چین، قومی انتظامی نظام اور حکمرانی کی صلاحیت کی جدیدیت کو فروغ دے گا، شی جن پھنگ

چین، قومی انتظامی نظام اور حکمرانی کی صلاحیت کی جدیدیت کو فروغ دے گا، شی جن پھنگ

چینی کمیونسٹ پارٹی کی مرکزی کمیٹی کے سیاسی بیورو نے چوبیس ستمبر کو ” چین کے قومی اور قانونی نظام کی تشکیل اور ترقی ” کے موضوع پر ایک مطالعے کا اہتمام کیا۔

اس موقع پر پارٹی کے جنرل سیکرٹری شی جن پھنگ نے کہا کہ عوامی جمہوریہ چین کے قیام کے بعد سے، گزشتہ ستر سالوں میں چینی کمیونسٹ پارٹی کی قیادت میں چینی عوام نے جدوجہد کرکے، چینی خصوصیات کے حامل سوشلسٹ قومی نظام اور قانونی نظام کی تشکیل کی جو چین کی ترقی کی بنیادی ضمانت ہے۔ مستقبل میں چین اسی درست راہ پر گامزن رہتے ہوئے قومی انتظامی نظام اور حکمرانی کی صلاحیت کی جدیدیت کو آگے بڑھانے کے لیے بھرپور کوشش کرے گا۔

شی جن پھنگ نے کہا کہ اس اجتماعی مطالعے کا مقصد گزشتہ ستر برسوں میں قومی اور قانونی نظام کا جائزہ لیتے ہوئے اور تجربات کی تلخیص کرتے ہوئے آئندہ کے لیے اس کے فروغ پرغور کرنا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پارٹی کی اٹھارہویں قومی کانگریس کے بعد چین میں اصلاحات کے ذریعے چینی خصوصیات کا حامل سوشلسٹ نظام بھی مزید مضبوط ہوا اور قانونی نظام بھی بہتر سے بہتر ہوتا گیا۔ یہ سب عناصر چین کی ترقی کے لیے اہم کردار ادا کرتے ہیں۔

Please follow and like us:

مزید پڑھیں

خطرناک ترین ممالک کی فہرست میں بھارت پانچویں نمبر پر آ گیا

خطرناک ترین ممالک کی فہرست میں بھارت پانچویں نمبر پر آ گیا

دنیا میں رہائش کے لیے خطرناک ترین ممالک کی فہرست میں بھارت پانچویں نمبر پر …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Facebook
Facebook
Twitter
Visit Us
YouTube
YouTube