پاکستان کی مقبوضہ کشمیر میں عید میلاد النبیﷺ کے موقع پرعائد پابندیوں کی مذمت

پاکستان کی مقبوضہ کشمیر میں عید میلاد النبیﷺ کے موقع پرعائد پابندیوں کی مذمت

پاکستان نے مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی حکام کی جانب سے عید میلادالنبی کی تمام تقریبات پر پابندیوں کی مذمت کی ہے۔

دفتر خارجہ کے ترجمان نے آج ایک بیان میں کہا کہ حضور اکرمۖ کے یوم ولادت کی تقریبات پر پابندیوں کا نفاذ مقبوضہ جموں و کشمیر کے مسلمانوں کے جذبات کی شدید توہین کا مظہر ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ان کی مذہبی آزادی کے بھی منافی ہے۔ ترجمان نے عالمی برادری اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی دیگر تنظیموں پر زور دیا کہ بین الاقوامی قوانین اور معاہدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کشمیریوں کی آزادی اور مذہبی حقوق کو ظالمانہ طریقے سے دبانے کا نوٹس لیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ چودہ ہفتے سے زائد عرصے سے اسی لاکھ سے زیادہ کشمیری نو لاکھ سے زیادہ قابض بھارتی فورسز کے غیر انسانی محاصرے میں ہیں۔ ترجمان نے کہا کہ بھارتی حکومت کو فوری طور پر انٹرنیٹ اور موبائل سروسز کی بحالی سول سوسائٹی کے ارکان خصوصاً مغوی لڑکوں سمیت قیدیوں کی رہائی آرٹیکل 144 پبلک سیفٹی ایکٹ اور دوسرے کالے قوانین کے خاتمے آزاد میڈیا اور بین الاقوامی انسانی حقوق کے مبصرین کو کشمیریوں کی بہتری کیلئے علاقے کا آزادانہ دورہ کرنے کی اجازت دینی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت مقبوضہ کشمیر کے لوگوں کے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں تسلیم کئے گئے حق خودارادیت کے حصول کی خواہش کو دبا نہیں سکتی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں