تازہ ترین

بیجنگ میں واقع شہر ممنوعہ

چین کے دارلحکومت بیجنگ کے مرکز میں واقع شاہی محل کا پرانا نام شہر ممنوعہ ہے، جسے اب شاہی عجائب گھر کے طور پر جانا جاتا ہے۔ یہ محل منگ خاندان کے تیسرے بادشاہ یونگ لہ کے دور یعنی چودھویں صدی عیسوی میں تعمیر کہا گیا تھا، جس کے بعد یہاں 24 بادشاہوں نے سکونت اختیار کی۔ اس محل نے منگ اور پھر چھنگ خاندان کے شاہی ادوار میں قدیم فن تعمیر کے بے مثل شاہکار کی حیثیت اختیار کی، جسے اب لکڑی سے بنی دنیا کی قدیم ترین عمارت ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔

شہر ممنوعہ کا شاہی محل مشرق سے مغرب تک 750 میٹر وسیع اور شمال سے جنوب تک 960 میٹر طویل ہے۔ اس کا مجموعی رقبہ 7 لاکھ 20 ہزار مربع میٹر ہے اور اس اعتبار سے اسے دنیا کا سب سے بڑا محل بھی قرار دیا جاتا ہے۔ یہ شاہی محل 2 حصوں پر مشتمل ہے جس کا ایک حصہ بیرونی محلات جبکہ دوسرا حصہ اندرونی دربار پر مشتمل تھا۔ محل کے چاروں اطراف بلند دیوار تعمیر کی گئی ہے، جبکہ شہر ممنوعہ کی چاردیواری کے باہر نہر بہتی ہے۔ بیرونی دیوار کے چاروں کونوں پر بلند مینار تعمیر کئے گئے ہیں اور چاروں بیرونی دیواروں پر ایک دروازہ ہے۔ شہر ممنوعہ کے جنوب میں واقع شاہی محلات کے مرکزی  دروازے کو  وو من کہا جاتا ہے، جس میں “من” سے مراد دروازہ ہے۔ چینی عقیدے کے مطابق جنت کے شہنشاہ کے پاس 10 ہزار کمرے ہیں، لہٰذا چین کے بادشاہوں نے جنت کے شہنشاہ کی تعظیم میں ہمیشہ اپنے محل کے کمروں کی تعداد 10 ہزار سے کم رکھی ہے۔چین کے تمام شہنشاہوں نے اپنے شاہی محلات میں 9 ہزار 99 مکمل کمرے اور ایک آدھا کمرہ تعمیر کروایا، لیکن اعداد و شمار کے مطابق بیجنگ کے شہر ممنوعہ میں کمروں کی مجموعی تعداد 8 ہزار 704 ہے۔

شہر ممنوعہ کے بیرونی محلات اور اندرونی دربار کے درمیان چھیان چھین نامی دروازہ موجود ہے، جس کے جنوب میں بیرونی عدالت اور شمال کی جانب اندرونی دربار واقع ہے۔  بیرونی محلات کا مرکز  3 عمارتوں پر مشتمل ہے جنہیں چو تائی حو، چون حو اور پوحو کہا جاتا ہے۔ یہ وہ مقام تھا جہاں شہنشاہ جلوہ افروز ہوا کرتا تھا اور یہاں مختلف شاہی تقریبات کا بھی انعقاد کیا جاتا تھا۔ اندرونی دربار شہنشاہ اور مہارانیوں کی رہائش گاہ تھا جس کا مرکز 3 محلات چوچھیان چھین، چیوتھے اور کھن نینگ پر مشتمل ہے۔  اس مرکز کے دونوں اطراف واقع 6 مشرقی و مغربی محلات کے علاوہ کو یان شین محل، چے محل اور یوچھین محل واقع ہیں، جن کے پیچھے وسیع شاہی باغ موجود ہے۔ اندرونی دربار کے مشرق میں واقع نینگ شو محل شہنشاہ چھیان لونگ نے تخت سے دستبرداری کے بعد اپنا بڑھاپا گزارنے کیلئے تعمیر کروایا تھا، جبکہ  مغرب میں چی نینگ محل اور شوآن محل وغیرہ تعمیر کئے گئے ہیں۔

قدیم چین کی تاریخ میں مسلسل جنگ اور فسادات کی وجہ سے ملک بھر میں اب بہت کم شاہ محلات باقی رہ گئے ہیں، تاہم بیجنگ کے علاوہ چین کے مشرقی شہر شن یانگ اور مغربی شہر شی آن میں چند شاہی محلات آج بھی محفوظ ہیں۔

یہ بھی چیک کریں

Guide to apply for Chinese Government Scholarship

Introduction to Chinese Government Scholarships In order to promote the mutual understanding, cooperation and exchanges …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons