چین دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں عدم مداخلت کے اصول پر ہمیشہ قائم رہا ہے، چینی وزارت خارجہ

چین دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں عدم مداخلت کے اصول پر ہمیشہ قائم رہا ہے، چینی وزارت خارجہ

چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان کنگ شوانگ نے ستائیس نومبر کو کہا کہ چین ہمیشہ دوسرے ممالک کے ساتھ تعلقات میں پرامن بقائے باہمی کے پانچ اصولوں پر عمل پیرا رہا ہے اور چین نے دوسرے ممالک کے داخلی معاملات میں عدم مداخلت کے اصول پر ہمیشہ عمل کیا ہے۔

چین کا مؤقف رہا ہے کہ کسی بھی ملک کے پاس اپنے قومی حالات کے مطابق ترقیاتی راستے کے انتخاب کا حق ہے۔ اس مسئلے پر، چین نے جو کچھ کہا ہے اس پرعمل بھی کیا ہے۔ اس لئے کوئی بھی چین پر اس بات کا الزام نہیں لگا سکتا کہ چین دوسرے ممالک کے معاملات میں مداخلت کرتا ہے۔

کنگ شوانگ نے اسی دن باقاعدہ پریس کانفرنس میں اس بات کی نشاندہی کی کہ گزشتہ کچھ دنوں سے، بعض آسٹریلیائی میڈیا اور ادارے “چینی جاسوسوں کے کیس” اور “چین میں دراندازی کے مختلف نظریات” جیسی سنسنی خیز خبریں بنا رہے ہیں۔ کنگ شوانگ نے اس بات پر زور دیا کہ چین چینی خصوصیات کے حامل سوشلزم کے راستے پر گامزن ہے اور دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں مداخلت کی بھر پور مخالفت کرتا ہے۔ چین کا مؤقف ہے کہ تمام ممالک کسی بھی وجہ کو بنیاد بنا کر دوسرے ممالک کے اندرونی معاملات میں عدم ٘مداخلت کے مؤقف کا کھل کر اظہارکریں ۔ کیا آسٹریلیا ایسا کر سکتا ہے؟

اپنا تبصرہ بھیجیں