بھارت میں شہریت کا متنازع ترمیمی ایکٹ 2019ء نام نہاد بھارتی سیکولرازم کا مسخ شدہ چہرہ ہے: صدر

بھارت میں شہریت کا متنازع ترمیمی ایکٹ 2019ء نام نہاد بھارتی سیکولرازم کا مسخ شدہ چہرہ ہے: صدر

صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ بھارتی پارلیمنٹ کی طرف سے منظوری کیے گئے شہریت کے متنازع ترمیمی ایکٹ دوہزار انیس نام نہاد بھارتی سیکولر ازم کا ایک مسخ شدہ چہرہ ہے۔

پاکستان میں فرانس کے سفیر سے آج اسلام آباد میں بات چیت کرتے ہوئے صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ اس قانون نے ملک میں اقلیتوں بالخصوص بھارتی مسلمانوں کو خطرے میں ڈال دیا ہے۔ صدر نے کہا کہ کشمیر مکمل محاصرے میں ہے جہاں لوگوں کی تمام شہری آزادیاں معطل ہیں اور انھیں عصمت دری اور قیدوبند کی صعوبتوں کا سامنا ہے۔

صدر نے امید ظاہر کی کہ فرانس کشمیری عوام کی مشکلات ختم کرانے میں اپنا مفید کردارادا کرے گا اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں بند کرانے کیلئے بھارت پر دباؤ ڈالے گا۔

Please follow and like us:

مزید پڑھیں

عراق اور اردن کے وزرائے خارجہ کی ملاقات

عراق اور اردن کے وزرائے خارجہ کی ملاقات

سنہوا نیوز ایجنسی کے مطابق اردن کے شاہ عبد اللہ دوم نے ہفتے کے روز …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Facebook
Facebook
Twitter
Visit Us
YouTube
YouTube