چین کی جانب سے ہانگ کانگ کے پارلیمانی رکن پر کیے جانے والے حملے کی مذمت

چین کی جانب سے ہانگ کانگ کے پارلیمانی رکن پر کیے جانے والے حملے کی مذمت

چین کی ریاستی کونسل کے دفتر برائے امور ہانگ کانگ اور مکاؤ کی پریس ترجمان شو لو اینگ نے سات نومبر کو ہانگ کانگ خصوصی انتظامی علاقے کے علاقائی پارلیمانی رکن اور پارلیمانی انتخابات کے امیدوار حہ جون یاؤ پر چاقو سے حملہ کیے جانے کے واقعے کی سخت مذمت کی اور پرتشدد کارروائیوں پر قانون کے مطابق سزا دینے کی اپیل کی۔

شو لو اینگ نے بتایا کہ چھ نومبر کو حہ جون یاؤ علاقائی پارلیمان کی انتخابی سرگرمی میں مصروف تھے تو ہجوم میں سے ان کے حامی کے روپ میں شامل ایک آدمی نے اچانک ان کے سینے پر چاقو سے وار کیا، جس سے حہ جون یاؤ اور ان کے دو ساتھی زخمی ہوگئے۔ دن دیہاڑے، لوگوں کی بھیڑ میں اس طرح سے قاتلانہ حملہ کیا جانا چونکا دینے والا عمل ہے- یہ سنگین جرم کے ساتھ ساتھ انتخابات میں تشدد کا رویہ اپنانے کی کوشش بھی ہے۔

شو لو اینگ نے کہا کہ پرتشدد عناصر کی جانب سے اس نوعیت کے حملے کا مقصد محبِ وطن شخصیات کو ڈرا دھمکا کرعلاقائی پارلیمانی انتخابات کے نتائج پر اثر انداز ہونا ہے تاکہ ان کے سیاسی مقاصد مکمل ہو سکیں۔

شو لو اینگ نے واضح الفاظ میں کہا کہ ہانگ کانگ میں انتخابات برابری، انصاف، سلامتی اور منظم ماحول میں ہونے چاہیئں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں