کم آئندہ 6 ماہ کیلئے کارآمد ہو اور ویزہ کیلئے مخصوص خالی صفحات کا حامل ہو، بمعہ پاسپورٹ کے حامل فرد کی تفصیلات والا صفحہ الگ ہونے کی صورت میں مذکورہ صفحہ کی نقل کے۔

Original passport with at least six months of remaining validity and blank visa pages, and a photocopy of the passport’s data page and the photo page if it is separate

(2) ویزہ درخواست فارم اور تصویر
(2) Visa Application Form and Photo
ایک ویزا درخواست فارم آن لائن پُر شدہ اور پرنٹ شدہ، آن لائن ویزا درخواست کی تصدیق شدہ ایک کاپی، اے وی اے ایس(AVAS) سے تصدیق کی ایک کاپی، سفید پس منظر کے ساتھ لی گئی ایک تازہ ترین رنگین پاسپورٹ تصویر(مکمل چہرہ، سر ڈھانپے بغیر)

One Visa Application Form filled on-line and printed, one copy of Confirmation of Online Visa Application, on copy of AVAS Confirmation, 1 recently-taken color passport photos (bare-head, full face) against a white background

(3) قانونی رہائش یا شہریت کا ثبوت (ایسے افراد کیلئے جن کے پاس کسی دوسرے ملک کی شہریت ہے)۔

(3) Proof of legal stay or residence status (applicable to those not applying for the visa in their country of citizenship)

اگر آپ ویزہ کی درخواست ایسے ملک سے جمع نہیں کروا رہے جو آپ کا آبائی وطن ہے، تو ویزہ کی درخواست کے ہمراہ پاکستان کے ویزہ، رہائشی اجازت نامہ اور ملازمت یا تعلیمی اجازت نامہ کی نقل منسلک کرنا ضروری ہے۔

If you are not applying for the visa in the country of your citizenship, you must provide the original and photocopy of your valid visa of stay, residence, and employment or student status of the country where you are currently staying

(4) گزشتہ چینی پاسپورٹس یا چین کے ویزہ کی نقول (ایسے افراد کیلئے جو چینی شہریت کے حامل تھے اور اب غیر ملکی شہریت حاصل کرچکے ہیں)۔

(4) Photocopy of previous Chinese passports or previous Chinese visas (applicable to those who were Chinese citizens and have obtained foreign citizenship)

اگر آپ چینی ویزہ کیلئے درخواست پہلی مرتبہ جمع کروا رہے ہیں، تو آپ کیلئے گزشتہ پاسپورٹ اور اسکی تفصیلات کے حامل صفحہ کی نقل فراہم کرنا ضروری ہے۔

اگر آپ اس سے قبل چینی ویزے حاصل کر چکے ہیں اور ایسے تجدید شدہ پاسپورٹ کے تحت ویزہ حاصل کرنا چاہتے ہیں جس پر چین کا کوئی ویزہ موجود نہیں، تو آپ کیلئے گزشتہ پاسپورٹ کے تفصیلات کے حامل صفحہ اور چین کے ویزہ کی نقل اور الگ صفحہ ہونے کی صورت میں تصویر والے صفحہ کی نقل فراہم کرنا بھی ضروری ہے۔ (حالیہ پاسپورٹ پر موجود نام گزشتہ پاسپورٹ پر درج نام سے مختلف ہونے کی صورت میں نام کی تبدیلی سے متعلق قانونی دستاویز کی فراہمی ضروری ہے)۔

If you are applying for a Chinese visa for the first time, you should provide your previous Chinese passport and a photocopy of its data page

If you have obtained Chinese visas before and want to apply for a Chinese visa with a renewed foreign passport that does not contain any Chinese visa, you should present the photocopy of the previous passport’s data page and the photo page if it is separate, as well as the previous Chinese visa page (If your name on the current passport differs from that on the previous one, you must provide an official document of name change)

II۔ دیگر اہم دستاویزات
II. Supporting Documents

سی ویزہ
C Visa

غیر ملکی ٹرانسپورٹ کمپنی کی طرف سے جاری کردہ ضمانتی خط یا چین میں اسی نوعیت کے ادارے سے جاری کیا گیا دعوت نامہ۔

A letter of guarantee issued by a foreign transport company or an invitation letter issued by a relevant entity in China

ڈی ویزہ
D Visa

چین کی وزارت برائے پبلک سیکیورٹی کی طرف سے جاری کردہ فارنرز پرماننٹ ریزڈنس سٹیٹس کا مصدقہ فارم بمعہ ایک عدد نقل۔

The original and photocopy of the Confirmation Form for Foreigners Permanent Residence Status issued by the Ministry of Public Security of China

برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:

We kindly remind you that

ڈی ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

Holders of D Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits

ایف ویزہ (جدید)
F Visa(New)

(1)عام طور پر، دعوت نامے کا توثیقی خط یا دعوت نامہ (ٹی ای) مہیا کیا جائے گا (پرنٹ یا فوٹو کاپی)، لیکن دونوں خطوط چینی دعوت دینے والے کی جانب سے مہیا کئے گئے ہوں۔ کسی فرد کو مندرجہ ذیل صورتحال میں دعوت نامے کے توثیقی خط یا دعوت نامہ (ٹی ای) سے مستثنیٰ قرار دیا جاسکتا ہے (تاہم، چین میں کسی متعلقہ ادارے یا فرد کی طرف سے جاری کردہ دعوت نامہ بھی بھی درکار ہے۔ برائے مہربانی دیکھیئے حصہ (2):

(1) Generally speaking, a Verification Letter of Invitation or an Invitation Letter (TE) shall be provided (printout or photocopy), both of the letters must be extended by a Chinese inviter. One might be exempted from an Verification Letter of Invitation or an Invitation Letter (TE) in the following situation (However, an invitation letter issued by a relevant entity or individual in China is still needed). See part (2)

–اگر کوئی پاکستانی وفاقی یا مقامی حکومتوں یا دیگر سرکاری اداروں میں ملازمت کرتا یا کرتی ہے اور سرکاری افسر یا سرکاری ملازم کی علامت والے نجی پاسپورٹ کا یا کی حامل ہے تو اس(مرد یا خاتون) کو بیرونِ ملک سفر کے لئے اپنے ادارے کی جانب سے این او سی مہیا کرنا ہوگا جوکہ پاکستان کی وزارت امورِ خارجہ سے تصدیق شدہ ہو.

–If one works for Pakistani federal or local governments or other official institutions and holds a private passport with a mark of Government Officer or Government Employee, he or she should provide an NOC to Travel Abroad issued by his or her employer and attested by the Ministry of Foreign Affairs of Pakistan.

–کوئی درخواست دہندہ جو 1 جنوری 2016 سے اب تک تین بار یا اس سے زائد بار چین کا دورہ کرچکے ہوں۔ اُن کو چاہیئے کہ وہ اپنے پاسپورٹ کے اُن صفحات کی فوٹو کاپیاں مہیا کریں جن پر محکمہِ چینی امیگریشن معائنہ کے اندراج / اخراج کی مہریں لگی ہوں.

–Any applicant who has visited China for more than three times since 1 January 2016. One should provide photocopies of passport pages with entry/exit stamps of China Immigration Inspection.

(2) چین کے متعلقہ ادارے یا فرد کی جانب سے جاری کردہ دعوت نامہ، جس کے مندرجات میں ان تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:

(2) An invitation letter issued by a relevant entity or individual in China, should contain:


(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)

(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)

(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے ادارے یا فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دفتری مہر، مجاز نمائندے یا فرد کے دستخط)


–Information about the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)

–Information about the planned visit (purpose of visit, arrival and departure dates, place(s) to be visited, relations between the applicant and the inviting entity or individual, financial source)

–Information on the inviting entity or individual (name, telephone number, address, official stamp, signature of the legal representative or the inviting individual)

(3) درخواست گزار کے ملازمتی ادارے کی جانب سے تصدیقی خط ۔

(3)A supporting letter from the organization which the applicant serves in


(4) درخواست گزار کی بینک اسٹیٹمنٹ معلومات (ذاتی یا ادارے کی، گزشتہ 6 ماہ کیلئے(

(4) Bank statement (personal or company, the last six months)

(5)آخری پانچ سال کے دوران پہلی مرتبہ چین جانیوالے درخواست گزاروں کیلئے پولیس کیریکٹر/ کلیئرنس سرٹفیکیٹ جو کہ وزارتِ امورِ خارجہ سے تصدیق شدہ ہو ہمراہ دوطرفہ(آنے جانے کا) ہوائی ٹکٹ اور ہوٹل بکنگ(پہلی بار چین جانے کے لئے)

(5) A local police character/clearance certificate attested by the Ministry of Foreign Affairs of Pakistan for first time visit to China within the last five years, Round-trip air tickets and hotel booking (first time visit to China)

جی ویزہ
G Visa

بحری جہاز کی حامل کمپنی کا ایک خط جو درخواست دہندہ کو چین میں جہاز پر سوار ہونے سے متعلق آگاہ کرے، تصدیق کے لئے پاکستانی سمندری حکام کی جانب سے ایک خط اور سی-مین کی اصل سروس بُک اور اُس کی فوٹو کاپی.

A letter of the ship-owning company that informs the applicant to get aboard the ship in China, a letter of the Pakistani maritime authority to confirm the issue, original seaman book and its photocopy.

جے ون ویزہ
J1 Visa

چین کی وزارت برائے امور خارجہ کے محکمہ معلومات کی طرف سے جاری کردہ ویزہ نوٹیفکیشن کا خط اور صحافی کے ملازمتی ادارے کی جانب سے فراہم کیا گیا دفتری خط ۔
درخواست گزار کیلئے متعلقہ لوازمات کی تفصیل حاصل کرنے کی غرض سے چینی سفارتخانہ/ کونسلیٹ جنرل کے پریس سیکشن سے پیشگی رابطہ ضروری ہے۔
برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:
جے ون ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

Visa Notification Letter issued by the Information Department of the Ministry of Foreign Affairs of China and an official letter issued by the media organization for which the journalist works.
Applicants should contact the press section of the Chinese Embassy/Consulate General in advance and complete relevant formalities.
We kindly remind you that:
Holders of J1 Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits.

جے ٹو ویزہ
J2 Visa

چین کی وزارت برائے امور خارجہ کے محکمہ  معلومات یا چینی حکومت کے زیر سرپرستی دیگر اداروں کی طرف سے جاری کردہ ویزہ نوٹیفکیشن کا خط اور صحافی کے ملازمتی ادارے کی جانب سے فراہم کیا گیا دفتری خط ۔
درخواست گزار کیلئے متعلقہ لوازمات کی تفصیل حاصل کرنے کی غرض سے چینی سفارتخانہ/ کونسلیٹ جنرل کے پریس سیکشن سے پیشگی رابطہ ضروری ہے۔

Visa Notification Letter issued by the Information Department of the Ministry of Foreign Affairs of China or other authorized units in China and an official letter issued by the media organization for which the journalist works.
Applicants should contact the press section of the Chinese Embassy/Consulate General in advance and complete the required formalities.

ایل ویزہ
L Visa

سیّاحت کی غرض سے چین جانیوالے پاکستانیوں سے گزارش ہے کہ (5 سے زائد افراد پر مشتمل) گروپ کے ہمراہ چین کا دورہ کریں، جو کہ  ہل اور مستند مقامی ٹریول ایجنسی کی جانب سے تشکیل دیا گیا ہو۔

For tourism in China, Pakistani nationals are requested to join a tourist group (more than 5 people), which should be arranged through a qualified local travel agency.

ایم ویزہ (جدید)
M Visa(New)

(1)عام طور پر، دعوت نامے کا توثیقی خط یا دعوت نامہ (ٹی ای) مہیا کیا جائے گا (پرنٹ یا فوٹو کاپی)، لیکن دونوں خطوط چینی دعوت دینے والے کی جانب سے مہیا کئے گئے ہوں۔ کسی فرد کو مندرجہ ذیل صورتحال میں دعوت نامے کے توثیقی خط یا دعوت نامہ (ٹی ای) سے مستثنیٰ قرار دیا جاسکتا ہے (تاہم، چین میں کسی متعلقہ ادارے یا فرد کی طرف سے جاری کردہ دعوت نامہ بھی بھی درکار ہے۔ برائے مہربانی دیکھیئے حصہ (2):

(1) Generally speaking, a Verification Letter of Invitation or an Invitation Letter (TE) shall be provided (printout or photocopy), both of the letters must be extended by a Chinese inviter. One might be exempted from an Verification Letter of Invitation or an Invitation Letter (TE) in the following situation (However, an invitation letter issued by a relevant entity or individual in China is still needed. See part (2)):

–اگر کوئی پاکستانی وفاقی یا مقامی حکومتوں یا دیگر سرکاری اداروں میں ملازمت کرتا یا کرتی ہے اور سرکاری افسر یا سرکاری ملازم کی علامت والے نجی پاسپورٹ کا یا کی حامل ہے تو اس(مرد یا خاتون) کو بیرونِ ملک سفر کے لئے اپنے ادارے کی جانب سے این او سی مہیا کرنا ہوگا جوکہ پاکستان کی وزارت امورِ خارجہ سے تصدیق شدہ ہو.

–If one works for Pakistani federal or local governments or other official institutions and holds a private passport with a mark of Government Officer or Government Employee, he or she should provide an NOC to Travel Abroad issued by his or her employer and attested by the Ministry of Foreign Affairs of Pakistan.

–کوئی درخواست دہندہ جو 1 جنوری 2016 سے اب تک تین بار یا اس سے زائد بار چین کا دورہ کرچکے ہوں۔ اُن کو چاہیئے کہ وہ اپنے پاسپورٹ کے اُن صفحات کی فوٹو کاپیاں مہیا کریں جن پر محکمہِ چینی امیگریشن معائنہ کے اندراج / اخراج کی مہریں لگی ہوں.

–Any applicant who has visited China for more than three times since 1 January 2016. One should provide photocopies of passport pages with entry/exit stamps of China Immigration Inspection.

(2) چین کے متعلقہ ادارے یا فرد کی جانب سے جاری کردہ دعوت نامہ، جس کے مندرجات میں ان تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:

(2) An invitation letter issued by a relevant entity or individual in China, should contain:


(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)

(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)

(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے ادارے یا فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دفتری مہر، مجاز نمائندے یا فرد کے دستخط)


–Information about the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)

–Information about the planned visit (purpose of visit, arrival and departure dates, place(s) to be visited, relations between the applicant and the inviting entity or individual, financial source)

–Information on the inviting entity or individual (name, telephone number, address, official stamp, signature of the legal representative or the inviting individual)

(3) درخواست گزار کے ملازمتی ادارے کی جانب سے تصدیقی خط ۔

(3)A supporting letter from the organization which the applicant serves in

(4) درخواست دہندہ کا ٹیکس ادائیگی کا سرٹیفکیٹ (گزشتہ تین سال کا، فوٹو کاپی) اور اس ادارے کی رجسٹریشن جہاں درخواست دہندہ کام کرتا یا کرتی ہے (فوٹو کاپی)

(4) The applicant’s tax payment certificate (photocopy, the last three years) and registration of the organization which the applicant serves in (photocopy)


(5) درخواست گزار کی بینک اسٹیٹمنٹ معلومات (ذاتی یا ادارے کی، گزشتہ 6 ماہ کیلئے(

(5) Bank statement (personal or company, the last six months)

(6)آخری پانچ سال کے دوران پہلی مرتبہ چین جانیوالے درخواست گزاروں کیلئے پولیس کیریکٹر/ کلیئرنس سرٹفیکیٹ جو کہ وزارتِ امورِ خارجہ سے تصدیق شدہ ہو ہمراہ دوطرفہ(آنے جانے کا) ہوائی ٹکٹ اور ہوٹل بکنگ(پہلی بار چین جانے کے لئے)

(6) A local police character/clearance certificate attested by the Ministry of Foreign Affairs of Pakistan for first time visit to China within the last five years, Round-trip air tickets and hotel booking (first time visit to China)

کیو ون ویزہ
Q1 Visa

اہلِ خانہ سے ملاقات کیلئے مندرجہ ذیل دستاویزات منسلک کرنا ضروری ہے:
(1) چینی شہری یا چین میں مستقل شہریت کے حامل غیر ملکی کی جانب سے دعوت نامہ، جس میں مندرجہ ذیل تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:
(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)
(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)
(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے ادارے یا فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دفتری مہر، مجاز نمائندے یا فرد کے دستخط)
(2) دعوت نامہ فراہم کرنیوالے فرد کے چینی شناختی کارڈ یا غیر ملکی پاسپورٹ اور مستقل رہائشی اجازہ نامہ کی نقل۔
(3) اصل سرٹیفکیٹ بمعہ نقل (شادی کا سرٹیفکیٹ، پیدائشی سرٹیفکیٹ، پبلک سیکورٹی بیورو کی طرف سے جاری کردہ یا تصدیق شدہ رشتہ داری کا سرٹیفیکیٹ) جن سے درخواست گزار اور دعوت نامہ فراہم کرنیوالے فرد کے مابین تعلق واضع ہو سکے (نقل کا پاکستان کی وزارت برائے امور خارجہ سے تصدیق شدہ ہونا ضروری ہے)۔
یہاں مذکور اہلِ خانہ میں شریک حیات، والدین، بیٹے، بیٹیاں، بیٹے یا بیٹی کے شریک حیات، بھائی، بہن، دادا دادی، نانا نانی، پوتے پوتیاں، نواسے نواسیاں اور شریک حیات کے والدین شامل ہیں۔

For family reunion, the following documents are required:
(1) An invitation letter issued by a Chinese citizen or a foreign with a Chinese permanent residence permit who lives in China. The invitation letter should contain:
a) Information on the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)
b) Information on the visit ( purpose of visit, intended arrival date, place(s) of intended residence, intended duration of residence, relations between the applicant and the inviting individual, financial source for expenditures)
c) Information on the inviting individual (name, contact telephone number, address, official stamp, signature of legal representative or the inviting individual, etc.)
(2) Photocopy of Chinese ID of the inviting individual or foreign passport and permanent residence permit.
(3) Original and photocopy of certification (marriage certificate, birth certificate, certification of kinship issued by Public Security Bureau or notarized certification of kinship) showing the relationship of family members between applicant and inviting individual(photocopy should be attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).
“Family members” refers to spouses, parents, sons, daughters, spouses of sons or daughters, brothers, sisters, grandparents, grandsons, granddaughters and parents-in-law.

دیکھ بھال کیلئے مندرجہ ذیل دستاویزات کی فراہمی ضروری ہے:

For foster care, the following documents are required:

(1) دیکھ بھال کیلئے بیرون ملک موجود چینی سفارت خانہ/ کونسلیٹ جنرل کی طرف سے تصدیق شدہ دیکھ بھال کا اجازت نامہ، یا چین میں یا پاکستان میں کارآمد دیکھ بھال کا مختار نامہ۔
(2) دیکھ بھال کیلئے جانیوالے فرد/ افراد کے اصل پاسپورٹ بمعہ نقل کے علاوہ سرٹیفکیٹس کی نقول (شادی کا سرٹیفکیٹ، پیدائشی سرٹیفکیٹ، پبلک سیکیورٹی بیورو کی طرف سے جاری کردہ دیکھ بھال کا سرٹیفکیٹ)، جن میں والدین اور بچوں کا باہمی رشتہ ظاہر کیا گیا ہو۔
(3) چین میں رہائش پذیر قانونی امین کی طرف سے دیکھ بھال کیلئے فراہم کیا گیا اجازت نامہ، جس میں دیکھ بھال کی اجازت دی گئی ہو، بمعہ قانونی امین کے شناختی کارڈ کی نقل کے۔
(4) سرٹیفکیٹ کی نقل جس میں بچے کی پیدائش کے وقت والدین کی بیرون ملک مستقل رہائش اور اس امر کا ثبوت فراہم کیا گیا ہو کہ بچے کے والدین میں سے ایک یا دونوں چین کے شہری ہیں۔
برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:
کیو ون ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

(1)Foster entrustment notarization issued by Chinese Embassies/Consulates General in foreign countries or Foster Care Power of Attorney notarized and authenticated in the country of residence or in China
(2)Original and photocopy of the consignor’s passport(s), as well as the original and photocopy of certification (marriage certificate, birth certificate, certification of kinship issued by Public Security Bureau or notarized certification of kinship) showing the relationship between parents and children.
(3) A letter of consent on foster care issued by the trustee living in China who has agreed to provide foster care services and a photocopy of the ID of the trustee.
(4) A photocopy of the certificate indicating the permanent residence status abroad of the parent(s) when the child was born provided that either or both parents of the child are Chinese citizens.
We kindly remind you that:
Holders of Q1 Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits.

کیو ٹو ویزہ
Q2 Visa

(1) چینی شہری یا چین میں قانونی حیثیت سے مستقل طور پر رہائش پذیر غیر ملکی کی جانب سے دعوت نامہ، جس کے مندرجات میں ان تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:
(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)
(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)
(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے ادارے یا فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دفتری مہر، مجاز نمائندے یا فرد کے دستخط)
(2) دعوت نامہ فراہم کرنے والے فرد کے چینی شناختی کارڈ یا غیر ملکی پاسپورٹ اور مستقل رہائش کے اجازت نامہ کی نقل۔
(3) دیکھ بھال کیلئے جانیوالے فرد/ افراد کے اصل پاسپورٹ بمعہ نقل کے علاوہ سرٹیفکیٹس کی نقول (شادی کا سرٹیفکیٹ، پیدائشی سرٹیفکیٹ، پبلک سیکیورٹی بیورو کی طرف سے جاری کردہ دیکھ بھال کا سرٹیفکیٹ)، جن میں والدین اور بچوں کا باہمی رشتہ ظاہر کیا گیا ہو۔

(1) An invitation letter by a Chinese citizen or a foreign citizen with a Chinese permanent residence permit who lives in China. The invitation letter should contain:
a) Information on the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)
b) Information on the visit (purpose of visit, arrival and departure dates, place(s) to be visited, relations between the applicant and the inviting individual, financial source for expenditures)
c) Information on the inviting individual (name, contact number, address, signature etc.)
(2)Photocopy of Chinese ID or foreign passport and permanent residence permit of the inviting individual
(3) Photocopy of certification (marriage certificate, birth certificate or notarized certification of kinship) showing the relationship of family members between the applicant and the inviting individual(attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).

آر ویزہ
R Visa

درخواست گزار کی جانب سے ایسی تمام اسناد کی فراہمی ضروری ہے جو متعلقہ قواعد سے مطابقت رکھتی ہوں اور چینی حکومت کے اعلیٰ محکموں کو درکار اعلیٰ ذہانت کے معیار کے عین مطابق اور چین کیلئے فوری طور پر درکار افراد کی ضرورت پوری کرنے کیلئے معاون ثابت ہوں۔

The applicant should submit relevant certification in accordance with relevant regulations, and meet the relevant requirements of the competent authorities of the Chinese government on high-level talents and individual with special skills urgently needed by China.

ایس ون ویزہ
S1 Visa

(1) دعوت دینے والے فرد (غیر ملکی شخص جو ملازمت یا تعلیم کی غرض سے چین میں رہائش پذیر ہو) کی طرف سے جاری کردہ دعوت نامہ، جس کے مندرجات میں ان تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:
(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)
(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)
(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دستخط، وغیرہ)
(2) دعوت نامہ بھیجنے والے فرد کے پاسپورٹ اور رہائشی اجازت نامہ کی نقل۔
(3) اصل سرٹیفکیٹ بمعہ نقل (شادی کا سرٹیفکیٹ، پیدائشی سرٹیفکیٹ، پبلک سیکورٹی بیورو کی طرف سے جاری کردہ یا تصدیق شدہ رشتہ داری کا سرٹیفیکیٹ) جن سے درخواست گزار اور دعوت نامہ فراہم کرنیوالے فرد کے مابین تعلق واضع ہو سکے (نقل کا پاکستان کی وزارت برائے امور خارجہ سے تصدیق شدہ ہونا ضروری ہے)۔
یہاں مذکور اہلِ خانہ میں شریک حیات، والدین، 18 سال سے کم عمر بیٹے یا بیٹیاں اور شریک حیات کے والدین شامل ہیں۔
برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:
ایس ون ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

(1) An invitation letter from the inviting individual (a foreigner who stays or resides in China for work or studies) which contains:
a) Information on the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)
b) Information on the visit (purpose of visit, arrival and departure dates, place of intended residence, relations between the applicant and the inviting individual, financial source for expenditures, etc.)
c) Information on the inviting individual (name, contact telephone number, address, signature, etc.)
(2) A photocopy of the inviting individual’s passport and residence permit
(3)Original and photocopy of certification (marriage certificate, birth certificate, certification of kinship issued by Public Security Bureau or notarized certification of kinship) showing the relationship of immediate family members between applicants and inviting individual(photocopy should be attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).
“Immediate family members” refers to spouses, parents, sons or daughters under the age of 18, parents-in-law.
We kindly remind you that:
Holders of S1 Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits.

ایس ٹو ویزہ
S2-Visa

مختصر مدت کیلئے چین جانیوالے اہلِ خانہ مندرجہ ذیل دستاویزات فراہم کرنے کے پابند ہوں گے:

(1) دعوت دینے والے فرد (غیر ملکی شخص جو ملازمت یا تعلیم کی غرض سے چین میں رہائش پذیر ہو) کی طرف سے جاری کردہ دعوت نامہ، جس کے مندرجات میں ان تفصیلات کی موجودگی ضروری ہے:

(الف) درخواست گزار کی تفصیلات (مکمل نام، جنس، تاریخ پیدائش وغیرہ)

(ب) مجوزہ دورے کی تفصیلات (دورے کا مقصد، آمد اور واپسی کی تاریخیں، سفر کے مقامات، درخواست گزار اور دعوت نامہ بھیجنے والے ادارے یا فرد کے مابین تعلق، اخراجات کے ذرائع کی تفصیلات)

(ج) دعوت نامہ ارسال کرنے والے فرد سے متعلق معلومات (مکمل نام، رابطے کیلئے فون نمبر، پتہ، دستخط، وغیرہ)

(2) دعوت نامہ بھیجنے والے فرد (غیر ملکی شخص جو  ملازمت یا تعلیم کی غرض سے چین میں رہائش پذیر ہو) کے پاسپورٹ اور رہائشی اجازت نامہ کی نقل۔

(3) اصل سرٹیفکیٹ بمعہ نقل (شادی کا سرٹیفکیٹ، پیدائشی سرٹیفکیٹ، پبلک سیکورٹی بیورو کی طرف سے جاری کردہ یا تصدیق شدہ رشتہ داری کا سرٹیفیکیٹ) جن سے درخواست گزار اور دعوت نامہ فراہم کرنیوالے فرد کے مابین رشتہ داری واضع ہو سکے (نقل کا پاکستان کی وزارت برائے امور خارجہ سے تصدیق شدہ ہونا ضروری ہے)۔

یہاں مذکور رشتہ داری میں شریک حیات، والدین، بیٹے، بیٹیاں، بیٹے یا بیٹی کے شریک حیات، بھائی، بہن، دادا دادی، نانا نانی، پوتے پوتیاں، نواسے نواسیاں اور شریک حیات کے والدین شامل ہیں۔

نجی معاملات کی صورت میں کونسلر آفس کو درکار نجی معاملے کی نوعیت سے متعلق دستاویز فراہم کرنا ضروری ہے۔

For visiting family members for a short period, the following documents are required:

(1)An invitation letter issued by the inviting individual (a foreigner who stays or resides in China for work or studies) which contains:
a) Information on the applicant (full name, gender, date of birth, etc.)
b) Information on the visit (purpose of visit, arrival and departure dates, place(s) to be visited, relations between the applicant and the inviting individual, financial source for expenditures, etc.)
c) Information on the inviting individual (name, contact telephone number, address, signature, etc.)
(2) A photocopy of the inviting individual’s (a foreigner who stays or lives in China for work or studies) passport and residence permit.
(3) Photocopy of certification (marriage certificate, birth certificate or notarized certification of kinship) showing the relationship of family members between the applicant and the inviting individual (attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).
“Family members” refers to spouses, parents, sons, daughters, spouses of sons or daughters, brothers, sisters, grandparents, grandsons, granddaughters and parents-in-law.
For private affairs, documentation identifying the nature of the private affairs should be provided as required by the consular officer.

ایکس ون ویزہ اور ایکس ٹو ویزہ
X1-Visa and X2-Visa

(1) چین میں موجود تعلیمی یا متعلقہ ادارے کی جانب سے فراہم کردہ داخلے کا خط بمعہ نقل۔

(2) ”چین میں تعلیم کیلئے ویزہ کی درخواست“ اصل بمعہ نقل (فارم JW201 یا فارم JW202)۔

(3) مارک شیٹ/ ڈپلومہ (اصل بمعہ نقل، نقل کی پاکستانی وزارت برائے خارجہ امور سے تصدیق ضروری ہے)۔

برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:

ایکس ون ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

(1) Original and photocopy of the Admission Letter issued by a school or other entities in China.
(2) Original and photocopy of “Visa Application for Study in China” (Form JW201 or Form JW202).
(3)Mark sheet/diploma (original and photocopy, photocopy should be attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).
We kindly remind you that:
Holders of X1 Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits.

زی ویزہ
Z-Visa
مندرجہ ذیل دستاویزات میں سے کسی ایک دستاویز کا فراہم کرنا ضروری ہے:
One of the following documents:

(1) چینی حکومت کے محکمہ برائے افرادی قوت و معاشرتی سلامتی کی طرف سے غیر ملکیوں کیلئے جاری کردہ عوامی جمہوریہ چین کا اجازت نامہ برائے ملازمت، اگر آپ کے مطلوبہ کام کی مدت 90 دن یا اس سے کم ہے تو آپ کو قلیل مدتی روزگار کا اجازت نامہ فراہم کرنا ہوگا جو کہ چین میں غیر ملکی کام کرنے والوں کو مہیا کیا جاتا ہے۔ آپ کو اجازت نامے میں دی گئی آغازِملازمت کی تاریخ سے پہلے ویزا حصول کے لئے درخواست دینا ہوگی اور آپ کو صرف اجازت نامے میں دی گئی تاریخوں کے مطابق ہی کام کرنے کی اجازت ہوگی۔

(2) چین میں کام کرنے والے غیر ملکی ماہرین کے لئے اجازت نامہ یا ریاستی بیورو برائے غیر ملکی ماہرین کی طرف سے جاری کردہ ورک پرمٹ کا نوٹیفیکیشن، جو کہ چین میں غیر ملکیوں کے لئے جاری کیا جاتا ہے۔

(3) چین کی صنعتی و تجارتی انتظامیہ کی طرف سے غیر ممالک (خطّوں) کے کاروباری اداروں کے نمائندہ دفاتر کیلئے جاری کردہ رجسٹریشن سرٹیفکیٹ۔

(4) چینی حکومت کے ثقافتی سرگرمیوں سے متعلق اداروں کی طرف سے معاشی سرگرمیوں کیلئے جاری کردہ اجازت نامہ کی دستاویز اگر آپ کی مطلوبہ سرگرمی کا دورانیہ 90 دن یا اس سے کم ہے تو آپ کو قلیل مدتی روزگار کا اجازت نامہ فراہم کرنا ہوگا جو کہ چین میں غیر ملکی کام کرنے والوں کو مہیا کیا جاتا ہے۔ آپ کو اجازت نامے میں دی گئی آغازِ سرگرمی کی تاریخ سے پہلے ویزا حصول کے لئے درخواست دینا ہوگی اور آپ کو صرف اجازت نامے میں دی گئی تاریخوں کے مطابق ہی کام کرنے کی اجازت ہوگی۔

(5) چین میں آف شور پیٹرولیم کی سرگرمیوں میں حصہ لینے والے غیر ملکیوں کیلئے چائنہ آف شور آئل کارپوریشن کی طرف سے جاری کردہ دعوت نامہ۔

برائے مہربانی یاد رکھئے کہ:

زی ویزہ کے حامل افراد کیلئے چین میں داخل ہونے کے بعد 30 روز کے اندر مقامی عوامی حکومت یا علاقائی انتظامیہ کے زیر انتظام مخصوص علاقوں میں غیر ملکیوں کیلئے رہائشی اجازت نامہ فراہم کرنے کی غرض سے قائم شدہ سیکیورٹی کے محکمہ میں داخلے/ اخراج کا اندراج ضروری ہے۔

 (1) Foreigners Employment Permit of the People’s Republic of China issued by Chinese government authorities for Human Resources and Social Security, if your intended work period is 90 days or less, you need to provide an Approval of Short-Term Employment for Foreigners Working in P.R. China. You must apply for your visa before the commencing work date indicated on the Approval and you will be allowed to work only within the period of time indicated in the Approval.
(2) Permit for Foreign Experts Working in China or Notification Letter of Foreigner’s Work Permit in the P. R. China issued by the State Bureau of Foreign Experts.
(3)Registration Certificate of Resident Representative Offices of enterprises of foreign countries (regions) issued by Chinese authorities of industrial and commercial administration.
(4) An approval document for commercial performances issued by the Chinese government authorities for cultural affairs; if your intended performance period is 90 days or less, you need to provide an Approval of Short-Term Employment for Foreigners Working in P.R. China. You must apply for your visa before the commencing performance date indicated on the Approval and you will be allowed to perform only within the period of time indicated in the Approval.

(5) Letter of Invitation to Foreigners for Offshore Petroleum Operations in China issued by China National Offshore Oil Corporation.
We kindly remind you that:
Holders of Z Visa shall, within 30 days from the date of their entry, apply to the exit/entry administrations of public security organs under local people’s governments at or above the county level in the proposed places of residence for foreigners’ residence permits.

خصوصی یاد دہانی
III. Special Reminder

 (1) بصورتِ ضرورت قونصلر افسر کی جانب سے درخواست دہندہ کو معاون دستاویزات یا اضافی مواد فراہم کرنے کی ہدایت دی جاسکتی ہے، یا درخواست دہندہ کو انٹرویو کیلئے طلب کیا جاسکتا ہے۔ یا درخواست دہندہ کو چین کا دورہ ختم کرنے کے بعد دستخط کرنے کیلئے بھی طلب کیا جاسکتا ہے۔

(الف) مخصوص نوعیت کا ویزہ جیسے کہ (ڈی، کیو ون، کیو ٹو، ایس ون، ایس ٹو، ایکس ون، ایکس ٹو اور زی) حاصل کرنے کے خواہشمند درخواست گزاروں کیلئے انٹرویو ضروری قرار دیا گیا ہے۔

(ب) گذشتہ پانچ برسوں میں پہلی مرتبہ چین جانیوالے درخواست گزاروں کیلئے مقامی پولیس کیریکٹر/ کلیئرنس سرٹفیکیٹ (وزارتِ خارجہ امور سے تصدیق شدہ) کے ہمراہ انٹرویو کیلئے آنا ضروری قرار دیا گیا ہے۔

(2) قونصلر افسر کو ویزہ جاری کرنے یا نہ کرنے، ویزے کے کارآمد ہونے، درخواست گزار کے چین میں قیام کی مدت اور مخصوص شرائط کے تحت چین میں ایک یا ایک سے زائد بار داخل ہونے کی اجازت دینے کا فیصلہ کرنے کا اختیار حاصل ہے۔

(3) عوامی جمہوریہ چین میں داخلے یا اخراج کیلئے مروجہ قوانین اور غیر ملکیوں کے عوامی جمہوریہ چین میں داخلے اور اخراج کے قواعد کی روشنی میں، جیسا کہ عوامی جمہوریہ چین میں غیر ملکیوں کے داخلے یا اخراج کیلئے مخصوص قواعد و ضوابط کو یکم ستمبر 2013ء سے لاگو کیا گیا، ایسے ممالک کے شہریوں کیلئے، جنہوں نے چین کے ساتھ ویزہ کے استثنٰی کیلئے دو طرفہ معاہدے پر دستخط کئے ہیں، چین میں ملازمت، حصولِ تعلیم، اہلِ خانہ سے ملاقات اہلِ خانہ کے ہمراہ طویل المدتی قیام، مستقل قیام یا بطور غیر ملکی صحافی قیام کرنے کی غرض سے داخل ہونے سے پہلے جے ون، ڈی، ایس ون، کیو ون، ایکس ون اور زی ویزہ حاصل کرنا ضروری ہے۔

(4) متعلقہ چینی قوانین و ضوابط کے مطابق، اسلام آباد میں چینی سفارت خانہ 15 جون ، 2018 سے چینی ویزا کے لئے تمام غیر ملکی درخواست دہندگان کے (انگلیوں کے نشانات) فنگر پرنٹ حاصل کرے گا۔ البتہ مندرجہ ذیل افراد کو اس پابندی سے مستثنیٰ قرار دیا گیا ہے۔

(ا) 70 سال سے زائد یا 14 سال سے کم عمر کے درخواست دہندگان۔

(ب) سفارتی پاسپورٹ کے حامل افراد یا وہ درخواست دہندگان جن کو چینی سفارتی، خدمات اور اعزازی ویزا جاری کیا جائے گا۔

(ج) وہ درخواست دہندگان جنہوں 22 اکتوبر 2018ء سے لے کر پانچ سال کے دوران چین(صرف مین لینڈ) کا ویزا حاصل کیا ہو، اسی پاسپورٹ کے ساتھ اسی سفارتخانے میں اپنی انگلیوں کے نشانات (فنگر پرنٹس) مہیا کر چکے ہوں۔

(د) درخواست دہندگان جن کی 10 انگلیاں مکمل نہیں ہیں یا کسی وجہ سے ان 10 (انگلیوں کے نشانات)  فنگر پرنٹس کی شناخت نہیں ہو سکتی۔

درخواست دہندگان جو کہ چین (صرف مین لینڈ) کا ویزا حاصل کرنا چاہتے ہیں اُن کو انگلیوں کے نشانات (فنگر پرنٹس) مہیا کرنے کے لئے ذاتی طور پر چینی سفارت خانے کے ویزا سیکشن میں آنا ہوگا۔ متعلقہ چینی محکمہ کو یہ حق حاصل ہے کہ وہ انگلیوں کے نشانات (فنگر پرنٹس) کے جعلی  ہونے کی صورت میں مذکورہ درخواست دہندہ کا چین میں داخلہ مسترد کردے۔  اگر درخواست دہندگان متعلقہ قواعد و ضوابط پر عمل پیرا نہیں ہوتے تو وہ خود تمام تر نتایج کے ذمہ دار ہونگے۔

(1) If necessary, the consular officer may require the applicant to provide other supporting documents or supplementary materials, or ask for an interview with the applicant, or require signing off after the applicant finish visiting China.
a) The applicant for certain types of Visa (D,Q1,Q2,S1,S2,X1,X2&Z) should come in person for an interview.
b) For the first visit to China within the last five years, the applicant should come in person for an interview and provide a local police character/clearance certificate (attested by Ministry of Foreign Affairs of Pakistan).

(2) The consular officer has the final decision on the visa issuance, validity, duration of stay and number of entries according to specific condition of the applicant.
(3) In accordance with the Exit and Entry Administration law of the People’s Republic of China and the Regulation of the People’s Republic of China on Administration of the Entry and Exit of Foreigners, since the Regulation of the People’s Republic of China on Administration of the Entry and Exit of Foreigners came into force on 1 September 2013, citizens of the countries which have signed bilateral visa exemption agreements with China shall be required to apply for Z, X1,Q1,S1,D,J1 visa accordingly before they enter China, if they come to China for work, study, family reunion, long term family visit, permanent residence or as resident foreign journalist.
(4) According to relevant Chinese laws and regulations, the Chinese Embassy in Islamabad is going to collect the fingerprints of all foreign applicants for Chinese visas from June 15, 2018. Only the following people can be exempted from fingerprints collection.

(a) Applicants over 70 or under 14 years old.

(b) Diplomatic passport holders or applicants who shall be issued Chinese diplomatic, service and courtesy visas.

(c) Applicants who have applied visa for China (mainland only) with the same passports in the same Embassy and left their fingerprints within 5 years since October 22, 2018 .

(d) Applicants whose 10 fingers are incomplete or 10 fingerprints cannot be identified.

Applicants who apply for visa for China (mainland only) must personally come to the Visa Section of the Chinese Embassy to leave their fingerprints. The Chinese side reserves the right to reject entry to China in case of registering fake fingerprints which don’t belong to the applicants. The applicants will have to bear all the consequences without complying with this regulation.

IV ۔ ویزہ کی درخواست جمع کرانے کے اوقات، عملدرآمد اور فیس

IV. Timing for visa application submission, processing time, Fees

1۔ ویزا درخواست جمع کرانے کے اوقات: درخواست دہندہ کو ویزا فارم مکمل پُر کر کے آن لائن جمع کرانے کے لیے اپوائنٹمنٹ لینا ہوگی۔ ویزا درخوست جمع کرانے کے اوقات کار پیر سے جمعہ، صبح 8:30 سے دن 12:00 بجے تک ہیں(ایام تعطیلات شامل نہیں)۔

2۔ درخواست پر عملدرآمد کا وقت: عام طور پر ویزہ کی درخواست پر عملدرآمد کیلئے 4 کاروباری ایّام درکار ہیں۔ جس کا انحصار ویزا افسر کے فیصلے پر ہے۔

3۔ فیس: ترقی پذیر ممالک بشمول پاکستان کے سفارتی اور سرکاری پاسپورٹ کے علاوہ عمومی پاسپورٹ کے حامل افراد کو ویزہ فیس سے مستثنٰی قرار دیا گیا ہے۔

(1) امریکہ کے عمومی پاسپورٹ کیلئے ویزہ فیس 14000 روپے
(2) دیگر ممالک کے عمومی پاسپورٹ کیلئے ویزہ فیس:
ایک مرتبہ داخلے کا ویزہ 4500 روپے
دو مرتبہ داخلے کا ویزہ 6500 روپے
 6 ماہ کے دوران ایک سے زائد مرتبہ داخلے کا ویزہ 9000 روپے
 12ماہ کے دوران ایک سے زائد مرتبہ داخلے کا ویزہ 13000 روپے
(3) رومانیہ کے عمومی پاسپورٹ کیلئے ویزہ فیس:
ایک مرتبہ داخلے کا ویزہ 7500 روپے
دو مرتبہ داخلے کا ویزہ 10000 روپے
ایک سے زائد مرتبہ داخلے کا ویزہ 15000 روپے
(4) چین کے خصوصی انتظامی علاقے ہانگ کانگ کیلئے ویزہ فیس 3000 روپے
(5) چین کے خصوصی انتظامی علاقے مکاؤ کیلئے ویزہ فیس 3000 روپے
(6) ہانگ کانگ اور مکاؤ کے ویزہ کیلئے خط و کتابت کی فیس 2000 روپے
(7) ہانگ کانگ کے خصوصی انتظامی علاقے میں داخلے کیلئے اجازت نامہ کی فیس 1000 روپے

1. Timing for visa application submission: one shall complete visa application form and make an appointment for submission online. Timing for visa submission is between 8:30 to 12:00 in the morning from Monday to Friday (holiday excluded).

2. Processing time: Normally it will take 4 working days to process visa application, which is subject to visa officer’s decision.

3. Fees: Diplomatic and official passport holders of the third countries as well as Pakistani ordinary passport holders are exempted from visa fees.
(1) Visa fees for U.S. ordinary passport holders: Rs. 14000

(2) Visa fees for other countries’ ordinary passport holders:

Single Entry Rs. 4500

Double Entries Rs.6500

Month Multiple Entries Rs.6-9000

Month Multiple Entries Rs.12-13000

(3) Visa fees for Romania ordinary passport holders:

Single Entry Rs.7500

Double Entries Rs.10000

Multiple Entries Rs.15000

(4) Fees for Visa for Hong Kong SAR of China :Rs.3000

(5) Fees for Visa for Macao SAR of China: Rs.3000

(6) Communication fees Rs.2000 for visa for Hong Kong & Macao SAR of China.

(7) Fees for Entry permit of Hong Kong SAR of China: Rs.1000

V۔ چین کے خصوصی انتظامی علاقے مکاؤ کیلئے ویزہ

V. Visa for Macao SAR of China

چین کے خصوصی انتظامی علاقے مکاؤ کی حکومت کے محکمہ پبلک سیکیورٹی پولیس فورس کے مطابق یکم جولائی 2010ء سے چند مخصوص افراد کے علاوہ، پاکستان، بنگلہ دیش، نیپال، نائجیریا، سری لنکا اور ویت نام کے تمام شہریوں کیلئے مکاؤ کا ویزہ حاصل کرنا ضروری ہے۔ مندرجہ بالا ممالک کے شہریوں کیلئے مکاؤ پہنچنے پر ویزہ فراہم کرنے کی سہولت ختم کردی گئی ہے۔
چین کے خصوصی انتظامی علاقے مکاؤ کا ویزہ حاصل کرنے کیلئے تمام ممالک میں موجود چینی سفارتخانے اور قونصلیٹ میں درخواست جمع کروائی جاسکتی ہے۔ مکاؤ کا ویزہ حاصل کرنے کیلئے عائد شرائط سے متعلق تفصیلات اور تازہ ترین معلومات کیلئے مکاؤ پبلک سیکیورٹی پولیس فورس کی ویب سائٹ www.fsm.gov.mo/psp/eng/main.html ملاحظہ کیجئے۔

Following notification from Public Security Police Force of the government of the Macao SAR of China, nationals of Pakistan, Bangladesh, Nepal, Nigeria, Sri Lanka and Vietnam, except personnel of certain specified category, are required to guarantee an entry visa in advance starting from 1 July 2010. Visa-upon-arrival is no longer applicable to nationals of above countries.

Chinese Embassies and consulates overseas accept applications for Visa for Macao SAR 0f China . For detailed Macao visa requirements and updates, please visit Macao Public Security Police Force website: www.fsm.gov.mo/psp/eng/main.html.

اردو ترجمہ از: ایف ایم 98 دوستی چینل

چینی ویزہ کا حصول اب ہوا مزید آسان

سال 2018ء یکم اپریل سے پاکستان میں قائم چینی سفارتخانے کی جانب سے ایف اور ایم ویزہ کیلئے نئی پالیسی نافذ کی جا چکی ہے۔ نئے قواعد کے مطابق ایسے تمام درخواست دہندگان کو بار کوڈ کے حامل دعوتی خط کے حصول سے مستثنیٰ قرار دیا گیا ہے جو یکم جنوری 2016 سے اب تک چین کا 3 سے زائد بار دورہ کر چکے ہیں، ایسے اداروں سے منسلک ہیں جو مقامی چیمبر آف کامرس سے رجسٹرڈ ہیں، یا ان کے پاسپورٹ پر پیشے کی جگہ سرکاری افسران یا سرکاری ملازمت کی نشاندہی کی گئی ہو۔ اس نوعیت کے دعوتی خطوط عمومی طور پر چین کی مقامی حکومتوں یا بڑے اداروں کی طرف سے جاری کئے جاتے ہیں، جن کا حصول مشکل تصور کیا جاتا ہے۔
پاکستان میں تعینات چینی سفیر یاؤ چِنگ نے کہا ہے کہ سی پیک کی تعمیر و ترقی جاری رکھنے کیلئے ویزہ پالیسی میں مزید آسانیاں فراہم کی جائیں گی۔ ان کا کہنا ہے کہ چین کی جانب سے ویزہ پالیسی میں نرمی دوطرفہ تجارت اور تجارتی عدم توازن میں بہتری کیلئے مددگار ثابت ہوگی۔
چینی سفارتخانہ میں ویزہ سیکشن کے ڈائریکٹر یانگ لیان چھُن کا کہنا ہے کہ ویزہ کی درخواستیں وصول کرنے کیلئے سفارتخانے میں مزید پاکستانی عملہ تعینات کیا جائے گا۔ اسکے علاوہ ایسے تاجروں کو چین کا طویل المدتی ویزہ جاری کیا جارہا ہے جو چین میں داخلے اور وہاں سے واپسی کے حوالے سے اچھے ریکارڈ کے حامل ہیں، جبکہ بوقت ضرورت فوری ویزہ جاری کرنے کی سہولت بھی فراہم کی جاسکتی ہے۔
اعداد و شمار کے مطابق یکم اپریل سے 15 جون کے دوران چینی ویزہ کے اجراء میں گزشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلے میں 11 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے، جن میں کاروباری ویزہ حاصل کرنیوالے افراد کی تعداد 15 ہزار تک پہنچ چکی ہے، جو گزشتہ سال کے مقابلے میں 19 فیصد زائد ہے.

یہ بھی چیک کریں

چین کی ویزا پالیسی…

چین کے ویزہ سے متعلق ہدایاتInstructions on Chinese Visa2013/08/31Instructions on Chinese Visa Guide to apply …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons