blank

اسلام آباد میں کرونا وائرس کے مشتبہ مریض کی حالت خطرے سے باہر ہے، ترجمان پمز اسپتال

اسلام آباد میں کرونا وائرس کے مشتبہ مریض کی حالت خطرے سے باہر ہے، ترجمان پمز اسپتال پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈکل سائنسز کے ترجمان ڈاکٹر وسیم خواجہ کے مطابق   نوول کرونا وائرس کے  مشتبہ  مریض کی حالت  خطرے سے  باہر ہے۔

ایف ایم 98 سے خصوصی گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ اب تک مذکورہ شخص میں صرف وائرس کی  علامتیں ظاہر ہوئی ہیں، جن کا علاج جاری ہے، تاہم اس کے ٹیسٹ  کا تحریری رزلٹ تاحال موصول نہیں ہوا۔ ڈاکٹر وسیم خواجہ کے مطابق اس حوالے سے زیادہ خوف و ہراس  پھیلانے سے گریز کیا جائے اور احتیاطی تدابیر اختیار کی جائیں۔

ڈاکٹر وسیم خواجہ نے کہا کہ عوام کسی بھی ممکنہ خطرے سے بچنے کیلئے ماسک پہنیں اور گرم پانی پینے کی عادت اپنائیں۔ انہوں نے کہا کہ صفائی رکھنے سے کرونا وائرس سے ممکنہ حد تک بچا جاسکتا ہے۔ پمز کے ترجمان نے بتایا کہ اسلام آباد میں اب تک چینی شہریوں سمیت 150 سے زائد مشتبہ افراد کا  ٹیسٹ کیا جا چکا ہے، جس میں سے کسی بھی شخص میں کرونا وائرس کے اثرات سامنے نہیں آئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نزلہ زکام یا نمونیا کی شکایت پاکستان میں عام ہے، تاہم اسے کرونا وائرس کا حملہ سمجھنے سے گریز کیا جائے اور فوری طور پر قریبی مستند ڈاکٹر سے رجوع کیا جائے۔

اس موقع پر انہوں نے بتایا کہ پمز ہسپتال میں کرونا وائرس کے مریضوں کیلئے آئسولیشن وارڈ قائم کردیا گیا ہے  جس میں ابتدائی طور پر 10 بیڈزرکھے گئے ہیں، تاہم ضرورت کے تحت ان کی تعداد میں اضافہ کیا جاسکتا ہے۔  ڈاکٹر وسیم خواجہ نے کہا کہ ممکنہ وباء کے پیش نظر ملک بھر میں نوول کرونا وائرس کے حوالے سے مخصوص کئے گئے اسپتالوں میں صرف شدید علامات کی صورت میں ٹیسٹ کیا جارہا ہے، جبکہ بیشتر افراد کو کھانسی، بخار اور نزلے کی صورت میں صرف بنیادی علاج کا مشورہ دیا جاتا ہے۔

یہ بھی چیک کریں

آئی ایم ایف کی مالی سال 2021 میں پاکستان کی معیشت کی بحالی کی پیشگوئی

آئی ایم ایف کی مالی سال 2021 میں پاکستان کی معیشت کی بحالی کی پیشگوئی

بین الاقوامی مالیاتی فنڈ نے مالی سال دوہزار اکیس کےدوران پاکستان کی معیشت میں بحالی …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons