تازہ ترین

سات عجائبات عالم میں سے ایک عظیم عجوبہ دیوار چین

سات عجائبات عالم میں سے ایک عظیم دیوار چین انسانی ہاتھوں سے تراشی گئی دنیا کی طویل ترین تعمیر ہے۔ چین کے شمالی حصے میں واقع یہ دیوار تقریباً 200 سال قبل مسیح میں تعمیر کی گئی، جس کی مجموعی لمبائی 5 ہزار کلومیٹر سے زائد ہے۔

اس کی تعمیر کا آغاز اُس وقت کے بادشاہ چھن شی ہوانگ نے کیا، جسے چینی باشندوں نے مختلف ادوار میں انتھک محنت سے 2 ہزار سال سے زائد عرصے میں مکمل کیا۔ آج نظر آنے والی دیوارِ چین کا بڑا حصہ منگ خاندان کے دور حکومت میں 1368ءسے 1644ء کے درمیان تعمیر کیا گیا۔

 دیوار چین کو چینی زبان کی 100 سال قبل مسیح کی ایک قدیم تحریر میں چھانگ چھنگ لکھا گیا ہے، جس کے معنی طویل دیوار کے ہیں۔ 19 ویں صدی عیسوی میں جب مغربی ممالک کے حکمران مختلف علاقے فتح کرتے ہوئے چین پہنچے تو انہوں نے اس کا نام عظیم دیوار چین رکھا۔ دیوار چین مشرق میں واقع خلیج لیاؤ تونگ سے منگولیا اور مغرب میں صوبہ کانسُو، جبکہ جنوب میں تبت  تک چین کے 15 صوبوں میں پھیلی ہوئی ہے۔ اس کی اونچائی 20 فٹ اور بعض جگہ 30 فٹ بھی ہے، جبکہ چوڑائی نیچے سے 25 فٹ اور اوپر سے 12 فٹ کے قریب ہے۔  دیوار چین پر ہر 200 گز کے فاصلے پر پہریداروں کیلئے مضبوط پناہ گاہیں بنائی گئی ہیں جن کی مجموعی تعداد 25 ہزار ہے۔

  زمانہ قدیم میں جب دشمن کی طرف سے حملے کے آثار نظر آتے تو پہرے دار دیوار چین کی مختلف جگہوں پر مشعلیں روشن کر دیتے تھے اور یوں ایک کے بعد دوسری چوکی روشن ہوجاتی تھی، جس سے دشمن کے بارے میں اطلاع فوجی مرکز تک پہنچ جاتی۔ پرانے زمانے میں دیوارِ چین کی تعمیر کا مقصد امن و امان کا تحفظ تھا۔

 ایک طویل دیوار کی تعمیر سے ایک طرف اپنی سرزمین کا تحفظ کیا جاتا تھا، تو دوسری جانب یہ دیوار بیرونی حملہ آوروں کی راہ میں ایک بہت بڑی رکاوٹ بھی تھی۔ چینیوں کی نظر میں دیوار چین اینٹوں سے بنی صرف ایک دیوار ہی نہیں، بلکہ ایک عظیم عالمی تعمیراتی شاہکار بھی ہے۔ دیوار کے قریب چینی تاریخ کے بعض قابل ذکر مقامات بھی موجود ہیں جن میں منگ دور حکومت کے بادشاہوں کے مقبرے، چھنگ دور حکومت کے مقبرے، منگ دور حکومت میں تعمیر کیا گیا مشہور گاؤ ں چھوان تی شیا اور  چھنگ دور  حکومت کا خوبصورت سمر پیلس خاص طور پر قابل ذکر ہیں۔ سال 1987ء میں دیوار چین کو یونیسکو کے عالمی ورثے کی فہرست میں شامل کیا گیا تھا۔

دیوارِ چین پر چڑھنے سے پہلے یہاں چین کے بانی چیئرمین ماؤ زے تونگ کا ایک قول بھی لکھا نظر آتا ہے۔ ماؤ زے تونگ نے کہا تھا کہ جو شخص دیوار چین پر نہیں چڑھا اسے ہیرو قرار نہیں دیا جاسکتا۔

یہ بھی چیک کریں

Guide to apply for Chinese Government Scholarship

Introduction to Chinese Government Scholarships In order to promote the mutual understanding, cooperation and exchanges …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons