چینی صدر کا پندرہویں جی ٹونٹی سربراہی اجلاس میں ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب

چینی صدر کا پندرہویں جی ٹونٹی سربراہی اجلاس میں ویڈیو لنک کے ذریعے خطاب

اکیس تاریخ کو چینی صدر شی چن پھنگ نے بیجنگ میں ویڈیو لنک کے ذریعے پندرہویں جی ٹونٹی سربراہی اجلاس میں شرکت کی اور ایک اہم خطاب کیا۔

شی چن پھنگ نے اس بات پر زور دیا کہ چین  کووڈ-۱۹ ویکسین کی تیاری کے حوالے سے بین الاقوامی تعاون کی فعال طور پر حمایت کرتا ہے اور بھرپور طور پر شریک ہو رہا ہے۔ چین  “کووڈ-۱۹ ویکسین  کے عملی منصوبے” میں شامل ہوچکا ہے، اور ویکسین کی تیاری ، پیداوار اور فراہمی میں دوسرے ممالک کے ساتھ مستحکم تعاون کے لئے تیار ہے۔ ہم اپنے وعدے پورے کریں گے ، دوسرے ترقی پذیر ممالک کی امداد اور انہیں معاونت فراہم کریں گے، اور ویکسین کو ایسی عوامی مصنوعات بنانے کی کوشش کریں گے جسے تمام ممالک کے لوگ باآسانی استعمال کر سکیں اور خرید سکیں۔

انسداد وبا کے حوالے سے پالیسیوں اور معیارات میں مستحکم ہم آہنگی اورافرادی تبادلوں میں آسانی کے لیے “” فاسٹ چینلز “قائم کرنے کی ضرورت ہے۔ شی جن پھنگ

چینی صدر شی جن پھنگ نے اس بات پر زور دیا کہ انسداد وبا کے حوالے سے پالیسیوں اور معیارات میں مستحکم ہم آہنگی  اورافرادی تبادلوں میں آسانی کے لیے “” فاسٹ چینلز “قائم کرنے  کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ چین نے بین الاقوامی سطح پر تسلیم شدہ کیو آر کوڈ کی صورت میں نیوکلیک ایسڈ ٹیسٹنگ کے نتائج کی بنیاد پر ہیلتھ کوڈز کے لئے عالمی باہمی شناختی میکانزم قائم کرنے کی تجویز پیش کی ہے ۔چین پر امید ہے کہ مزید ممالک اس میں حصہ لیں گے۔

چین نے خوراک کے ضیاع کی روک تھام کے لیے بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد کی تجویز پیش کی ہے۔ شی جن پھنگ

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چینی صدر شی جن پھنگ نے کہا کہ چین نے   خوراک کے ضیاع کی روک تھام کے لیے بین الاقوامی کانفرنس کے انعقاد  کی تجویز پیش کی ہے۔چین  اس اجلاس میں  جی 20 اور متعلقہ بین الاقوامی تنظیموں کے ممبران کی شرکت کا خیرمقدم کرتا ہے۔

تکنیکی جدت اور ڈیجیٹل تبدیلی کے ذریعے ترقی کی نئی قوت پیدا کی جائے گی۔ شی جن پھنگ

شی جن پھنگ نے زور دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں مثبت طور پر بحرانوں سے نمٹنا چاہیئے اور انہیں مواقع میں بدلنا چاہیئے، تکنیکی جدت اور ڈیجیٹل تبدیلی کے ذریعے  ترقی کی نئی قوت پیدا کرنی چاہیئے، ڈیٹا سیکیورٹی تعاون کو مضبوط بنایا جانا چاہیئے ، ڈیجیٹل انفراسٹرکچر کی تعمیر کو مضبوط بنانا چاہیئے ، اور مختلف ممالک میں سائنس و ٹیکنالوجی کمپنیوں کے درمیان منصفانہ مسابقت کو فروغ دینا چاہیے۔

جی ٹونٹی کو وبا کے بعد کے دور میں عالمی گورننس کے لیے عظیم قائدانہ کردار ادا کرنا چاہیئے۔ شی جن پھنگ

انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ کووڈ-۱۹  کی وبا نے عالمی گورننس میں خامیوں  کو اجاگر کیا ہے۔ ہمیں جامع مشاورت ، تعمیری شراکت اور مشترکہ مفادات کے اصولوں پر عمل کرنا چاہئے ، کثیرالجہت پسندی ، کھلے پن اور رواداری، باہمی سودمند تعاون اور وقت کے ساتھ چلنے کے تصورات پر عمل پیرا ہونا چاہیے۔ اس حوالےسے جی ٹونٹی کو مزید عظیم قائدانہ کردار ادا کرنا چاہیئے۔

کثیرالجہتی تجارتی نظام اور ترقی پذیر ممالک کے ترقیاتی حقوق کا مضبوطی سے تحفظ کیا جائے ۔ شی جن پھنگ

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ کثیرالجہتی تجارتی نظام کا مضبوطی سے تحفظ کیا جائے ، عالمی تجارتی تنظیم کی افادیت اور دائرہ کار کو بڑھانے کے لیے اس میں اصلاحات کی حمایت کی جائے، آزاد تجارت کو فروغ دیا جائے، یکطرفہ پسندی اور تحفظ پسندی کی مخالفت کی جائے اور ترقی پذیر ممالک کے ترقیاتی حقوق اور ترقیاتی مواقعوں کا تحفظ کیا جائے۔

چین ڈیجیٹل گورننس کے عالمی قوانین وضع کرنے کی خاطر تمام متعلقہ فریقین کے ساتھ تبادلہ خیال کے لیے تیار ہے ۔شی جن پھنگ

صدر شی جن پھنگ نے اس بات پر زور دیا کہ ڈیٹا سیکیورٹی ، ڈیجیٹل ڈویژن ، ذاتی رازداری ، اخلاقیات سمیت دیگر پہلو تمام ممالک کی مشترکہ تشویش ہے ،  ہمیں  عوام کو اولین حیثیت دیتے ہوئے حقائق پر مبنی پالیسی پر قائم رہنا چاہیے ،  جدت کی حوصلہ افزائی  ، باہمی اعتماد  سازی، اقوام متحدہ کے قائدانہ کردار کی حمایت،  اور مشترکہ طور پر ایک کھلا ،شفاف، منصفانہ اور غیر امتیازی ڈیجیٹل ترقی کا ماحول تشکیل دینا چاہیئے۔ ابھی حال ہی میں چین کی جانب سے  گلوبل ڈیٹا سیکیورٹی انیشیٹو پیش کیا گیا ہے۔ چین اس کی بنیاد پر ڈیجیٹل گورننس کے عالمی قوانین وضع کرنے کی خاطر تمام متعلقہ فریقین کے ساتھ تبادلہ خیال کے لیے تیار ہے۔

کووڈ۔۱۹ اور دیگر متعدی امراض کے انسداد کی خاطر صحت عامہ کے عالمی نظام میں مضبوطی لائی جائے۔ شی جن پھنگ

صدر شی جن پھنگ نے زور دیا کہ اس وقت سب سے اہم کام کووڈ۔۱۹ اور دیگر متعدی امراض کی روک تھام وکنٹرول کی خاطر صحت عامہ کے عالمی نظام کی مضبوطی ہے۔ہمیں عالمی ادارہ صحت کے کردار کو مضبوط بنانا چاہیے ،عالمگیر وبائی امراض کی روک تھام اور ردعمل کو آگے بڑھانا چاہیے، انسانی صحت اور سلامتی کو برقرار رکھنے کے لیے دفاع کو مضبوط بنانا چاہیے اور انسانی صحت کے اعتبار سے ایک مشترکہ معاشرے کی تعمیر کرنی چاہیے۔ 

چین کے نئے ترقیاتی نمونے سے تمام ممالک چینی معیشت کی اعلیٰ معیاری ترقی کے ثمرات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ شی جن پھنگ

صدر شی جن پھنگ نے کہا کہ چین میں نئے ترقیاتی نمونے کی تعمیر کسی بھی اعتبار سے ایک بند دروازے کی پالیسی نہیں ہے، بلکہ رسد اور طلب دونوں کو بیک وقت فروغ دینا، پیداوار، تقسیم، گردش اور کھپت سمیت تمام پہلووں کو آگے بڑھانا، معاشی لچک اور مسابقت کو بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ  مزید اعلی درجے کے نئے کھلے معاشی نظام کی تشکیل ہے۔ اس طرح  تمام ممالک چینی معیشت کی اعلیٰ معیاری ترقی کے ثمرات سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔

وبا کے بعد کے دور میں دنیا کو یقیناً ایک نئی قوت میسر آئے گی، شی جن پھنگ

اکیس تاریخ کو ویڈیو لنک کے ذریعے  جی ٹونٹی سربراہی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے چینی صدر شی جن پھنگ نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ وبا کے بعد کے دور میں دنیا کو  یقیناً ایک نئی قوت میسر آئے گی  ۔شی جن پھنگ نے کہا کہ  آئیے ہم ایک بہتر اور خوشحال زندگی کے لئے مل کر کام کریں اور بنی نوع انسان کے ہم نصیب معاشرے کی تعمیر کو مشترکہ طور پر فروغ دیں۔

یہ خبر پڑھیئے

عرب فیسٹیول ایوارڈ پاکستانی اداکارہ سجل علی نے اپنے نام کر لیا

عرب فیسٹیول ایوارڈ پاکستانی اداکارہ سجل علی نے اپنے نام کر لیا

رواں سال کا چوتھا سالانہ ڈسٹنکٹو انٹرنیشنل عرب فیسٹیول ایوارڈ پاکستانی اداکارہ سجل علی نے …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons