تازہ ترین

شی آن شمال مغربی چین میں واقع ایک تاریخی شہر

شمال مغربی چین میں واقع تاریخی شہر شی آن صوبہ شان شی کا صدر مقام ہے۔ یہ شہر شمال  مغربی چین میں سیاست، اقتصادیات اور آمد و رفت کا مرکز بھی ہے۔ چینی تاریخ کے مطابق یہاں کے 10 شاہی خاندانوں نے شی آن کو اپنا دارلحکومت بنایا اور اس لحاظ سے شی آن چین کے تمام شہروں میں ایک انفرادی حیثیت کا حامل ہے۔

ایک معروف کہاوت ہے کہ اگر آپ گزشتہ 20 سال کا چین دیکھنا چاہتے ہیں تو شن چن شہر جائیں۔  اگر 100 سال پرانے چین کو دیکھنا مقصود ہو تو شانگ ہائی جائیں، ایک ہزار سال قدیم چین کو دیکھنے کیلئے آپ کو بیجنگ جانا چاہیئے، لیکن اگر آپ 5 ہزار سالہ قدیم چین کو دیکھنے کے متمنی ہیں تو آپ کو شی آن شہر جانا پڑے گا۔ شی آن دنیا کے اہم قدیم ترین دارلحکومتوں، جیسے ایتھنز، روم اور قاہرہ کا ہم عصر شہر کہلاتا ہے۔

 قدیم دستاویزات کے مطابق 11ویں صدی قبل مسیح سے 10 ویں صدی عیسوی تک جاری رہنے والے 13 شاہی ادوار میں شی آن کو صدر مقام رہنے کا اعزاز حاصل رہا، جس کا مجموعی دورانیہ 1102 سال سے زائد ہے۔ اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے یونیسکو نے 1981ء میں شی آن کو بین الاقوامی تاریخی اہمیت کا شہر قرار دیا۔ یہ چین کی تاریخ میں چین اور مغرب کے مابین پہلا وسیع ترین اقتصادی و ثقافتی تبادلہ تھا۔

 شاہراہ ریشم شی آن شہر سے چین کے مغربی صوبہ کان سو کے علاقے تون ہوانگ سے گزرتی ہوئی جنوبی اور شمالی علاقوں کو عبور کرتے ہوئے یورپ تک پہنچتی ہے۔ اس شاہراہ کی مجموعی لمبائی 7 ہزار کلومیٹر سے زائد ہے۔ شاہراہ ریشم کی تعمیر کے بعد یہ راستہ گزشتہ ایک ہزار سال سے زائد عرصے تک چین اور مغرب کے مابین تبادلوں کا اہم ذریعہ رہا۔

یہ بھی چیک کریں

Guide to apply for Chinese Government Scholarship

Introduction to Chinese Government Scholarships In order to promote the mutual understanding, cooperation and exchanges …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons