سرکاری اسپتالوں میں چھاتی کے کینسر کی مفت تشخیص ممکن بنائی جا رہی ہے، بیگم ثمینہ عارف علوی

سرکاری اسپتالوں میں چھاتی کے کینسر کی مفت تشخیص ممکن بنائی جا رہی ہے، بیگم ثمینہ عارف علوی

چھاتی کے کینسر سے آگاہی کی مہم سے اس بیماری پر قابو پانے میں آسانی ہوگی، خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

صدر پاکستان کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی کا کہنا ہے کہ ایشیاء میں چھاتی کے کینسر کا شکار ہونیوالی خواتین کی سب سے زیادہ تعداد پاکستان میں موجود ہے۔ ایف ایم 98 دوستی چینل کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ پاکستان کی 50 فیصد آبادی خواتین پر مشتمل ہے جنہیں اس حوالے سے معلومات فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ خاتون اول نے کہا کہ چھاتی کے کینسر سے آگاہی کی مہم سے اس بیماری پر قابو پانے میں آسانی ہوگی، کیونکہ اس حوالے سے خواتین کو جتنی زیادہ معلومات فراہم کی جائیں گی اتنی ہی زندگیاں بچانے میں مدد حاصل ہوگی۔

بیشتر ممالک میں چھاتی کے کینسر کے علاج میں 98 فیصد تک کامیابی حاصل کی جارہی ہے ، خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی کا کہنا ہے کہ چھاتی کا کینسر ایک بیماری ہے جس کا علاج ضروری ہے، تاہم پاکستانی معاشرے میں اس موضوع پر بات کرنا معیوب تصور کیا جاتا ہے۔ ایف ایم 98 دوستی چینل کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں خاتون اول نے بتایا کہ وہ گزشتہ 2 سال سے اس بیماری کے حوالے سے آگاہی کی مہم پر کام کر رہی ہیں اور خواتین کو یہ بارو کروایا جارہا ہے کہ چھاتی کے کینسر کا علاج ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کے بیشتر ممالک میں اس بیماری کے علاج میں 98 فیصد تک کامیابی حاصل کی جارہی ہے۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ چھاتی کے کینسر کی تشخیص آسان ہےاور بروقت علاج سے اس بیماری سے چھٹکارہ حاصل کیا جاسکتا ہے۔

سرکاری اسپتالوں میں چھاتی کے کینسر کی مفت تشخیص ممکن بنائی جارہی ہے،خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ پاکستان میں چھاتی کے کینسر کو اہمیت نہیں دی جاتی، جس کے نتیجے میں بیشتر خواتین اس مرض کی آخری سٹیج پر ہی علاج کا فیصلہ کرتی ہیں۔ ایف ایم 98 دوستی چینل کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ اس مرض سے آگاہی کی مہم کے نتیجے میں امید ہے کہ پاکستانی خواتین اپنے علاج میں کوتاہی نہیں کریں گی، جبکہ اس ضمن میں مردوں کی جانب سے بھی سنجیدہ رویہ اپنانے کی ضرورت ہے۔ خاتون اول نے کہا کہ چھاتی کا کینسر ایک بیماری ہے جسے اہمیت دینا ضروری ہے، لیکن تعلیم اور آگاہی کی کمی کے علاوہ اس بیماری کا علاج مہنگا ہونے کی وجہ سے بھی اکثر خواتین تکلیف کے باوجود اسپتال جانے سے گریز کرتی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت کی جانب سے بہت سے سرکاری اسپتالوں میں چھاتی کے کینسر کی مفت تشخیص ممکن بنائی جارہی ہے اور اس حوالے سے پاک فوج نے بھی بھرپور تعاون فراہم کیا ہے، جبکہ غیرسرکاری تنظیمیں بھی اس بیماری سے آگاہی اور علاج کی سہولیات فراہم کرنے کیلئے سرگرم ہیں۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ دنیا میں سب سے زیادہ نقد عطیات پاکستان میں دیئے جاتے ہیں اور بہت سی شخصیات اور تنظیمیں ایسی ہیں جو چھاتی کے کینسر سے آگاہی اور علاج کی مہم میں ساتھ دینے کیلئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مختلف غیرسرکاری تنظیموں کی جانب سے دنیا کے مختلف کالجز کے سابق طلباء کو مدعو کیا جائے گا جو پاکستان میں اس مرض کے علاج کیلئے رقوم عطیہ کریں گے۔ خاتون اول نے بتایا کہ وہ اس حوالے سے صرف آگاہی کی مہم میں حصہ لے رہی ہیں، جس کے نتائج برآمد ہونا شروع ہوچکے ہیں اور ملک کے دور دراز علاقوں سے خواتین اپنے علاج کیلئے سرکاری اسپتالوں کا رخ کر رہی ہیں۔  انہوں نے کہا کہ خواتین کیلئے 40 سال کی عمر کے بعد سال میں ایک بار اسپتال سے چھاتی کے کینسر کی تشخیص انتہائی ضروری ہے، تاہم ہر مہینے خود اپنی تشخیص کے ذریعے بھی اپنی صحت سے آگاہی ضروری ہے، تاکہ کسی خطرے کی صورت میں بروقت ڈاکٹر سے رجوع کیا جاسکے۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ چھاتی کے کینسر کی ازخود تشخیص کے حوالے سے انٹرنیٹ پر موجود معلومات سے فائدہ اٹھایا جاسکتا ہے، جبکہ اس مرض سے واقف خواتین کیلئے ضروری ہے کہ وہ دوسروں کو بھی اس حوالے سے آگاہ کریں۔  انہوں نے کہا کہ اگر ایک خاتون 10 دیگر خواتین کو اس مرض کے بارے میں معلومات فراہم کریں تو ملک بھر میں اس مرض کی بروقت تشخیص اور علاج کو ممکن بنایا جاسکتا ہے۔

پاکستان کے بیشتر علاقوں میں خواتین کی تعلیم کو غیرضروری تصور کیا جاتا ہے، خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

صدر پاکستان کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی کا کہنا ہے کہ پاکستان میں خواندہ افراد کی تعداد انتہائی کم ہےجس پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ ایف ایم 98 دوستی چینل سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے خاتون اول نے بتایا کہ تعلیم کے شعبے میں انہوں نے سٹیزن فاؤنڈیشن سمیت دیگر متعلقہ غیرسرکاری تنظیموں کے ساتھ کام کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے بیشتر علاقوں میں خواتین کی تعلیم کو غیرضروری تصور کیا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کراچی کے علاقے ہجرت کالونی میں واقع لڑکیوں کے سکول آٹھویں جماعت تک ہیں اور وہاں کے مکینوں کا کہنا ہے کہ اس سے زیادہ تعلیم حاصل کرنے کیلئے لڑکیوں کو گھر سے دور نہیں بھیجا جاسکتا۔  خاتون اول نے بتایا کہ انہوں نے مخیر افراد کے تعاون سے سکول میں سائنس اور کمپیوٹر کی لیبارٹری قائم کی، جس کے بعد اب مذکورہ سکول میں لڑکیوں کو دسویں جماعت تک تعلیم حاصل کرنے کی سہولت میسر ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بہت سے لوگ اچھا کام کرنے والوں کی مالی معاونت کیلئے تیار رہتے ہیں۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ ایوان صدر میں آنے کے بعد بھی تعلیم کے فروغ کیلئے ان کی سرگرمیاں جاری ہیں تاہم حالیہ وباء کے باعث انہوں نے بہت سے اسکولوں کا دورہ ملتوی کردیا ہے۔  انہوں نے کہا کہ حال ہی میں بہت سے سکولوں میں سائنس کی جدید لیبارٹریز قائم کی گئی ہیں اور وہ آئندہ بھی یہ سلسلہ جاری رکھنا چاہتی ہیں۔

خصوصی بچوں کو عام بچوں کے اسکولوں میں تعلیم فراہم کرنا ضروری ہے، بیگم ثمینہ عارف علوی

خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ معذوری کا شکار ہونے والے بچوں کو دیگر بچوں سے الگ نہیں کرنا چاہیئے۔ ایف ایم 98 دوستی چینل کے ساتھ خصوصی گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ کچھ خصوصی بچے ایسے ہوسکتے ہیں جنہیں عام اسکول میں تعلیم فراہم نہیں کی جاسکتی، تاہم دیگر تمام  خصوصی بچوں کو ایک ہی طرح کے اسکول میں تعلیم دینا ضروری ہے۔ بیگم ثمینہ علوی نے کہا کہ اس طرح نہ صرف ان بچوں کے اعتماد میں اضافہ ہوگا بلکہ دیگر بچے بھی اس بات سے آگاہ ہوسکیں  گے خصوصی افراد کا خیال کس طرح رکھا جاسکتا ہے۔انہوں نے بتایا کہ اسلام آباد کے ایک اسکول میں شجرکاری کی مہم کے دوران ایسی ہی مثال دیکھنے میں آئی جہاں ایک بچی ویل چیئر پر بیٹھ کر تعلیم حاصل کرنے آتی ہے اور وہاں کی پرنسپل کا کہنا ہے کہ پاکستانی بچوں کو خصوصی بچوں کے بارے میں تربیت فراہم کرنا ضروری ہے۔

چھاتی کے کینسر کی بروقت تشخیص کے بعد اس کا علاج ممکن ہے،خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

صدر پاکستان کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ ملک میں چھاتی کے کینسر کے حوالے سے آگاہی فراہم کرنا ضروری ہے اور اس ضمن میں ریڈیو اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ ایف ایم 98 دوستی چینل کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ طبی ماہرین کے مطابق خواتین کیلئے ضروری ہے کہ 20 سال کی عمر کے بعد سے وہ ہر مہینے ذاتی تشخیص ممکن بنائیں۔  خاتون اول نے کہا کہ چھاتی کے کینسر کی بروقت تشخیص کے بعد اس کا علاج ممکن ہے، اسلئے علامات ظاہر ہونے کی صورت میں پریشان ہونے کے بجائے ڈاکٹر سے رجوع کرنا ضروری ہے۔

خواتین کیلئے ضروری ہے کہ وہ ہمیشہ اپنی صحت کا خیال رکھیں، خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی کا کہنا ہے کہ پاکستانی خواتین گھر کے تمام افراد کا خیال رکھتی ہیں، تاہم خود اپنی صحت کے حوالے سے کوتاہی کا شکار رہتی ہیں۔ ایف ایم 98 دوستی چینل سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خاتون کسی بھی خاندان کا اہم حصہ ہوتی ہیں اور انکے بیمار ہونے کی صورت میں گھر کے تمام امور متاثر ہوتے ہیں۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ بچوں کیلئے ماں انتہائی اہم ہوتی ہے، اسلئے خواتین کیلئے ضروری ہے کہ وہ ہمیشہ اپنی صحت کا خیال رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ خواتین پاکستان کی مجموعی آبادی کا 50 فیصد ہیں اسلئے انہیں نظر انداز نہیں کیا جاسکتا۔ خاتون اول نے کہا کہ خواتین کی تعلیم اور صحت کو اہمیت دینا انتہائی ضروری ہے۔

چینی خاتون اول عالمی سطح پر خواتین کی تعلیم کے فروغ کیلئے اہم کردار ادا کر رہی ہیں، اہلیہ صدر پاکستان ثمینہ علوی

صدر پاکستان کی اہلیہ ثمینہ عارف علوی کا کہنا ہے کہ چینی خاتون اول پھنگ لی یوان دنیا بھر میں تعلیم کے شعبے پر کام کر رہی ہیں، جو انتہائی خوش آئند ہے۔  ایف ایم 98 دوستی چینل کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ چینی خاتون اول عالمی سطح پر خواتین کی تعلیم کے فروغ کیلئے اہم کردار ادا کر رہی ہیں، کیونکہ تعلیم کی بدولت دنیا کے بہت سے مسائل پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ خاتون اول نے کہا کہ پاکستان میں ہر طبقے سے تعلق رکھنے والے مرد اور خواتین کیلئے تعلیم کا حصول انتہائی ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کے ساتھ زندگی گزارنے کے دیگر اہم امور پر بھی تربیت فراہم کرنا ضروری ہے، جن میں اخلاقی اقدار اور صفائی ستھرائی سے آگاہی بھی شامل ہے۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ چین میں گزشتہ 40 سال کے دوران خواتین نے ملک کی ترقی میں مردوں کے شانہ بہ شانہ کام کیا ہے، جبکہ پاکستان میں لڑکیاں تعلیم کے شعبے میں نمایاں کامیابیاں حاصل کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں طالبات کی اکثریت پوزیشن حاصل کرتی ہے، تاہم انہیں عملی شعبوں میں آگے بڑھنے کے مواقع فراہم نہیں کئے جاتے۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ پاکستانی خواتین بے پناہ ٹیلنٹ کی حامل ہیں اور بہت سے شعبوں میں نمایاں کارنامے سرانجام دے رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں خواتین کو زیادہ سے زیادہ ملک کی ترقی میں حصہ لینے کی ضرورت ہے۔

پاک چین تعلقات بہتری کی جانب گامزن رہیں گے، بیگم ثمینہ عارف علوی

پاکستان کی خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا ہے کہ پاک چین دوستی بہت پرانی ہے جو وقت گزرنے کے ساتھ اور بھی مضبوط ہوگی۔ ایف ایم 98 دوستی چینل سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ آئندہ بھی دونوں ممالک کے تعلقات بہتری کی جانب گامزن رہیں گے۔ خاتون اول نے کہا کہ ایف ایم 98 سمیت دیگر ذرائع ابلاغ چھاتی کے کینسر سے آگہی کی مہم میں اپنا بھرپور کردار ادا کر رہے ہیں۔

صدر ڈاکٹر عارف علوی کی طویل سیاسی جدوجہد میں ہر موقع پر ان کا ساتھ دیا، خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی

صدر پاکستان کی اہلیہ بیگم ثمینہ عارف علوی کا کہناہے کہ خاتون اول بننے کے بعد ان کی زندگی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔ ایف ایم 98 کو دیئے گئے خصوصی انٹرویو کے دوران نجی زندگی سے متعلق پوچھے گئے سوالات کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایوان صدر میں آنے سے پہلے بھی وہ مختلف سماجی سرگرمیوں میں مصروف رہیں اور اب بھی انکی مصروفیات میں کوئی خاص تبدیلی نہیں آئی۔  خاتون اول نے بتایا کہ انہوں نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کی طویل سیاسی جدوجہد میں ہر موقع پر ان کا ساتھ دیا، کیونکہ وہ ملک کیلئے کام کرتے رہے ہیں۔  بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ وہ ملک کو بہتر بنانے کی خواہش رکھتی ہیں اور چاہتی ہیں کہ پاکستانی دنیا میں جہاں بھی جائیں ان کا سر فخر سے بلند رہے۔ انہوں نے کہا کہ اسی جذبے کے تحت وہ تعلیم کے شعبے میں بہتری کیلئے سرگرم رہیں اور اس دوران ڈاکٹر عارف علوی کے ساتھ بھی کام کرتی رہی ہیں۔  خاتون اول نے کہا کہ ابتداء میں انکی توجہ صرف اپنے بچوں کی تعلیم اور تربیت پر مرکوز رہی، کیونکہ گھر میں بچوں کی ابتدائی تربیت سب سے زیادہ ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہر ماں اس حوالے سے اپنے بچوں پر خصوصی توجہ دے تو ملک آسانی سے ترقی کی منازل طے کرسکتا ہے۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ ان کا عملی سیاست میں حصہ لینے کا کوئی ارادہ نہیں، کیونکہ انہوں نے آغاز سے ہی تعلیمی سرگرمیوں اور خواتین میں چھاتی کے کینسر کی آگاہی اور علاج سے متعلق مہم کو فوقیت دی ہے۔  انہوں نے کہا کہ پاکستان میں خصوصی افراد کو بہت زیادہ نظر انداز کیا جاتا ہے، جن پر تھوڑی سی توجہ انہیں معاشرے کا کارآمد فرد بناسکتی ہے۔ خاتون اول نے کہا کہ صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی اکثر سیاسی معاملات پر ان کے ساتھ گفتگو کرتے ہیں، تاہم قومی امور سے متعلق فیصلوں میں مشاورت نہیں کی جاتی۔ انہوں نے کہا کہ وہ کراچی اور ملک کے حالات اور غربت کی صورتحال پر اکثر افسردہ ہوجاتی ہیں اور ان کی خواہش ہے کہ پاکستان کے تمام مسائل جلد حل ہوجائیں۔ بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ پاکستان میں تعلیم کے نظام میں تبدیلی ضروری ہے، جبکہ عوامی سطح پر یہ احساس اجاگر کیا جائے کہ اپنے ملک پاکستان کو وقار کے ساتھ ترقی کی راہ پر گامزن رکھنا ضروری ہے۔ خاتون اول نے بتایا کہ انہیں کھانا پکانے سے زیادہ سماجی امور میں دلچسپی ہے اور اکثر تعطیلات کے دوران بھی وہ اپنا وقت ایسی ہی سرگرمیوں میں صرف کرتی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خواتین کیلئے ضروری ہے کہ وہ گھر میں رہ کر اپنا وقت ضائع کرنے کے بجائے ضرورت مند افراد کی مدد کریں، جس میں تعلیم کی فراہمی اور مختلف امور سے متعلق آگاہی شامل ہے۔   خاتون اول بیگم ثمینہ عارف علوی نے ایف ایم 98 کے سامعین کے نام اپنے پیغام میں کہا کہ خوش رہنے کی کوشش کریں کیونکہ زندگی انتہائی مختصر ہے۔ انہوں نے کہا کہ مادی چیزوں میں خوشیاں تلاش کرنے کے بجائے خود اپنی ذات کو مطمئن رکھنے کی کوشش زیادہ ضروری ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

شنگھائی تعاون تنظیم کے تحت ٹھوس تعاون کو گہرائی تک لے جایا جا رہا ہے

شنگھائی تعاون تنظیم کے وزرائَے اعظم کا انیسواں اجلاس ویڈیو لنک کے ذریعے منعقد ہوا۔ اجلاس …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons