blank

منشیات کے خطرناک اثرات پر آگاہی کے لئے زندگی ایپ کا اجرا

قومی اسمبلی کو آج بتایا گیا کہ سرنج کے ذریعے جسم میں منشیات منتقل کرنے کے خطرناک اثرات کے حوالے سے نوجوانوں میں آگاہی پیدا کرنے کےلئے زندگی ایپ کا اجرا کیاگیا ہے۔

ایک سوال پر ریاستوں اور سرحدی علاقوں کے وزیر مملکت شہریار آفریدی نے کہا کہ زندگی ایپ کے حوالے سے تمام سکولوں اور تعلیمی اداروں میں سوال و جواب کی نشستوں کا بھی اہتمام کیا جارہا ہے۔ اس مسئلے پر اظہارخیال کرتے ہوئے تعلیم کے وزیر شفقت محمود نے ملک کے نوجوانوں کو تعلیم فراہم کرنے میں مدارس کے کردار کااعتراف کیا۔

ایک اور سوال پر تعلیم کےوزیر نے کہاکہ اداروں کی تشکیل نو کےلئے 80 کروڑ روپے مالیت کا منصوبہ تیار کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزارت اسلام آباد میں سکول بسوں کےلئے چار سو ڈرائیوروں اور کنڈیکٹروں کی بھرتیوں کا اعلان کرنے پر بھی غور کررہی ہے۔

ایک سوال پر موسمیاتی تبدیلی کے بارے میں وزیر مملکت زرتاج گل نے ایوان کو بتایا کہ اینٹوں کے 64 بھٹوں میں سے پانچ کو اب ماحول دوست پالیسی زگ زیگ ٹیکنالوجی میں تبدیل کردیاگیا ہے۔ وقفہ سوالات کے دوران ہوا بازی ڈویژن کے بارے میں پارلیمانی سیکرٹری جمیل احمد خان نے ایوان کو بتایا کہ پی آئی اے نے خسارہ کم کرنے کےلئے پروازوں کی تعداد میں کمی کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے وی آئی پی کلچر اورپروٹوکول ختم کرنے کی سوچ کے تحت پی آئی اے کی پروازوں میں ارکان پارلیمنٹ کےلئے نشستوں کا کوئی کوٹہ مقرر نہیں ہے تاہم انہوں نے کہا کہ پی آئی اے ارکان پارلیمنٹ کو ترجیح دیتی ہے۔

یہ خبر پڑھیئے

امریکی سینیٹرز کا بھارت کو بدترین ممالک میں شامل کرنے کا مطالبہ

امریکی سینیٹرز کا بھارت کو بدترین ممالک میں شامل کرنے کا مطالبہ

امریکہ کے 14 سینیٹرز نے وزیر خارجہ مائیک پومپو کے نام ارسال کردہ خط میں …

اپنا تبصرہ بھیجیں

Show Buttons
Hide Buttons